Today: Thursday, November, 23, 2017 Last Update: 03:40 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

HIMACHAL PRADESH

HIMACHAL PRADESH

اگر ایمان نہ بنا تو اعمال پر استقامت نہ ہوگی اوریہ عمل رسمی ہونگے

ہماچل پردیش ،24مارچ (پریس ریلیز) انسان کی پیدائش کا اصل مقصد اور مرنے کے بعد کی کیفیت کی صحیح معلومات کیلئے دعوت و تبلیغ جس کی شروعات حضرت مولانا الیاس صاحب ؒ نے بستی نظام الدین نئی دہلی کی ایک چھوٹی سی مسجد بنگلہ والے سے ۱۹۱۶ میں شروع کی جو ان کی فکرو کڑھن سے آج دنیا کے ہر کچے پکے مکان تک پہنچ گئی جس سے وابستہ لوگوں میں اللہ کے احکامات کی پابندی آخری نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی دعوت و فکر سے وابستگی اور اللہ کے بندوں کی خیر خواہی کی تمام صفات پائی جاتی ہیں اس فکر کا اظہار مدرسہ قادریہ مسروالا کے ناظم مولانا کبیر الدین فاران نے ہماچل پردیش کے سالانہ جوڑ مقام مدرسہ قادریہ مسروالا میں اجتماع کے افتتاحی پروگرام میں کیا ۔آپ نے کہا کہ داعی ،دعوت اور طریقہ دعوت تین چیزیں ٹھیک ٹھیک طریقہ نبوی ﷺ کے مطابق ہوں تو دعوت میں تاثیر اور کشش پیدا ہوگی اور اس کیلئے ضروری ہو گا کہ ان کی ذاتی زندگی پاکیزہ ہو اور مخلوق کے ہر اجر سے بے نیازی ہو انہوں نے کہا کہ دراصل دعوت والا کام ایمان بنانے کی بنیاد ہے ۔بانی تبلیغ حضرت مولانا الیاس صاحب ؒ کے حوالہ سے کہا کہ اگر ایمان نہ بنا تو اعمال پر استقامت نہ ہوگی اوریہ عمل رسمی ہونگے ۔اعمال پر اجر اور اعمال پر استقامت بغیر ایمان کے ممکن نہیں یہی وجہ تھی کے نبی آخر الزماں شہر وبازاروں ،گلیوں اور دیہاتوں میں اسی محنت کیلئے تشریف لے جایا کرتے تھے ۔ حضرت جی مولانا یوسف صاحب ؒ کے فرمان کے حوالہ سے کہا کہ امت جب بنے گی جب امت کے سب طبقے بلا تفریق اس کا م میں لگ جائیں جو حضور ﷺ دے کر گئے اور یاد رکھو امت کو توڑنے والی چیزیں اور معاشرت کی خرابیاں ہیں ،حضرت جی مولانا یوسف صاحب ؒ نے فرمایا کہ امت کسی علاقہ برادری اور قوم کا نام نہیں بلکہ سیکڑوں ،ہزاروں قوموں اور علاقوں کوجوڑ کر امت بنتی ہے جو کوئی کسی ایک قوم یا علاقہ کو اپنا سمجھتا ہے اور دوسروں کو غیر، وہ امت کو ذبح کر تاہے اور اس کے ٹکڑے ٹکڑے کرتاہے اور صحابہ کرامؓ کی محنتوں پر پانی پھیرتاہے ۔
مولانا فاران نے علم دین کے حاصل کرنے کی ضرورت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے حوالہ دیا کہ حضرت مولانا الیاس صاحب ؒ نے بنگلے والی مسجد میں فرمایا تھا کہ آپ لوگوں کی یہ ساری چلت پھرت اور جدو جہد ساری کوششیں بیکار ہونگی اگر اس کے ساتھ علم دین اور ذکراللہ کا پو را اہتما م نہیں کیا بلکہ سخت خطر ہ اور قوی اندیشہ ہے کہ اگر ان دو چیزوں کی طرف سے غفلت برتی گئی حضرت نے فرمایا کہ علموں ذکر تبلیغی کاموں کے دو بازوہیں اور بلا بازو کے اڑنے والے پرندے درندوں کے شکار تو ہوجاتے ہیں مگر سانس نہیں لے پاتے ۔ ا س مجمع کو مرکز نظام الدین سے تشریف لائے حضرت مولانا عبد الستار نے خطاب کیا اور دنیا کے لئے دعوت و تبلیغ کی راہ کو کامیابی کا ذریعہ بتا یا ہماچل پردیش کے امیر جماعت الحاج حکم الدین نے دعوت و تبلیغ کی ضرورت اور اس کے دینی ودنیا وی فائدہ پر روشنی ڈالی اجتما ع میں دس ہزار سے زائد افرا نے شرکت کی اور دنیا میں اللہ کے حکموں کی پابندی اور امن و امان کی دعاؤں کا اہتما م کیا گیا ۔

 

پک اپ گاڑی کھائی میں گرنے سے آٹھ افراد ہلاک، 14 زخمی

شملہ، 10 مارچ (یو این آئی) ہماچل پردیش میں چمبہ ضلع کے سلونی سب ڈویزن میں بکروا نلہا کے نزدیک آج صبح ایک پک اپ گاڑی کے گہری کھائی میں گرجانے سے 8افراد ہلاک اور چودہ (14)دیگر زخمی ہوگئے ۔ایڈیشنل پولیس سپرنٹندنٹ کلونت ٹھاکر نے یو این آئی کو بذریعہ فون پر بتایا کہ حادثہ کے شکار تمام افراد پک اپ موٹر گاڑی میں سوار ہوکر شادی کی ایک تقریب میں شرکت کرکے واپس لوٹ رہے تھے ۔ تبھی ایک موٹر پر گاڑی ڈرائیور کے قابو سے نکل کر 250 فٹ گہری کھائی میں جاگری۔ فوری طور پر ہلاک شدگان کی شناخت نہیں ہوسکی ہے ۔ زخمیوں کو چمبہ کے زونل اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔ وزیراعلی ویر بھدر سنگھ نے ا س حادثہ میں رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے اس حادثہ میں زخمی ہونے والے افراد کی مدد کرنے کی ضلع انتظامیہ کو ہدایت دی ہے ۔

اب ہماچل پردیش میں بہے گی ترقی کی گنگا!

مرکزی سرکار نے 40,625کروڑ روپیہ کی گرانٹ منظور کی ،بی جے پی نے ادا کیا مودی سرکار کا شکریہ، شری کانت شرما نے کہا کہ’ یوپی اے نے ریاست کو نظر انداز کیا
محمداحمد
نئی دہلی ،25فروری ( ایس ٹی بیورو) ہماچل پردیش کو بھاری بھرکم 625 40,کروڑ روپے کی گرانٹ دینے سے متعلق 14 ویں مالیاتی کمیشن کی سفارشات منظور کرنے پر وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت کا شکریہ اداکرتے ہوئے بی جے پی کے قومی سکریٹری شری کانت شرما نے کہا کہ’ یہ بہت بڑی رقم ہماچل پردیش کو آئندہ پانچ سالوں میں ملے گی۔ ہماچل پردیش کو یہ رقم مالی خسارے کی تلافی کرنے کیلئے مختص کی گئی ہے تاکہ ریاست جلد ترقی کی راہ میں تیزی سے آگے بڑھ سکے۔ ہماچل پردیش میں پہاڑی زمین کا حصہ ہونے کی وجہ سے ترقیاتی پروگراموں کونافذ کرنے اور سرمایہ کاری حاصل کرنے میں جو دشواریاں آتی ہیں ان کو دور کرنے کیلئے وزیراعظم نریندرٹ مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت نے یہ قابل ستائش قدم اٹھایا ہے۔ مسٹر شری کانت شرما نے کہا کہیقیناًاین ڈی اے حکومت کے اس قدم سے ہماچل پردیش والوں کو اس کا فائدہ ہوگا۔ اس سے ایک طرف ریاست میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی ہوگی وہیں نوجوانوں کو روزگار بھی ملے گا۔بھارتیہ جنتا پارٹی ہمیشہ ہی ہماچل پردیش کی ترقی کیلئے کوشاں رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 7 جنوری، 2003 کو اس وقت کی اٹل بہاری واجپئی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت نے ہماچل پردیش کو دس سال کیلئے صنعتی پیکیج دیا تھا۔ اسکے نتیجے میں ہماچل پردیش میں پیکج سے پہلے کے مقابلہ میں 300 فیصد زیادہ سرمایہ کاری ہوئی۔ اس دوران ہماچل میں اوسطا کل500 12 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری ہوئی اور صنعتی یونٹس کی تعداد میں 28 فیصد اضافہ ہوا۔ انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے جب اس پیکیج کی مدت پوری ہو رہی تھی تو پیشرو یوپی اے حکومت نے اس پیکیج کو آگے بڑھانے میں آنا کانی کی جس سے ریاست کا نقصان ہوا۔وزیر اعظم مسٹر نریندرڈھ مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت نے اب سیاست میں جیت سے اوپر اٹھ کر ترقی کے سفر میں ریاستوں کو ساتھ لیکر چلنے اور ملک کی وفاقی ساخت کو مضبوط کرنے کیلئے کئی قدم اٹھائے ہیں۔ اس سے نہ صرف ہماچل پردیش کا بلکہ تمام ریاستوں کابھلا ہو گا۔

ہماچل پردیش میں شدید برفباری سے معمولات زندگی درہم برہم

شملہ، 19 فروری (یو این آئی) ہماچل پردیش کے بالائی علاقوں میں مسلسل بارش اور برفباری کی وجہ سے ریاست میں آج معمولات زندگی درہم برہم ہوگئیں۔ اس پہاڑی ریاست میں گزشتہ 24 گھنٹے سے مسلسل بارش اور برفباری ہورہی ہے ۔ گزشتہ شام کو ریاست کے متعدد علاقوں میں ژالہ باری کی وجہ سے عام زندگی پوری طرح مفلوج ہوگئی ہے ۔ محکمہ موسمیات نے بتایا کہ ضلع لاہول کے کیلانگ علاقے میں 9 سینٹی میٹر برفباری ہوئی ہے جبکہ ضلع کنور میں کالپا علاقے یں 4.8 سینٹی میٹر برفباری درج کی گئی ہے ۔ شملہ میں 15.5 ملی میٹر بارش ہوئی ہے ، جبکہ ضلع چمبا کے سالونی میں 41 ملی میٹر، دھرمشالہ میں 10 ملی میٹر، سندر نگر اور بھنتار میں 4 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے ۔ کالپا میں درجہ حرارت منفی 7.2 ڈگری سیلسیس درج کیا گیا ہے ، منالی میں ایک ڈگری، شملہ میں پانچ ڈگری، دھرمشالہ ، سالون اور بھنتار ایئر پورٹ مین سات ڈگری درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا ہے ۔محکمہ موسمیات کے دفتر نے آئندہ 24 گھنٹے کے دوران ریاست کے مختلف علاقوں میں مزید بارش اور برفباری کی پیشگوئی کی ہے ۔

 

ہماچل پردیش کے بالائی علاقوں میں بھاری برف باری
شملہ، 16فروری(یوا ین آئی) ہماچل پردیش کے بالائی علاقوں میں آج تازہ برف باری ہوئی جب کہ نچلے علاقوں میں بادل ہونے کی وجہ سے ہلکی سے درمیانی درجے کے بارش ہوئی۔ زویتنگ پاس کیلونک میں لاڈڈ۔ سیتر رشی اور گوشال کی پہاڑیوں وادوے پور اور کازا کے علاقوں میں بھاری برف باری کی وجہ سے برفانی تودے گرنے کا خطرہ بڑھ گیا ہے ۔سیاحتی مقام منالی میں بارش ہوئی جب کہ تارکندا او رکھارا ہاتھیر جیسے سیاحتی مقامات میں پانچ سینٹی میٹر تک برف باری ہوئی۔ سیاحتی مقام کنری میں بھی ہلکی بارش ہوئی۔ حالاں کہ شملہ او راس کے قریب کے علاقوں میں صبح ہلکی بارش ہوئی۔محکمہ موسمیات کے دفتر سے اطلاع دی گئی ہے کہ اگلے 24گھنٹوں میں ریاست کے مختلف علاقوں میں درمیانی درجے کی بارش ہوگی ۔ادارہ نے خراب موسم کی وجہ سے 18فروری کو بھاری بارش یا برف باری سے آگاہ کیا ہے ۔حالاں کہ بارش اور برف باری کے باوجود بھی ریاست میں درجہ حرارت کچھ حد تک بڑھا ہے جس سے سرد ہواؤں سے کچھ راحت ملی ۔

 

ہماچل میں مسلم اور سکھ نہیں ہوسکیں گے داخل : وی ایچ پی

دھرم شالہ،11دسمبر( ایجنسیاں ) وشو ہندو پریشد نے اگلے سال مارچ اور اپریل میں ہونے والے اپنے اجلاس میں ہماچل کو ہندو ریاست بنانے کا اعلان کرنے کی پوری تیاری کر لی ہے۔ چار مئی 2015 کو وی ایچ پی شملہ میں 40 ہزار لوگوں کو جمع کر اس قرارداد کو دوہرائے گی ۔اس کے علاوہ وی ایچ پی کا کا 2015 تک گرینڈ رام مندر بنانے کا بھی منصوبہ ہے۔وی ایچ پی کے ریاستی تنظیمی صدر منوج کمار نے کہا ہے کہ ہماچل کے ہندو ریاست بننے کے بعد کسی بھی مسلم یا عیسائی کو اس ریاست میں گھسنے نہیں دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اس وقت وشو ہندو پریشد کے قیام کا 50 واں سنہراسال چل رہا ہے اور ایسے میں’ ہندوشکتی وجے یودھاؤں ‘ کو تیار کرنے کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ اس کیلئے ملک میں پانچ لاکھ لوگوں کو وی ایچ پی سے جوڑنے کا ہدف رکھا ہے۔وی ایچ پی جلد ہی سوشل میڈیا پر بھی مہم شروع کر دے گی۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ لو جہاد کے نام پر مسلم لڑکے ہندو لڑکیوں کو بھگاکر لے جا رہے ہیں اور ہندو لڑکیوں کو بیرون ملک فروخت کیا جا رہا ہے۔ ابھی تک ہماچل کی 16 لڑکیوں کو بھگایا جا چکا ہے ۔

 

مختلف حادثوں میں 6افراد ہلاک،6زخمی

شملہ، 14 نومبر (یو این آئی) ہماچل پردیش میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران الگ الگ حادثوں میں دو افراد کی موت ہو گئی جبکہ دو دیگر زخمی ہو گئے۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ رات رامپور کے قریب نگل میں ایک گاڑی گہری کھائی میں گر گئی جس میں گاڑی ڈرائیور سنجے کمار کی جائے حادثہ پر ہی موت ہو گئی جبکہ دو دیگر زخمی ہو گئے۔ زخمیوں کو قریبی اسپتال لے جایا گیا۔ ایک دیگر حادثے میں مشہور بالجی ریستوراں کی عمارت گرنے سے ایک مزدور زخمی ہو گیا۔ بعد میں اسے ہسپتال لے جایا گیا جہاں دل کا دورہ پڑنے کی وجہ سے اس کی موت ہو گئی۔چھوٹا ادے پور ضلع کے دھمانی گاؤں کے نزدیک علی راج پور ہائی وے پر ا ج ایک تیز رفتار ٹرک نے ایک جیپ کو ٹکر مار دی جس میں سوار دو خواتین سمیت چار مسافر موقع پر ہی ہلاک ہوگئے جبکہ دیگر6افراد زخمی ہوگئے ہیں۔پولس ذرائع نے یہاں بتایا کہ چھوٹا ادے پور ضلع کے رنگ پور گاؤں کے رہنے والے 19 سالہ جیپ ڈرائیور بھوون راتھوا، مدھیہ پردیش سے ملا ہوا ضلع علی راج پور کی جنگالی بین بھیل(40) اور اس کی بیٹی گیتا(10) اور مدھیہ پردیش کے کدولیا گاؤں باشندہ بھودارہ گمیر جلالہ(49)کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔یہ جیپ مدھیہ پردیش کے چاند پور سے ا رہی تھی جبکہ ٹرک علی راج پور جا رہا تھا۔زخمیوں کو اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔ پولس ٹرک ڈائیور کی تلاش کر رہی ہے جو ٹرک چھوڑ کر فرار ہوگیا ہے۔بہار میں بیگوسرائے ضلع کے بکھری تھانہ علاقے کے جیت پور گاؤں میں آج صبح ایک کسان کا گولی مار کر قتل کر دیا گیا۔پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ جیت پور گاؤں کے باشندے اور کسان نند کشور تانتی(35) اپنے گھر سے بازار جا رہا تھا۔ تبھی گھات لگائے چار مجرموں نے اسے گولی مار دی۔ اس واقعہ میں کسان کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔ذرائع نے بتایا کہ قتل کے وجوہات کا فوری پتہ نہیں چل سکا ہے۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس نے موقع پر پہنچ کر تفتیش شروع کر دیا ہے۔ لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے بیگوسرائے صدر اسپتال بھیجا گیا ہے۔

...


Advertisment

Advertisment