Today: Wednesday, September, 20, 2017 Last Update: 04:40 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

TAMIL NADU

TAMIL NADU

اسکولی وین نہر میں گری، تین ہلا ک 9زخمی
کنیا کماری، 30 مارچ (یو این آئی) طلبا کو لیکر جانے والی اسکولی وین نگرکوائل کے نزدیک وینکوڈ ے میں نہر میں گرگئی جس سے تین افراد ہلاک ہوگئے ۔ ان میں ایک طالب علم تھا۔پولیس کا کہنا ہے کہ وین کا تعلق کرونگل کے ایس جی ایس میموریل پبلک میٹریکولیشن ہائر سیکنڈری اسکول سے ہے جو حادثہ کے وقت بچوں کو اسکول لے جارہی تھی۔تیز رفتار کی وجہ سے ڈرائیور گاڑی پر کنٹرول کھو بیٹھا۔ بس سڑک کنارے چائے کی دکان کو توڑتی ہوئی نہر میں جاگری۔ دو تین عورتیں جو وہاں نہا رہی تھیں وہ بھی اس کے نیچے پانس گئی۔پولیس اور مقامی لوگوں نے پھنسے ہوئے طلبا اور عورتوں کو نکالا۔ چوتھی کلاس کا طالب علم ایس سچن کمار (8)وین کا ڈرائیور جنیش (27) اور نہر میں نہانے والی لتا (65) حادثہ میں ہلاک ہوگئے ۔نو زخمی طلبا جن میں لڑکے لڑکیاں دونوں شامل ہیں، انہیں سرکاری اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ دو طلبا کی حالت تشویشناک ہے ، سینئر پولیس اور ریوینو افسران نے جائے حادثہ کا دورہ کرکے انکوائری کی ہے ۔

 

ڈی ایم کے نے وزیراعلی پنیروسلم کی جانب سے پیش کردہ بجٹ کا بائیکاٹ کیا
چینئی25مارچ(یو این آئی)تامل ناڈو اسمبلی حزب اختلاف کی جماعت ڈی ایم کے نے وزیراعلی پنیروسلم کی جانب سے پیش کردہ بجٹ کا بائیکاٹ کیا جو فائنانس کا بھی قلمدان رکھتے ہیں۔حزب اختلاف ڈی ایم کے نے ایوان سے واک آوٹ کردیا ۔وزیراعلی کے طور پر اپنے پہلے اور وزیر خزانہ کے طور پر پانچویں بجٹ کی پیشکشی کے لیے جیسے ہی پنیروسلم اٹھے ،ڈی ایم کے کے فلور لیڈر اسٹالن نے بعض ریمارکس کئے ۔اسپیکر پی دھن پال کی جانب سے اجازت نہ دینے کے باوجود وہ پہلے سے لکھی ہوئی تحریر پڑھنے لگے ۔ ان کی تقریر کسی کو بھی سنائی نہیں دے رہی تھی کیونکہ حکمران جماعت کے ارکان میزیں تھپتھپاکر پنیروسلم کے بجٹ کا خیرمقدم کررہے تھے ۔اس مرحلہ پر اسٹالن کی قیادت میں ڈی ایم کے ارکان نے واک آوٹ کردیا ۔بعد ازاں اسمبلی کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے اسٹالن نے الزام لگایا کہ حکمران جماعت اے آئی اے ڈی ایم کے تمام محاذوں پر ناکام ہوگئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں تاریکی چھائی ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اے آئی اے ڈی ایم کے حکومت بجٹ کی پیشکشی کے اخلاقی حق سے محروم ہوچکی ہے کیونکہ ریاست میں لااینڈ آرڈر کی صورتحال ابتر ہوچکی ہے ۔انہوں نے الزام لگایا کہ نظم ونسق کی کارکردگی رک گئی ہے اور ریاست کے مالیہ کی حالت بھی ابتر ہے ۔

 

تمل ناڈو اور سری لنکا کے ماہی گیروں کے درمیان کل بات چیت ہوگی
چنئی، 23 مارچ (یو این آئی) کل یہاں تمل ناڈواور سری لنکا کے ماہی گیروں کے وفودکے درمیان با ت چیت شروع ہورہی ہے اس کے لئے سری لنکا سے ایک 15 رکنی وفد آرہا ہے جس میں محکمہ مچھلی پالن کے 5 افسران اور دیسی ماہی گیر شامل ہوں گے ۔ ٹیم کی سربراہی محکمہ مچھلی پالن کے ڈائریکٹر ایم سی ایل فرنانڈیز کریں گے ۔تمل ناڈو کے 13 ماہی گیر وں کے ساتھ ساتھ پانڈیچری کے 4 ماہی گیر بھی بات چیت میں حصہ لیں گے اس میں مچھلی پکڑنے کے حقوق ان پر بار بار حملے اور سری لنکا بحریہ کی جانب سے ہندستانی ماہی گیروں ہوائی اڈے پر تمل ناڈو حکومت کے افسران استقبال کریں گے ۔ انہیں ریاستی گیسٹ ہاوس میں ٹہرایا جائے گا۔

 

لو ک آیوکت کے قیام کے مطالبے کو لیکر ایس ڈی پی آئی کا چنئی میں تمل ناڈو سکریٹریٹ کا محاصرہ
10ہزار سے زائد افراد شریک ،7ہزار افراد گرفتار، کیا رشوت کو قانون بنا دیا گیا ہے؟ :تہلان باقوی
چنئی،21مارچ(پریس ریلیز) تمل ناڈو میں سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا نے ریاست تمل ناڈو میں رشوت اور بدعنوانی کے خاتمہ کے لیے لوک آیوکتہ قائم کرنے کے مطالبے کو لیکر گزشتہ 3مارچ سے مختلف احتجاجی مظاہرے کے ذریعے حکومت تک اپنی بات پہنچانے کی کوشش کی، انسانی زنجیر مہم، ریاست کے تمام اضلاع میں ریونیو دفاتر کا محاصرہ ، عوامی اجلاس وغیرہ انعقاد کیا گیا۔ 20مارچ کو اس مہم کے آخری مرحلے میں تمل ناڈو سکریٹریٹ کا محاصرہ کرنے کا اعلان کیا گیا۔جس کے تحت کارکنان خواتین اور بچے سمیت ہزاروں افراد چنئی کلکٹر آفس کے قریب جمع ہوئے۔ تمل ناڈو سکریٹریٹ کا محاصرہ کرنے کے لیے ریاستی صدر تہلان باقوی کی صدارت میں ہزاروں افراد نے جلوس کی شکل میں تمل ناڈو سکریٹریٹ کے قریب تک پہنچ گئے، لیکن پولیس نے ریالی میں شریک ہزاروں افراد کو آدھے ر استے میں ہی روک لیا۔ جس کی مذمت کرتے ہوئے پارٹی کارکنان نے دھرنا دیا اور پولیس نے ریالی میں شامل 10ہزار سے زائد افراد میں 7ہزار سے زائد افراد کو گرفتار کرکے بعد میں انہیں رہا کردیا۔ اس موقع پر ریاستی صدر تہلان باقوی نے عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تمل ناڈو کے تمام سرکاری دفاتر میں روز بروز رشوت اور بدعنوانی میں اضافہ ہورہا ہے۔ جس سے غریب اور متوسط طبقات کے لوگوں کو کافی مشکلا ت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ عوام کا کوئی بھی کام بغیر رشوت کے نہیں ہورہا ہے۔ کوئی بھی کانٹراکٹ اور ٹینڈر حاصل کرنے کے لیے کمیشن کے طور پر افسروں کے ہاتھ گرم کرنا پڑتا ہے۔ رشوت اور بدعنوانی کی وجہ سے سرکاری دفاتر کے انتظامی امور میں کافی فرق پڑرہا ہے۔
اس کے علاوہ کئی ہزار روپئے کے اسکینڈل،ملک کے معدنی ذخائر میں کئی ہزار روپئے کے گھوٹالے کی وجہ سے ملک کی معیشت کو کھوکھلا کر اور ترقی میں رکاوٹ بن رہی ہے ، جس سے ملک سے غریبی مٹانے کے راستے محدود ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تمل ناڈو میں ملک بھر میں ووٹ کے لیے سب سے زیادہ نوٹ رشوت کے طور پر دیا جاتا ہے۔ ایک ووٹ کے لیے 4ہزار تا5ہزار روپئے دیکر عوام کو خرید لیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ ہے کہ رشوت اور بدعنوانی کے خلاف جو بھی قوانین ہیں اس پر سختی سے عمل درآمد کیا جانا چاہئے۔ سال 2014میں مرکز میں لوک پال ایکٹ قائم کرنے کے بعد ملک کے تمام ریاستوں میں بدعنوانی کی نگرانی کے لیے لو ک آیوکتہ قائم کرنا چاہئے۔ جبکہ کئی ریاستوں میں لوک آیوکتہ قائم کردیا گیا ہے، لیکن تمل ناڈو میں اس ایکٹ کو قائم کرنے کے اقدامات نہیں اٹھائے گئے ہیں۔ ریاستی صدر تہلان باقوی نے کہا کہ جس طرح سرکاری دفاتر میں ایک چھوٹے سے چھوٹے اور بڑے سے بڑے کام کے لیے رشوت دینا پڑتا ہے ،اس سے ایسا لگتا ہے کہ رشوت لینے کو قانون بنا دیا گیا ہے ؟ ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کیا کہ وہ سرکاری دفاتر میں رشوت لینے والوں کے خلاف شکایت درج کرائیں اور انہیں کسی بھی صورت میں رشوت نہ دیں۔ اس احتجاجی مظاہرے میں ریاستی جنرل سکریٹری نظام محی الدین،ریاستی سکریٹری امیر حمزہ،ٹی رتھنم، محمد بلال،سمیت ہزاروں کارکنان شریک رہے۔

 

جئے للیتا کو شخصی فائدہ پہنچانے کے لئے حصول اراضی بل کی حمایت کی گئی :کروناندھی

چے ئنی20مارچ(یو این آئی)حصول اراضی بل کے خلاف احتجاج کی قیادت کرتے ہوئے ڈی ایم کے نے آج مرکز کی بی جے پی حکومت پر زور دیا کہ وہ اس بات پر غور کرے کہ آیا اسے اس قانون سازی کے خلاف مناسب دلائل کو نظراندازکرتے ہوئے اس معاملہ پر پیشرفت کرنی چاہئے ۔ڈی ایم کے کے صدر ایم کروناندھی نے الزام لگایا ہے کہ اے آئی اے ڈی ایم کے نے اس بل کی حمایت کی تا کہ اس کے بدلے آمدنی سے زائد اثاثہ جات معاملے میں اس پارٹی کی سربراہ جئے للیتا کو شخصی فائدہ حاصل ہو سکے ۔کروناندھی نے اس بل کو مخالف کسان قراردیا ۔انہوں نے کہا کہ جے ڈی یو لیڈر و بہار کے وزیراعلی نتیش کماراور سماجی جہد کار اناہزارے سمیت کئی جماعتیں اس بل کی مخالفت کر رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ نتیش کمار نے بھوک ہڑتال کرتے ہوئے اس بل کی مخالفت کی اور کہا کہ اس بل پر بہار میں عمل نہیں کیاجائے گا۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت کو یہ غور کرنا چاہئے کہ آیا اس ایکٹ کے خلاف ان تمام دلائل کے باوجود وہ اس پر عمل کرے گی۔اے آئی اے ڈی ایم کے سربراہ و سابق وزیراعلی جیہ للیتا پرنکتہ چینی کرتے ہوئے انہوں نے یاددہانی کروائی کہ اس پارٹی نے سال 2013میں یو پی اے حکومت کے اراضی ایکٹ کی مخالفت کی تھی تاہم اس بل کی یہ پارٹی اب حمایت کر رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ تھوڑی سے بھی سونچ رکھنے والا اس بات سے انکار نہیں کر سکتا کہ اس بل کی تامل ناڈو کی حکمران جماعت نے حمایت کی تا کہ جیہ للیتا کے 66.65کروڑ روپئے کے آمدنی سے زائد اثاثہ جات معاملے میں شخصی فائدہ اٹھایا جاسکے ۔

 

شرپسندوں نے ٹی وی چینل کے دفتر پر ٹفن باکس بم پھینکا

چنئی،12مارچ (یو این آئی) شرپسندوں نے آج شہر کے ایک پرائیویٹ سیٹلائٹ چینل کے دفتر پر دو ٹفن باکس بم پھینکا۔پولیس ذرائع نے کہا کہ آج دو نوجوانوں نے جو موٹر سائیکل پر آئے تھے ، ٹی وی کے دفتر پر بم پھینکا اور فرار ہو گئے ۔آفس پر گرنے والا بم کان پھاڑ دینے والی آواز کے ساتھ پھٹ گیا ۔ یہ واقعہ رات کے ساڑھے تین بجے ہوا اس وجہ سے وہاں روڈ پر کوئی ٹریفک نہیں تھی ۔اس واقعہ میں کوئی زخمی نہیں ہوا ہے ۔ بموں کو ٹفن باکس میں رکھا گیا تھا دھماکے کے بعد جس کے چیتھڑے اڑ گئے ۔سی سی ٹی وی فوٹیج کے مطابق دو نوجوان آفس کے پاس سے گزرے اور پھر کچھ منٹ بعد وہ دوبارہ آئے اور آفس پر بم پھینکا۔اس واقعے سے علاقے میں گھبراہٹ ہے ۔آفس کی شکایت پر سینئر پولیس افسران اور فارینسک ایکسپرٹ جائے واقعہ پر پہنچے اور حالات کا جائزہ لیا۔ انھوں نے دھماکہ خیز مادے کی باقیات بھی حاصل کیں۔شرپسندوں کو پکڑنے کے لیے خصوصی ٹیم کو احکامات جاری کر دیے گئے ہیں۔اس واقعہ کی سیاسی پارٹیوں اور مختلف میڈیا تنظیموں نے مذمت کی ہے ۔

 

سری لنکائی بحریہ کی ہندوستانی ماہی گیروں پر پٹرول بم سے فائرنگ
رامیشورم،تمل ناڈو12مارچ(یو این آئی)وزیر اعظم نریندر مودی کے سری لنکا دورے سے قبل لنکا ئی بحریہ کے فوجیوں نے ہندوستانی ماہی گیروں کی کشتیوں پرکل دیر رات پالک اسٹریٹ کے گہرے سمندر کے قریب سے پٹرول بم سے فائرنگ کی۔رامیشورم میں ماہی گیری کر رہے ایک جیٹی نام کے ماہی گیر نے وہاں سے لوٹنے کے بعد نامہ نگاروں کو بتایا کہ جب وہ لوگ کچھت ہیوو کے جزیرے کے قریب مچھلیاں مار رہے تھے اسی دوران لنکائی بحریہ نے ان پر پتھر زنی کر دی ۔ جیٹی نے بتایا کہ اس کے بعد لنکائی فوجیوں نے ان کا پیچھا کیا اور ان پر فائرنگ شروع کر دی ۔ وہ لوگ بمشکل اپنی جان بچاپائے ۔جیٹی نے بتایا انہوں نے اتنے ہی پر بس نہیں کیا بلکہ ان کی کشیتوں پر پٹرول بم پھینکا گیا اور انہیں زخمی کرنے کی کوشش کی گئی۔انہوں نے بتایا کہ ان کی کشتیاں معجزاتی طور پر محفوظ رہی ہیں۔واضح رہے کہ کل صبح500ماہی گیری کی کشتیوں کو فروخت کرنے کے لئے میلہ لگایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے وزیر اعظم مسٹر مودی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ سری لنکا کی حکومت سے اس سلسلے میں بات کریں اور ان کے تحفظ کے مسئلے کو اٹھائیں۔انہوں نے اس کے لئے مستقل حل تلاش کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے ۔

سری لنکائی وزیر اعظم کا بیان ہندوستانی وزیر اعظم کے منہ پر شدید طمانچہ

مودی کے خیر سگالی دورے سے قبل اس طرح کا اشتعال انگیز انٹرویو انتہائی غیر مناسب:کروناندھی
چنئی9مارچ(آئی این ایس انڈیا)سری لنکا کے سمندری سر حد میں ہندوستانی ماہی گیروں کے گھسنے پر انہیں گولی مار دینے کے سری لنکائی وزیر اعظم رانل وکرمسنگھے کے متنازع بیان کی مذمت کرتے ہوئے ڈی ایم نے اسے وزیر اعظم نریندر مودی کے منہ پر طمانچہ بتایا۔مودی جلد ہی سری لنکا کے دورے پر جانے والے ہیں۔ڈی ایم کے سربراہ ایم کروناندھی نے کہا کہ سری لنکا کے وزیر اعظم کا ہندوستان کے وزیر اعظم کے خیر سگالی دورے سے پہلے ان کے منہ پر طمانچہ مارنے جیسا یہ انٹرویو دینا غیر منصفانہ ہے۔وہ سری لنکا کے وزیر اعظم کے ایک تامل ٹی وی چینل پر دکھائے گئے انٹرویو پر رد عمل دے رہے تھے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ اگر کوئی میرے گھر میں گھسنے کی کوشش کرتا ہے تو میں اسے گولی مار سکتا ہوں اور اس میں اس کی موت ہو جاتی ہے تو قانون مجھے یہ کرنے کی اجازت دیتا ہے۔کروناندھی نے رانل کے بیان کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایسے بیانات سے مسئلہ سلجھنے کے بجائے اور الجھ جائیں گے۔

 

اگلی میعاد کیلئے تاملناڈو کا وزیراعلی نہ بننے کا کروناندھی کا اعلان

چینئی، 28فروری(یواین آئی)ایک اہم فیصلہ کرتے ہوئے ٹاملناڈو کے سابق وزیراعلی و ڈی ایم کے پارٹی کے صدر ایم کروناندھی نے یہ اعلان کیا ہے کہ وہ اگلی میعاد کے لیے ریاست کے وزیراعلی نہیں بنیں گے اور پارٹی کے تحفظ پرتوجہ مرکوز کریں گے ۔ پانچ مرتبہ ٹاملناڈو کے وزیراعلی کے طور پر خدمات انجام دینے والے 91سالہ بزرگ رہنما کروناندھی نے اپنے فرزند و پارٹی کے خازن 63سالہ اسٹالن کی سالگرہ تقریب میں چے ئنی میں شرکت کی ۔ اس موقع پر انہوں نے اعلان کیا کہ وہ اگلی میعاد کے لیے ریاست کے وزیراعلی کا عہدہ نہیں سنبھالیں گے ۔انہوں نے کہا ‘‘ پارٹی کے لیڈران اور کارکن چاہتے ہیں کہ میں چھٹی مرتبہ ریاست کا وزیراعلی بنوں لیکن میں ریاست کا وزیراعلی بننا نہیں چاہتا ۔ اس کے بجاے میں پارٹی کی قیادت کو مضبوط کرنا اور پارٹی کو مستحکم کرنا چاہتا ہوں۔ڈی ایم کے واحد تحریک ہے جو معاشی طور پر کمزور اور سماجی طور پر کمزور افراد کی خدمت کرتی ہے اور ان کے فائدے کے لیے اس تحریک کا تحفظ ضروری ہے ۔پارٹی کو بچانا ہر فرد اور پارٹی کے ہر کارکن کی ذمہ داری ہے ۔’’کروناندھی نے ایک ایسے وقت یہ اعلان کیا ہے جب پارٹی داخلی مسائل کا سامنا کررہی ہے ۔عام انتخابات میں پارٹی کو بری طرح شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا اور حال ہی میں منعقدہ اسمبلی کے ضمنی چناو میں بھی پارٹی کا مظاہرہ ناقص رہا تھا۔ سمجھا جاتا ہے کہ کروناندھی اپنے فرزند اسٹالن کو پارٹی میں اہم رول دیں گے ۔

سابق وزیراعلی و ڈی ایم کے صدر ایم کروناندھی نے بہار کے وزیراعلی نتیش کمار کو مبارکباد پیش کی

چیئنی 23فروری(یو این آئی) ٹاملناڈو کے سابق وزیراعلی و ڈی ایم کے صدر ایم کروناندھی نے بہار کا وزیراعلی بننے پر نتیش کمار کو مبارکباد پیش کی ہے ۔انہوں نے اپنے مبارکبادی کے پیام میں کہا‘‘میں ڈی ایم کے اور میری طرف سے آپ کو نوماہ کے وقفہ کے بعد بہار کا ایک مرتبہ پھر وزیراعلی بننے پر مبارکباد پیش کرتاہوں۔آپ کے بہ حیثیت وزیراعلی پچھلے دور میں بہار نے کافی ترقی کی تھی ۔میں امیدکرتا ہوں کہ بہار ایک مرتبہ پھر ترقی اور امن کی راہ پر گامزن ہوگا۔

 

دو علیحدہ سڑک حادثات میں 5افراد ہلاک

رامنتاپور،ٹاملناڈو۔18فروری (یو این آئی) تاملناڈو کے رامنتاپور اور مدورائی جنوبی اضلاع میں پیش آئے دو علحدہ سڑک حادثات میں 5 افراد ہلاک اور 13 دیگر زخمی ہوگئے ۔ پولیس نے بتایا کہ کیرل کے تین سیاح اس وقت ہلاک ہوگئے جب ان کی ٹمپو مدورائی۔رامیشورم نیشنل ہائی وے پر اچا پلی کے قریب ٹھہرے ہوئے ٹرک سے ٹکرا گئی۔ اس حادثہ میں 8 افراد زخمی ہوگئے جن میں سے دو کی حالت تشویشناک ہے ۔ ان سیاحوں کا تعلق کیرلکے ملاپورم سے ہے جو رامیشورم آ رہے تھے کہ یہ حادثہ پیش آیا۔ شدید زخمیوں کو مدورائی کے سرکاری راجاجی اسپتال میں داخل کروادیا گیا جبکہ دیگرکا علاج رامنتاپورم کے سرکاری اسپتال میں جاری ہے ۔ دوسرے حادثہ میں مدورائی ضلع کے میلور کے قریب نرسنگ پٹی گاؤں میں کار درخت سے ٹکراگئی جس کے سبب دو افراد ہلاک اور پانچ دیگر زخمی ہوگئے ۔دوسری جانبکرناٹک کے ہاسن کے چکمگلور تعلقہ میں فور وہیلر گاڑی کے بڑے پتھر سے ٹکراجانے کے سبب کیرل کے وائیناڈ سے تعلق رکھنے والے ایک ہی خاندان کے تین افراد ہلاک اور دیگر تین زخمی ہوگئے ۔ پولیس نے بتایا کہ مرنے والوں کی شناخت 52 سالہ شریف، ان کی اہلیہ 42 سالہ زینب اور ان کے فرزند 27 سالہ سائمن کے طور پر کی گئی ہے ۔ یہ خاندان چکمگلور جا رہا تھا جہاں شریف کی دختر رہتی ہیں۔اس حادثہ میں شریف کی موقع پر ہی موت ہو گئی جبکہ ان کی اہلیہ اور بیٹا کی موت چکمگلور کے اسپتال میں علاج کے دوران ہو گئی ۔اس حادثہ میں شریف کی بہو ثمینہ ، ایک اور فرزند سبیل جو کار چلا رہا تھا کے علاوہ پوتا شمیل بھی زخمی ہوگئے ۔ انہیں ہاسن کے اسپتال میں داخل کروادیا گیا۔ چکمگلور پولیس نے معاملہ درج کرلیا ہے ۔ بیکانیر-سورتگڑھ نیشنل ہائی وے پر دھند کی وجہ سے بولیرو جیپ و تیل ٹینکر کے تصادم میں آر اے ایس اہلکار ارچنا سروہی کی موت ہو گئی اور دو دیگر زخمی ہو گئے،سروہی سورتگڑھ میں وزیر اعظم کی تقریب میں حصہ لینے جا رہی تھیں۔زخمیوں کو بیکانیر کے پی بی ایم ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔
جامسر پولیس تھانااہلکار دیویندر راٹھور نے بتایا کہ ہائی وے پر گھنے کہرے کی وجہ سے سورتگڑھ کی طرف جا رہی بولیرو جیپ و سامنے سے آ رہے تیل کے ٹینکر میں تصادم ہو گیا۔اس ٹکر میں ضلع کونسل کی اضافی چیف ایگزیکٹو آفیسر 38سالہ ارچنا سروہی کی موت ہو گئی-ان کے ائیور مدن موہن تواڑی اور نریش یادو زخمی ہو گئے، جنہیں بیکانیر کے پی بی ایم ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔تصادم میں بولیرو کے آگے کا حصہ بری طرح سے تباہ ہو گیا۔راٹھور نے بتایا کہ دونوں گاڑیوں کے تصادم سے ہائی وے پر طویل جام لگ گیا،پولیس نے سخت مشقت کے بعد دونوں گاڑیوں کو سڑک سے ہٹا کر قبضے میں لے لیا۔

ٹاملناڈو میں قانون کے طلبہ نے احتجاج ختم کردیا

چنئی،14فروری(یو این آئی)ڈاکٹر امبیڈکر گورنمنٹ لا کالج چینئی کے طلبہ جواپنے ادارہ کو اس کے موجودہ مقام پیری سے چینئی کے باہر منتقل کرنے کے معاملہ پر تین فروری سے احتجاج کر رہے ہیں،نے مدراس ہائی کورٹ کی اپیل پر اپنے احتجاج کو ختم کردیا۔ایک صدی پرانی عمارت میں چلائے جارہے اس کالج کی عمارت میں میٹرو ریل کے کاموں کے سبب شگاف پڑنے سے اس کالج کو منتقل کرنے کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے ۔اس سلسلہ میں پی ڈبلیو ڈی کی جانب سے کالج کے پرنسپل کو اس بات کی اطلاع دی گئی اور اس بات کی خواہش کی گئی کہ اس عمارت کے ڈھانچہ کے کمزور ہونے کے سبب اسے فوری طورپر خالی کر دیاجائے ۔اں اطلاع کے بعد طلبہ کی جانب سے تین فروری کو راستہ روکو احتجاج کیا گیا جس پر پولیس نے ان طلبہ کے خلاف کارروائی کی ۔اس کے باوجود طلبہ نے اپنا احتجاج گزشتہ دس دنوں سے جاری رکھا۔اس کالج کو منتقل کرنے کے خلاف ایک وکیل کی جانب سے عدالت میں ایک عرضی داخل کی گئی جس کی سماعت مدراس ہائی کورٹ نے کی۔اس سماعت کے دوران چیف جسٹس ایس کے کول نے طلبہ کو مشورہ دیا کہ وہ اپنا احتجاج ختم کردیں اور کلاسز میں حاضر ہوں۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ اس معاملے پر عدالت میں ایک اور کیس ہے جس کی سماعت کے دوران کالج کی منتقلی کے معاملے کا تجزیہ کیا جائے گاجس کے بعد طلبہ نے کل شام اپنے احتجاج کو ختم کردیا۔

ریت گھوٹالہ معاملے میں ڈی ایم نے سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کیا
چنئی،02فروری(یو این آئی) تمل ناڈو کی اہم ترین اپوزیشن پارٹی ڈی ایم کے نے غیر قانونی طریقے سے ریت نکالنے میں شاملافراد کا پتہ لگانے اور ان کی نشاندہی کے لئے سی بی آئی سے جانچ کرانے کا مطالبہ کیا ہے ۔اس گھوٹالے سے ریاستی حکومت کو ایک لاکھ کروڑ کاخسارہ ہوا تھا۔ڈی ایم کے کے ایک سینئر لیڈر ایم کے اسٹالن نے غیر قانونی طریقے سے ریت نکالنے سے متعلق ایک رپورٹ کے سلسلے میں کہا کہ جو افراداس سے مستفیض ہوئے ہیں انہیں بے نقاب کیا جا نا چاہئے اور انہیں سامنے لایا جانا بہت ضروری ہے ۔انہوں نے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ غیر قانونی طریقے سے زمین کی کھدائی کرنے والی پرائیویٹ کمپنی وی وی منرلس نے دوسری پرائیویٹ کمپنیوں کے ساتھ معدنیات و مونوجائیٹ پر پابندی کے باوجود کھدائی کی اور فائدہ اٹھایا۔انہوں نے کہا کہ مونوجائیٹ بہت حساس معدنیات میں شمار کیا جا تا ہے اور اس کا استعمال جوہری توانائی کے لئے مرکزی محکمے ہی کر سکتے ہیں۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت کی طرف سے منظوری نہ ملنے کے باوجود بھی اس کمپنی نے اسے نکالا۔ انہوں نے کہا کہ اس کی کھدائی کرنے سے وہاں رہنے والے باشندوں کی صحت پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ اور وہاں کے لوگوں کو گردہ میں تکلیف کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔مسٹر اسٹالن نے اس معاملے میں مرکزی حکومت سے مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ مثبت انداز میں اسے حل کرے ۔

تمل ناڈو کے رہنماؤں نے راج پکشے کی شکست کا خیرمقدم کیا
چنئی، 9 جنوری (یو این آئی) تمل ناڈو میں مختلف سیاسی پارٹیوں کے رہنماؤں نے سری لنکا کے صدارتی انتخابات میں مہندا راج پکشے کی شکست کا آج خیرمقدم کیا ہے۔تمل حامی تنظیموں اور سیاسی پارٹیوں کے کارکنوں نے ریاست کے مختلف حصوں میں پٹاخے چھوڑکر اور مٹھائیاں تقسیم کرکے مسٹر راج پکشے کی شکست کا جشن منایا۔ڈی ایم کے، ڈی ایم ڈی کے، پی ایم کے اور دیگر پارٹیوں کے رہنماؤں نے کہا کہ سری لنکا میں ہوئے صدارتی انتخابات میں مسٹر پکشے کی شکست کی انہیں امید تھی۔ مئی 2009 میں انتہاپسند تنظیم ایل ٹی ٹی ای کے ساتھ آخری مرحلے کی لڑائی کے دوران تملوں پر مظالم اور حقوق انسانی کی خلاف ورزی کے مسٹر راج پکشے پر الزامات لگے تھے۔ڈی ایم کے کے صدر ایم کروناندھی صدارتی انتخابات میں مسٹر پکشے کی شکست کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ فاتح اور شکست کھانے والوں کو یہ سوچنا چاہئے کہ سری لنکا میں ہوئے واقعات کیلئے کون ذمہ دار تھا۔ڈی ایم ڈی کے بانی وجے کانت نے مسٹر راج پکشے کی ہار کو سبھی تملوں کی جیت بتایا۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں نے ہزاروں معصوم تملوں کے قتل کے قصوروار راج پکشے کے خلاف اچھا فیصلہ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی نتائج سے یہ ثابت ہوجاتا ہے کہ مسٹر راج پکشے نے غلط کام کئے ہیں۔ایم ڈی ایم کے کے جنرل سیکریٹری نے مسٹر پکشے کی شکست اور مسٹر سری سینا کی جیت کا خیرمقدم کیا ہے۔ انہوں نے سبھی جمہوری ممالک سے جنگی جرائم کی جانچ کیلئے سری لنکا میں اقوام متحدہ کے جانچ پینل کو داخلے کی اجازت دینے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ علیحدہ تمل ایلم کا قیام ہی اس مسئلہ کا واحد حل ہے۔

 

تمل ناڈو میں سونامی کی تباہی کے 10 سال مکمل
چینئی، 26 دسمبر (یو این آئی) زخم، چاہے بھر گئے ہوں لیکن انکے نشانات اب بھی باقی ہیں۔تمل ناڈو کے ساحلی اضلاع میں 10 سال قبل 2004 میں آنے والی تباہ کن سونامی کی خوف ناک یادوں کے درمیان خاموش ریلیاں نکالی گیءں، ہلاک ہونے والوں کو نم آنکھوں سے خراج عقیدت پیش کیا گیا اور انکے لئے دعائیہ تقریب کا اہتمام کیا گیا...


Advertisment

Advertisment