Today: Sunday, September, 24, 2017 Last Update: 05:15 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

CHHATTISGARH

CHHATTISGARH

نکسلیوں نے سڑک بنا رہی گاڑیاں پھونکیں
جگدل پور، یکم اپریل (یو این آئی) چھتیس گڑھ کے کونڈاگاؤں ضلع میں نکسلیوں نے سڑک کی تعمیر کا کام کر رہی 10 گاڑیوں میں آگ لگا دی۔اگرچہ اس بار اپنی طرح کی پہلے واقعے میں نکسلیوں کو اس جرم کے دوران گاؤں والوں کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا، جس سے غصے میں آئے نکسلیوں نے کئی لوگوں کی پٹائی کر دی اور ان کے کھیت میں کھڑے ذاتی ٹریکٹر بھی جلا کر خاک کر دئے ۔پولیس ذرائع کے مطابق کیش کال تھانہ علاقے کے گھنورا اور ایراگاؤں کے درمیان پردھان منتری سڑک روزگار اسکیم کے تحت سڑک بن رہی ہے ۔ منگل کو یہاں 15۔20 وردی پوش مسلح نکسلی آ دھمکے ۔ نکسلیوں نے یہاں موجود مزدوروں کو بھگاکر گاڑی جلانے کی کوشش کی، جس کی انھوں نے جم کر مخالفت کی۔گاؤں والوں نے نکسلیوں سے کہا کہ وہ ان کے روزگار کے ذرائع نہ چھینیں ،لیکن نکسلیوں نے ان کی ایک نہ سنی اور ان سے مار پیٹ کرنے لگے ۔انہوں نے بتایا کہ کارکنوں کو پیٹنے کے بعد نکسلیوں نے اپنے ساتھ لائے مٹی کا تیل چھڑک کر آٹھ ٹریکٹر اور ایک جے سی بی مشین کو بھی آگ کے حوالے کر دیا۔ جلائی گئی گاڑیوں میں گاؤں والوں کے ذاتی ٹریکٹر بھی شامل ہیں، جو انہوں نے کاشت کے لئے خرید رکھے تھے ۔ پہلی بار گاؤں والوں کی جانب سے ہوئی مخالفت سے نکسلی بوکھلا گئے اور غصے میں انہوں نے ان کے ٹریکٹرو ں کو بھی نہیں بخشا۔کونڈاگاؤں پولیس اہلکار ابھیشیک مینا نے واردات کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس فورس وہاں کے لئے روانہ کر دی گئی۔

 

آر ایس ایس کے پروگرام میں انتظامیہ کے حصہ لینے کامعاملہ

کانگریس نے ’’انتظامی بھگواکرن‘‘ پرچھتیس گڑھ اسمبلی سے کیاواک آؤٹ
رائے پور25مارچ(آئی این ایس انڈیا)چھتیس گڑھ اسمبلی میں آج اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس نے ریاستی حکومت پر انتظامیہ کے بھگوا کرن کرنے کا الزام لگاتے ہوئے ایوان سے واک آؤٹ کیا۔اسمبلی میں آج وقفہ صفرمیں کانگریس کے رکن اسمبلی امت جوگی اور ستینارائن شرما نے ریاست میں حکام اور ملازمین کو آر ایس ایس کی شاخوں میں حصہ لینے کی اجازت دینے کا معاملہ اٹھایا۔جوگی نے کہا کہ ریاستی حکومت نے ریاست کے افسران اور ملازمین کو سنگھ کی شاخوں میں حصہ لینے کی اجازت دی ہے جوآئین کے خلاف ہے۔یہ انتظامیہ کا بھگوا کرن کرنے کی کوشش ہے۔وہیں سینئر رکن ستینارائن شرما نے اس معاملے میں8 دفعہ 131کے تحت بحث کرانے کا مطالبہ کیا۔جوگی نے کہا کہ ریاست حکومت نے آر ایس ایس کو غیر سیاسی ادارہ مانا ہے اور حکام اور ملازمین کو اس کی شاخوں میں حصہ لینے کی اجازت دے دی ہے۔آر ایس ایس کو کس بنیاد پر غیر سیاسی ادارہ ماناگیاہے۔اپوزیشن ارکان کے مطالبات کے بعد اسمبلی کے صدر گوری شنکر اگروال نے کہا کہ انہیں اپوزیشن ارکان سے اس سلسلے میں بات چیت کی مانگ کولے کر تجویز موصول ہوئی ہے۔اس سلسلے میں غور کیا جائے گا۔اگروال کے اس اعلان کے بعد اپوزیشن کے ارکان نے اس موضوع پر فوری بحث کرانے کا مطالبہ کیا اور ایوان میں نعرے بازی کرنے لگے۔بعد میں اپوزیشن کے ارکان نے بھگوا کرن نہیں چلے گا اور نعرے لگاتے ہوئے ایوان سے واک آؤٹ کر دیا۔وہیں پارٹی کے ارکان نے بھی نعرے بازی کی۔چھتیس گڑھ حکومت نے گزشتہ ماہ ریاست کے حکام اور ملازمین کو آر ایس ایس کی شاخوں میں حصہ لینے کی اجازت دے دی تھی۔اگرچہ سرکاری افسران اور ملازمین کوآرایس ایس کے سیاسی پروگراموں میں حصہ لینے کی اجازت اب بھی نہیں ہے۔

 

چھتیس گڑھ میں کانگریس کے بند کا وسیع اثر

رائے پور 18 مارچ (یو این آئی) چھتیس گڑھ میں کسانوں کے مددکے لیے اسمبلی گھیراؤ کرنے کے دوران پارٹی کارکنوں پر لاٹھی چارج کے خلاف کانگریس کی طرف سے آج چھتیس گڑھ بند شروع ہو گیا ھے بند کا ریاست میں وسیع اثر ہے ۔پردیش کانگریس کی طرف سے اس بند کو کامیاب بنانے کے لئے سینئر رہنماؤں کے ساتھ پارٹی کارکنان صبح سے ہی سڑکوں پر اتر گئے ہیں۔ بند کی ریاست کی سربراہ تجارتی تنظیم چھتیس گڑھ چیمبر آف کامرس سمیت تقریبا تمام بڑی کاروباری تنظیموں نے حمایت کی ہے ۔تعلیمی اداروں میں چل رہے سالانہ امتحانات کے پیش نظر اسکولوں کالجوں کو بند سے آزاد رکھا گیا ھے پبلک گاڑیوں اور صحت خدمات کو بھی بند سے آزاد رکھا گیا ہے ۔کانگریس نے گزشتہ 16 مارچ کو کسانوں کو دھان کا بونس نہیں دئے جانے ، شہری فراہمی کارپوریشن میں کروڑوں کے گھوٹالے سمیت مختلف معاملات کے سلسلے میں اسمبلی کا گھیراؤ کیا گیا تھا۔پولیس کے تمام انتظامات کو درکنارکرتے ہوئے کانگریس کارکن اسمبلی کے گیٹ تک پہنچ گئے تھے جس کے بعد پولیس نے زوردار لاٹھی چارج کی تھی جس میں سینئر رہنماؤں سمیت بڑی تعداد میں کانگریس کارکن زخمی ہو گئے تھے ۔ اس کی مخالفت میں کانگریس نے آج کے بند کا اعلان کیا۔دارالحکومت رائے پور میں بند کا وسیع اثر دیکھا جا رہا ہے ۔ تمام دوکانیں اور کاروباری ادارے بند ھیں۔ پٹرول پمپ اور سنیما گھر بھی بند ہیں۔ کانگریس کارکن سڑکوں پر پارٹی کے جھنڈے لے کر گھوم رہے ہیں۔ ریاست کے اہم شہروں بلاس پور، امبیکاپور، کوربا، درگ اور جگدل پور سمیت تمام جگہوں سے بند کے وسیع اثر مرتب ہونے کی اطلاع ہے ۔بند کے پیش نظر پولیس نے پوری ریاست میں سیکورٹی کے سخت بندوبست کئے ہیں۔
پولیس کو جبرا دوکانیں بند کرانے اور لوگو کو بند میں شامل کروانے پر سخت کارروائی کی ہدایت دی گئی ہے ۔

 

یہ عوام کو رابطہ کرنے سے دوررکھنے کی کوشش ہے :روسین

رائے پور ؍5؍مارچ (آئی این ایس انڈیا )ہندوستان کے لوگوں کو ڈیجیٹل انڈیا کا خواب دکھانے والے اور سوشل سائٹس پر سب سے زیادہ سر گرم رہنے والے سیاستدانوں میں شمار وزیراعظم نریندر مودی کے پاس اپنی ای میل آئی ڈی بھی نہیں ہے۔چھتیس گڑھ کے ایک تاجر نے وزیر اعظم کے دفتر (پی ایم او)سے حق اطلاعات قانون (آر ٹی آئی)کے ذریعہ یہ چونکانے والی معلومات حاصل کی ہے۔چھتیس گڑھ کی سی ا یس آ ر کمپنی کے بانی رو سین کمار نے آر ٹی آئی ایکٹ کے تحت پی ایم او میں خط لکھ کر ان کا استعمال میں آنے والا ای میل پتہ مانگا تھا۔اس کے جواب میں پی ایم او کی جانب سے 17؍فروری کو ایک خط بھیجا گیا جس میں بتایا گیا تھا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے پاس کوئی ذاتی ای میل آئی ڈی نہیں ہے۔خط میں یہ بھی لکھا گیا کہ کسی بھی موضوع پر معلومات، ردعمل ،تجاویزیاشکایت کے لئے و زیراعظم کی سرکار ی و یب سائٹ کے ذریعہ رابطہ کیا جا سکتا ہے۔پی ایم او کا جواب ملنے کے بعد روسین نے رائے گڑھ میں کہا کہ یہ حیرت کی بات ہے کہ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے وزیر اعظم کے پاس ایک عدد ای میل آئی ڈی بھی نہیں ہے۔مودی حکومت ہندوستان کو ڈیجیٹل انڈیا بنانے کی تیاری کررہی ہے۔قابل ذکر ہے کہ مودی کے وزیر اعظم بننے میں سب سے بڑا رول سوشل میڈیا کا ہی رہا ہے، ایسے میں انفارمیشن ٹکنا لو جی اور ای گورننس کو فروغ دینے والی حکومت کے وزیر اعظم کے پاس ای میل آئی ڈی کا نہ ہونا کئی سوال کھڑے کرتا ہے۔رو سین نے دعوی کیا کہ خط میں دئے یو آر ایل کے ذریعہ وزیر اعظم تک اپنی بات پہنچانے کے لئے ایک طویل عمل سے گزرنا پڑتا ہے۔وزیر اعظم سے رابطہ کرنے کے لیے صارفین کو وہاں ایک نیا اکاؤنٹ بنانا پڑتا ہے۔ساتھ ہی اس ویب سائٹ کو یک طرفہ با ت چیت کے لئے تیار کیا گیا ہے۔درخواست ،فیڈ بیک اور تجاویز بھیجنے کے بعد وہ وزیر اعظم تک پہنچی کہ نہیں اس کی اطلاع حاصل کرنے کا کوئی طریقہ نہیں ہے۔رو سین کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم تک اپنی بات پہنچانے کے لئے عام آدمی کو ایسا کوئی پلیٹ فارم نہیں دیا گیا ہے جو آسان، سستا اور فوری ہو۔

 

چھتیس گڑھ کے سینئر صحافی احفاظ رشید کا انتقال
رائے پور، 5 مارچ (یو این آئی)چھتیس گڑھ کی راجدھانی رائے پور کے سینئر صحافی احفاظ رشید کا کل دیر شام حرکت قلب بندہوجانے سے انتقال ہوگیا۔مسٹر رشید کو دل کا دورہ پڑنے پر مقامی ایسکورٹ اسپتال لے جایا گیا، جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دے دیا، مسٹر رشید طویل عرصے سے صحافت سے وابستہ تھے اور انتہائی محنتی اور ایماندار صحافی کی حیثیت سے ان کی پہچان تھی۔ گزشتہ کافی عرصے سے وہ الیکٹرونک میڈیا میں کام کرتے تھے ۔خوش مزاج شخصیت کے مالک مسٹر رشید ڈرامہ کے تھیٹر سے بھی وابستہ تھے اور انہوں نے چھتیس گڈھ کی کچھ فلموں میں بھی کام کیا۔ چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی ڈاکٹر رمن سنگھ نے مسٹر رشید کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے ۔یہاں جاری ایک تعزیتی پیغام میں انہوں نے کہا کہ مرحوم رشید ایک باصلاحیت قلمکار اور قابل صحافی تھے ۔ انہوں نے طویل عرصے تک پرنٹ اور الیکٹرونک میڈیا میں نمایاں خدمات انجام دیں۔وزیر زرعت برج موہن اگروال نے بھی مسٹر رشید کے انتقال پر رنج و غم کا اظہار کیا۔

 

راہل نے آدیواسیوں کی زمین بچاکر اچھا کام کیا:رگھوٹھاکر

رائے پور، 5 فروری (یو این آئی) لوک تانترک سماج وادی پارٹی کے قومی کنوینر رگھوٹھاکر نے کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی کو بڑے صنعت کار وں کے کانکنی کے پٹے منسوخ کرکے آدیواسیوں کی زمین بچانے کی ان کی کوششوں کے لئے مبارکباد کی ہے ۔چھتیس گڑھ کے دورے پر آئے مسٹر ٹھاکرنے آج یہاں یو این آئی کی زمین بچانے کی ان کوششوں کے لئے مبارکباد پیش کرتا ہوں اور امید کرتا ہوں کہ اس کام کو آئندہ بھی جاری رکھنے کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے جیسا کو مسٹر گاندھی نے دو روز قبل دہلی میں اپنی انتخابی مہم کے دوران عوام سے وعدہ کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مسٹر گاندھی پر ماحولیاتی پروجیکٹوں کی منظوری کو روکنے کے لئے دباؤ ڈالنے سے متعلق سابق مرکزی وزیر جینتی نٹراجن کے ذریعے لگائے گئے الزامات بے بنیاد نظر آتے ہیں۔مسٹر رگھوٹھاکر نے کہا کہ نومبر 2013 کے خط کے جنوری 2015 میں افشا کرنے میں سچائی کی بجائے سیاسی نظر آتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ویسے بھی پارٹی تنظیم کا سرکاری کام کاج بھی مداخلت کا پورا ختیار ہوتا ہے ۔مسٹر ٹھاکر نے کہا کہ جو لوگ کانگریس میں محترمہ سونیا گاندھی اور راہل گاندھی اور بی جے پی میں راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) میں موہن بھاگوت پر تنقید کرتے ہیں،دراصل وہ ایسی حکومت چاہتے ہیں جو کسی کو جوابدہ نہ ہو۔ عوام کے درمیان جاکر پارٹی تنظیم ووٹ دلانے کا کام کرتی ہے تو حکومت کے اندر اس کی مخالفت کرنا فطری بات ہے ۔انہوں نے چھتیس گڑھ کی امن حکومت کو بے حس قرار دیتے ہوئے کہا کہ نسبندی سانحہ آپریشن کے بعد بینائی سے محروم ہونے کے واقعات کے بعد بھی حکومت بیماری سے مسلسل اموات ہورہی ہیں ، سوائن فلو سے بھی اموات شروع ہوگئی ہیں۔

آر ایس ایس سے بہت کچھ حاصل کیا:اڈوانی
رائے پور، 4 فروری (یو این آئی) سابق نائب وزیر اعظم اور بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی نے راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنی زندگی میں اس سے وابستہ ہونے کے بعد بہت کچھ حاصل کیا۔مسٹر اڈوانی نے آج یہاں ہندی روزنامہ سودیش کے رائے پور ایڈیشن کی سلور جوبلی سالگرہ پر منقعدہ تقریب سے خطاب کرتے کہا کہ وہ 13۔14 برس کی عمر میں آر ایس ایس سے وابستہ ہوئے تھے اور اس کے بعد اپنے تمام عہدوں تک پہنچے ۔ اس موقع پر انہوں نے سوامی دیانند کی زندگی پر مبنی ‘وندنیہ وویکانند’ کتاب کا بھی اجرا کیا۔انہوں نے کہا کہ آزادی سے پہلے آر ایس ایس سیاست میں اترنے کے حق میں نہیں تھا۔ آزادی کے بعد اس کی سوچ تبدیل ہوئی اور آج اس کی سوچ سے وابستہ افراد نہ صرف سیاست بلکہ دوسرے شعبوں میں بھی اپنی خصوصی شناخت بنا چکے ہیں۔ انہوں نے اس موقع پر دوہری رکنیت تنازعہ اور بھارتیہ جنتا پارٹی کی تشکیل کا بھی مختصراً ذکر کیا۔

 

چھتیس گڑھ کے ڈی جی ایم ڈبلیو انصاری کی وزیر اعلیٰ سے ملاقات
رائے پور ۔15جنوری (ایجنسی )چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ ڈاکٹر رمن سنگھ سے کل رات ان کی رہائش گاہ پر جناب ایم ڈبلیو انصاری (ڈی جی پی ) چھتیس گڑھ اور قومی کشتی کمیٹی کے صدر اور جنرل سکریٹری اور صوبہ کے شعبہ سائس کے صدر نے وزیر اعلیٰ سے ملاقات کی ۔ر قومی کشتی کمیٹی کے صدر نے 21 اور22فروری کو ہونے والی دو روزہ قومی کشتی تقریب میں وزیر اعلیٰ ڈاکٹر رمن سنگھ کو مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کرنے کی دعوت دی ۔ بھلائی میں انجہانی مشہور پہلوان ٹائگر وائی پی سنگھ کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے قومی کشتی تقریب کا انعقاد کیا جا رہا ہے ۔ جناب ایم ڈبلیو انصاری (ڈی جی پی ) چھتیس گڑھ نے وزیر اعلیٰ کو بتایا کہ انجہانی مشہور پہلوان ٹائگر وائی پی سنگھ صوبے کے مشہور و معروف پہلوان تھے انہوں صوبہ چھتیس گڑھ کے لئے کشتی لڑتے ہوئے تقریبا ڈیڑھ درجن اعزازات حاصل کئے ہیں ۔ انجہانی ٹائگر وائی پی سنگھ کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ہر سال کشتی کی تقریب منعقد کی جاتی تھی لیکن گزشتہ کچھ سالوں سے یہ تقریب بند کردی گئی تھی ۔ چھتیس گڑھ کشتی کمیٹی کی کاوشوں سے اسے پھر سے شروع کرنے کی کوشش کی گئی ہے ۔وزیر اعلیٰ نے کشتی تقریب کو پھر سے شروع کئے جانے پر مسرت کا اظہار کیا اور اس کی کامیابی کے لئے اپنی نیک خواہشات سے نوازا ۔ وزیر اعلیٰ سے ملاقات کرنے والوں میں کشتی کمیٹی کارکنان کے علاوہ انجہانی پہلوان ٹائگر وائی پی سنگھ کے بیٹے جناب جے پی سنگھ ، جناب ایس این سنگھ ، راجیسور سنگھ ، پروفیسر تیرتھشر سنگھ ، پربودھ مشرا رقی سنکر سنگھ روی تیواری شامل تھے ۔

 

نوبرس بعد نرساپور میں ہفتہ وار بازار

سکما۔ 12 جنوری (یو این آئی) چھتیس گڑھ میں ضلع سکما کے دورناپال میں ماؤ نوازوں کا گڑھ سمجھے جانے والے چتنلنار تھانہ علاقہ کے تحت نرساپور میں 2006 کے بعد اتوار کو ہفتہ وار بازار لگایا گیا۔اس بازار میں دورناپال سے بڑی تعداد میں تاجر بھی شامل ہوئے بازار لگنے سے سب سے زیادہ خوشی گاوں والوں کو ہوئی ہے کیونکہ اب انہیں ضرورت کا سامان خریدنے کے لئے دورناپال تک کا سفر نہیں کرنا پڑے گا۔پولیس ذرائع کے مطابق نرساپورم جگر منڈا اور دورناپال کے درمیان میں واقع ہے ۔ نو برس بعد شروع ہوئے اس ہفتہ وار بازار میں اتوار کو پہلے دن کافی بھیڑ تھی۔ اس دوران سیکورٹی کے لئے جوانوں کو بھی تعینات کیا گیا تھا ۔ گاوں والوں اور تاجروں میں نکسلیوں کا بالکل خوف نہیں تھا۔سلواجڈوم کے وقت میں ماؤ نوازو ں کی دہشت کے سبب جگرمنڈا کے ہفتہ وار بازار کو بند کردیا گیا تھا۔ گاوں والوں نے وقفہ وقفہ سے انتظامیہ سے ہفتہ وار بازار کھولنے کا مطالبہ کیا تھا ۔
لیکن گاوں والو ں اور کاروباریوں کو ماؤ نوازوں نے ہفتہ وار بازار نہ جانے کا مشورہ دیا تھا۔
 

ماؤنواز دے رہے ہیں ہیلی کاپٹر گرانے کی ٹریننگ

رائے پور9جنوری(آئی این ایس انڈیا)چھتیس گڑھ کے نکسل متاثرہ بستر علاقے میں نکسلیوں کے قبضے سے پولیس نے ویڈیو برآمد کی ہے جس میں نکسلی ہیلی کاپٹر کو گرانے کی پریکٹس کر رہے ہیں۔ریاست کے پولیس ڈائریکٹر جنرل آر کے وج نے آج یہاں بتایا کہ پولیس نے نکسلیوں کے پاس سے ویڈیو برآمد کی ہے جس میں نکسلی ہیلی کاپٹر کی ڈمی بنا کر اسے گرانے کی پریکٹس کر رہے ہیں۔وج نے بتایا کہ پولیس کو اطلاع ملی ہے کہ ریاست کے نکسل متاثرہ بستر علاقے میں نکسلی ہیلی کاپٹر گرانے کی پریکٹس کرتے ہیں لیکن اس کی ویڈیو بھی بنائی جا رہی ہے یہ نوٹس پہلی بار ملا ہے۔انہوں نے بتایا کہ اس کی معلومات کے بعد علاقے میں سیکورٹی انتظامات بڑھا دئے گئے ہیں اور تمام ہیلی پیڈوں کی حفاظت میں اضافی جوانوں کو تعینات کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔پولیس نے اس ویڈیو کو ریاست کے نکسل متاثرہ سکما ضلع کے جنگل سے برآمد کیا ہے۔اس میں ماؤنواز ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے کی پریکٹس کر رہے ہیں۔پولیس کو ملی ویڈیو میں ماؤنواز باغیوں نے پلاسٹک اور لکڑی سے ایک ہیلی کاپٹر تیار کیا ہے اور اس کو اونچے درخت پر لٹکا دیا گیا ہے۔ماؤنواز اس ہیلی کاپٹر پر نشانہ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں۔اس کی پریکٹس میں ماؤنوازوں کو یہ بتایا جا رہا ہے کہ وہ اپنے ہتھیاروں سے ہیلی کاپٹر پر کیسے نشانہ لگا سکتے ہیں۔چھتیس گڑھ میں واقع سینٹرل ریزرو پولیس فورس(سی آری پی ایف) کے حکام نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کو اطلاع ملی ہے کہ نکسلی علاقے میں تعینات ہیلی کاپٹر کو مار گرانے کے لئے پریکٹس کرتے ہیں۔ان ہیلی کاپٹروں کا استعمال زیادہ تر نکسلی حملے میں زخمی جوانوں کو باہر نکالنے کے لئے کیا جاتا ہے۔حکام نے بتایا کہ ماؤنواز ہیلی کاپٹر کو اوپر اڑنے کے دوران اور نیچے اترنے کے دوران اسے نشانہ بنانے کی کوشش کرتے ہیں،وہیں نیچے اترنے کے دوران ہیلی کاپٹر کو بھٹکانے کے لئے دھواں کا استعمال کیا جاتا ہے۔بہرحال ماؤنواز اس میں کامیاب نہیں ہو پائے ہیں۔پولیس سے ملی معلومات کے مطابق گزشتہ سال نکسلیوں نے پولیس سے کئی ہتھیار لوٹے ہیں جن اے 47رائفل اور انساس رائفل سمیت کئی دیگر جدید ہتھیار شامل ہیں۔اس کے ساتھ ہی نکسلی سیکورٹی فورسز سے گرینیڈ لانچر (یوبی جی ایل)لوٹنے میں بھی کامیاب رہے ہیں۔اس لانچر کے ذریعے آٹھ سو میٹر تک نشانہ لگایا جا سکتا ہے۔پولیس حکام نے کہا کہ پولیس کو شک ہے کہ نکسلی ان ہتھیاروں کا استعمال ہیلی کاپٹر پر نشانہ لگانے کے لئے کر سکتے ہیں۔سیکورٹی فورسز کے جوانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ایسے مقامات کو تلاش کریں جہاں ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے کی ٹریننگ دی جا رہی ہے۔
چھتیس گڑھ کے نکسل متاثرہ سکما ضلع میں نکسلیوں نے جنوری 2013میں زخمی جوان کو باہر نکالنے کے دوران ہندوستانی فضائیہ کے ہیلی کاپٹر کو نشانہ بنانے کی کوشش کی تھی۔وہیں گزشتہ سال نومبر مہینے میں سکما ضلع میں ایک بار پھر نکسلیوں نے ہیلی کاپٹر پر فائرنگ کی تھی۔اس واقعہ میں ایک کمانڈرزخمی ہو گیا تھا۔

 

امتحان لینے آئے ڈاکٹر پر ڈنٹل کی طالبہ کی آبروریزی کا الزام
رائے پور، 30 دسمبر(یو این آئی) چھتیس گڑھ کے سرکاری ڈنٹل کالج رائے پور کی ایک طالبہ کی شکایت پر پولیس نے اترپردیش کیضلع اٹاوا سے امتحان لینے کے لئے آئے ایک میڈیکل پروفیسر کے خلاف آبروریزی کا معاملہ درج کیا ہے۔ پولیس کے ذرائع نے بتایا کہ اٹاوا کے ایک میڈیکل کالج کے ڈاکٹر وکاس ورما وائیوا لینے آئے تھے اور انہوں نے 25 دسمبر کوجن طلبہ کا وائیوا لیااس میں مظلوم طالبہ بھی تھی۔ شام کو ڈاکٹر ورما نے طالبہ کو اپنے ہوٹل پہنچ کر مسیج کرکے بلایا لیکن ہوسٹل میں ہونے کی وجہ سے اس نے رات میں آنے سے معذوری ظاہر کی۔ پولیس کے مطابق دوسرے دن صبح طالبہ ہوٹل پہنچی جہاں پر ڈاکٹر ورما نے اس کی آبروریزی کی۔
طالبہ کی فیس بک کے ذریعہ پچھلے کچھ مہینوں سے ملزم ڈاکٹر سے پہچان تھی اور اسی وجہ سے وہ اس کے بلانے پر ہوٹل پہنچ گئی۔ اس واقعہ کے بعد طالبہ اپنے آبائی شہر چلی گئی اور کل دو دن بعد اپنے گھر والوں کے ساتھ پہنچ کر دارالحکومت کے مودہا پارہ تھانہ میں معاملہ درج کرایا۔پولیس ملزم کی گرفتاری کے لئے ایک ٹیم اترپردیش روانہ کررہی ہے۔
 

بلدیاتی انتخابات میں عوام کانگریس کو منہ توڑ جواب دیں گے
امبیکا پور، 27 دسمبر (یو این ائی) چھتیس گڑھ کے وزیراعلی رمن سنگھ نے آج کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں کانگریس نسبندی کے سانحہ کو انتخابی موضوع بنانے جارہی ہے لیکن ووٹر ان انتخابات میں کانگریس کا صفایا کرکے اس کا منہ توڑ جواب دیں گے۔مسٹر سنگھ نے یہاں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم ریاست کے کارپوریشنوں کو کانگریس سے نجات دلانا چاہتے ہیں اور عوام نے اس کیلئے ذہن بنالیا ہے۔ عوام اس الیکشن میں کانگریس کی فیملی پلاننگ کردے گی۔ انہوں نے کہا کہ نسبندی سانحہ میں کسی کو بچایا نہیں جارہا ہے۔ جتنی سخت کارروائی ہوسکتی تھی کی گئی ہے۔خیال رہے کہ چھتیس گڑھ میں گذشتہ دنوں ایک کیمپ میں نسبندی کے بعد کئی عورتوں کی موت ہوگئی تھی جس کی وجہ سے اس وقت ریاستی حکومت کے خلاف لوگوں میں کافی غم و غصہ تھا۔انہوں نے اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس کے ذریعہ ان کی میعاد کار کو پورا نہ کرپانے سے متعلق بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جس دن میں نے حلف لیا تھا اسی دن سے کانگریسی اس طرح کی بیان بازی کررہے ہیں۔ عوام نے انہیں پانچ برس کیلئے ووٹ دیا ہے اوروہ اپنی میعاد کار پوری کریں گے۔ دوسری طرف وزیراعلی کے ذریعہ کانگریس کی نسبندی سے متعلق بیان پر تنقید کرتے ہوئے اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر پی ایس سہدیو نے تنقید کرتیہوئے کہا کہ عام طور پر رمن سنگھ اپنی شائستگی کیلئے مشہور ہیں لیکن اس طرح کے دیئے گئے بیان کی وہ مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے الزام لگایا کہ مسٹر سنگھ پر جیرم گھاٹی کا بھوٹ سوار ہے۔کانگریس کے لیڈر نے امبیکا پور میں میئر کے عہدے پر پارٹی کے امیدوار کی جیت کا دعوی کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کی حالت کا اسی سے ہی اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ خود وزیراعلی کو شہر میں چھ نکڑ جلسے کرنے پڑے ہیں۔

چھتیس گڑھ میں کانگریس کی امیدوار کی خودکشی
رائے پور، 25 دسمبر (یو این آئی)چھتیس گڑہ کے کھرسیا میں کونسلر کی حیثیت سے الیکشن لڑنے والے کانگریس امیدوار نے آج پھانسی سے لٹک کر خودکشی کرلی۔ یہ اطلاع آج پولس نے دی ہے۔کھرسیا میونسپل کونسل کے وارڈ نمبر 7 سے الیکشن لڑنے والے مسٹربابو رام کنور (42)کی لاش آج صبح شہر میں ان کی رہائش گاہ کے چھت سے لٹکی ہوئی ملی ہے۔پولس نے انکی جیب سے خودکشی کی تحریر بھی برآمد کی ہے جس میں انہو ں نے اپنی موت کے لئے کسی کومورد الزام نہیں ٹھہرایا ہے۔خودکشی کا انتہائی قدم اٹھانے والے بابو رام اپنی انتخابی مہم کے لئے فنڈ کا انتظام نہ کرپانے کی وجہ سے بہت بے چین تھا۔واضح رہے کہ کھرسیا میونسپل کونسل کے پہلے مرحلے کے انتخابات آئندہ ہفتہ پیر کے روز ہونے والے ہیں۔

 

نکسلی دہشت گردی

وردیاں کوڑے دان میں ملنے کی جانچ کا حکم

رائے پور، 4 دسمبر (یو این آئی) مرکزی ریزرو پولیس دستہ (سی آر پی ایف) نے چھتیس گڑھ کے ضلع سکما میں پیر کو نکسلی حملے میں مارے گئے جوانوں کی خون سے آلودہ وردیاں یہاں کے مقامی امبیڈکر اسپتال کے کوڑیدان میں پائے جانے کے معاملے کی جانچ کا حکم دے دیا۔ سی آر پی ایف کے کارگزار صدر آر سی تیال نے بتایا کہ اس معاملے کی چھان بین کا کام ریاستی پولیس کے ڈائرکٹر جنرل کی قیادت میں ہوگا، اور اس کی رپورٹ جلد ہی سونپ دی جائے گی۔ نکسلی حملے کے پیش نظر رائے پور کے دورے پر آنے وا...


Advertisment

Advertisment