Today: Thursday, November, 23, 2017 Last Update: 03:39 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

BIHAR

BIHAR

مظفرپورمیں اروند کجریوال کے خلاف کیس درج،نازیباالفاظ کے استعمال کاالزام

مظفر پوریکم اپریل(آئی این ایس انڈیا)عام آدمی پارٹی کے کنوینر و دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کے خلاف بہار کے مظفر پور ضلع کے چیف عدالتی مجسٹریٹ (سی جے ایم)کی عدالت میں کیس درج کرایاگیا۔یہ کیس سیتامڑھی روڈ کی رہائشی راجیش چندرشرما نے دائر کیا۔اس میں الزام ہے کہ کجریوال نے لیڈروں کے لئے مناسب الفاظ کا استعمال کیا ہے۔سی جے ایم نے عرضی پر سماعت کے لئے چار اپریل کی تاریخ مقررکی ہے۔شکایت میں کہا گیا ہے کہ 27اور 28مارچ کو اخبارات میں دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کے سلسلے میں خبریں شائع کی گئی تھیں۔اس میں ان کی طرف سے اپنی جماعت کے رہنماؤں پرشانت بھوشن، یوگیندریادو،آنندکمارواجیت کمار جھا کے لئے قابل اعتراض زبان استعمال کرنے کی بات لکھی تھی۔کئی نیوز چینلوں نے بھی اس بارے میں خبریں نشرکی تھیں۔کجریوال کے ان الفاظ سے انہیں ٹھیس پہنچی ہے۔

 

ٹرک اورسواری گاڑی کی ٹکر میں 13 خواتین سمیت 18 زخمی

حاجی پور 31 مارچ (یو این آئی) بہار میں ویشالی ضلع کے حاجی پورتھانہ حلقہ کے پاسوان چوک کے قریب آج صبح ٹرک اورسواری گاڑی کی ٹکر میں 13خواتین سمیت 18 افراد زخمی ہو گئے ۔ پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ مڈڈے میل منصوبہ کے تحت کام کرنے والے باورچی پٹنہ میں مظاہرہ کرنے ایک سواری گاڑی پر سوار ہو کر سیوان سے جا رہے تھے تبھی پٹنہ سے حاجی پور کی طرف آ رہے ایک ٹرک نے ٹکر مار دی۔ اس حادثے میں 13 خواتین سمیت کل 18 افراد زخمی ہو گئے جن میں چار کی حالت ناز ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ زخمیوں کو حاجی پور صدراہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے ۔ حادثے کے بعد ڈرائیور ٹرک چھوڑ کر فرار ہو گیا جسے پولیس نے اپنے قبضے میں لے لیا ہے ۔

 

سیاسی لڑائی سے ہی بد لے گی مسلمانوں کی تقدیر :اشفاق رحمن

پٹنہ28مارچ (آئی این ایس انڈیا)موجودہ ملک کی حالات کا جائزہ لیں تو معلوم پڑتا ہے کہ تعصب، مذہبی منافرت، تہذیبی ولسانی عصبیت اور فرقہ پرستی کے چنگل میں پھنس کر سیکولرزم اور جمہوریت نہ صرف سسکیاں لے رہا ہے بلکہ فرقہ پرستی کے سہارے اپنے مفادات کے تحفظ پریقین رکھنے والی جماعتیں اپنے ناپاک منصوبے کو عملی جامہ پہنا کر ملک کو ہندو راشٹر بنانے پر آمادہ ہیں۔ جنتادل راشٹر وادی کے قومی کنوینر اور جواں سال مسلم رہنماء اشفاق رحمن کہتے ہیں کہ سب سے زیادہ نا گفتہ بہ صورت حال ملک کی 25کروڑمسلم آبادی کی ہے۔ ملک کے موجودہ منظر نامے پر ایک نظر ڈالی جائے تو کینوس پر سب سے پہلے ہاشم پورہ کے سانحہ کی تصویر ابھرتی ہوئی دکھائی دیتی ہے۔ کتنی عجیب بات ہے کہ گجرات فسادات کے مجرم ایک ایک کر سلاخوں کے باہر نکل رہے ہیں اور ہاشم پورہ میں انصاف نے دم توڑ دیا۔ اگر کسی معاملے میں کوئی مسلمان ملزم کے بطور سامنے آتا ہے تو میڈیا میں اس کی تشہیر ایسے کی جاتی ہے جیسے اس کا جرم ثابت ہو چکا ہے، عدالتی کاروائی میں کچھ حد تک تیز رفتار ہو جاتی ہے اور اگر اس کانام خالد مجاہد، فصیح محمد، ساجد، عاطف، سہراب الدین یا عشرت جہاں ہو تو ان کی شہادت ہی انصا ف کے تقاضے کو پورا کر سکتی ہے۔ لیکن اگر وہ ہاشم پورہ قتل عام کے قصور وار پی اے سی کے جوان ہو اور مسلمان مقتول ہو تو نظریہ تبدیل ہو جوتا ہے۔مسلمانوں اور ملک کے امن پسند افراد کیلئے یہ واقعات لمحہ فکریہ ہیں۔ اس لئے کہ گجرات میں مسلمانوں کے قتل عام کے گناہگاروں کو جیل سے رہائی مل رہی ہے اور عدالتیں ان کو با عزت بری بھی کر رہی ہیں۔ آخر ایسا کیوں ہے؟اشفاق رحمان کتے ہیں کہ اس تفریق کو باریکی سے سمجھنے کی ضرورت ہے۔ آج تعلیم کو بھی ایک مخصوص رنگ میں رنگنے کی منظم سازش ہورہی ہے۔ کچھ ریاستیں سوریہ نمسکار کو لازمی قرار دے رہی ہیں تو کچھ ریاستوں میں اسکولوں میں ہر ایک کو گیتا پڑھنے کا فرمان جاری کیا جارہا ہے۔ ہندوستان میں جہاں لوگوں کو مذہبی آزادی حاصل ہے، کسی کو کسی پر اپنا مذہب تھوپنے کی اجازت نہیں ہے وہیں سب کو ہندو قرار دینے اور مذہبی آزادی کو پابندیوں میں جکر دینے کی مذموم کوشش اعلانیہ ہورہی ہے۔ مسلمانوں کے مذہبی تشخص کو پامال کرنے کا گھناؤنا کھیل کھیلا جارہا ہے۔ مسلمانوں کے عائلی مسائل میں مداخلت کر کے ان کے جذبات کوٹٹولنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ ان کو تعلیمی، معاشی اور اقتصادی اعتبار سے کمزور کردینے حربے اپنائے جارہے ہیں۔مگرافسوس کی بات تو یہ ہے کہ مسلمانوں کی نمائندگی کا دعویٰ کرنے والی جماعتیں فرقہ پرستانہ ماحول کا کوئی معقول حل تلاش کرنے اور مسلمانوں پر ہورہے ظلم وزیادتی کے خلاف آواز اٹھانے کیلئے تیار نہیں ہے۔ مسلمانوں کے ہمدرداورمسیحاکہے جانے والے خود ساختہ لیڈر بھی خاموش تماشائی بن کر پوری بے حسی کے ساتھ مسلمانوں کی ذلت ورسوائی کے کربناک منظر کو دیکھ رہے ہیں۔ جنتادل راشٹر وادی ملک کے موجودہ سیاسی منظر نامہ پر سنجیدگی سے نظر رکھ رہی ہے اورمسلمانوں کے تابناک سیاسی مستقبل کیلئے حکمت عملی مرتب کرنے میں مصروف عمل ہے۔ اشفاق رحمن کہتے ہیں کہ مسلمانوں کے خوش آئند مستقبل کی ضمانت صرف سیاسی بیداری اور اقتدار میں مکمل حصہ داری سے ہی مل سکتی ہے۔ ایوانوں میں ملی رہنماؤں کے فقدان نے بھی صورت حال کو سنگین بنا دیا ہے۔ آج ضروری ہے کہ انتخابات میں مسلمان نہ صرف بڑھ چڑھ کر حصہ داری لیں بلکہ اپنی اقتدار کیلئے دامے، درمے، سخنے آگے بڑھیں۔ جنتادل راشٹر وادی مسلمانوں کی قیادت کیلئے پابند عہد ہے۔ اپنی قیادت سے ہی مسلمانوں کی سیاسی بد حالی دور ہو سکتی ہے۔

 

نوجوان کا گولی مار کر قتل

بیگوسرائے ، 27 مارچ (یو این آئی) بہار میں ضلع بیگوسرائے کے مفصل تھانہ علاقے کے بھیروا گاؤں میں کل رات ایک نوجوان کو گولی مار کر ہلاک کردیا گیا۔پولیس ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ بھیروا گاؤں کا رہنے والا امن کمار (18) مویشی کو چارا دے کر گھر لوٹ رہا تھا کہ بدمعاشوں نے گھات لگا کر اسے گولی مار دی جس سے موقع پر ہی اس کی موت ہوگئی۔ فوری طور پر قتل کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ لاش پوسٹ مارٹم کیلئے بیگوسرائے صدر اسپتال بھیجی گئی ہے ۔ پولیس معاملے کی تفتیش کر رہی ہے ۔

 

نکسلی حریف گروپوں کے درمیان فائرنگ ، 2 نکسلی ہلاک

سہرسہ، 27 مارچ (یو این آئی) بہار کے سہرسہ ضلع کے سلاکھوا پولس تھانہ کے ریکھا گاؤں میں آج نکسلیوں کے دو حریف گروپوں کے درمیان فائرنگ میں دو نکسلی مارے گئے ۔پولس سپرنٹنڈنٹ پنکج سنہا نے یہاں بتایا کہ نکسلی انتہاپسندوں کے دو گروپوں کے درمیان بالادستی کے سوال پر تشدد پھوٹ پڑا جس کے دوران ہوئی فائرنگ میں دو انتہاپسند ہلاک ہوگئے ۔ ان دونوں کی وکاس چودھری اور کیدر رام کے طور پر شناخت ہوگئی ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ یہ دونوں نکسلی عرصہ سے تخریبی سرگرمیوں کے سلسلہ میں پولس کو مطلوب تھے ۔دونوں لاشیں پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دی گئی ہیں اور فائرنگ میں ملوث نکسلیوں کو پکڑنے کے لئے جگہ جگہ چھاپے مارے جارہے ہیں۔

 

کوسی کمشنری کے سہرسہ اور سپول میں ہوگا رحمانی ۳۰ کا داخلہ امتحان

پٹنہ۲۴؍مارچ (پریس ریلیز ) رحمانی ۳۰ میں رہ کر تیاری کے لیے آئی آئی ٹی (جے ای ای)اور اے آئی پی ایم ٹی داخلہ امتحان کا مرکزکوسی کمشنری کے سہرسہ اور سپول میں بنایا گیا ہے، یہ امتحان ۱۲؍ اپریل۲۰۱۵ء کو دن کے ۱۱؍ بجے سے دو بجے تک ہوگا، آئی آئی ٹی کی تیاری کے لیے داخلہ ٹیسٹ میں ایسے لڑکے جو دسویں کے بورڈ ؍ اسکول کے امتحان میں شامل ہوئے ہیں، شریک ہوسکتے ہیں،اس طرح اے آئی پی ایم ٹی ایسی مسلم طالبات شریک ہوسکتی ہیں، جو بورڈ؍ اسکول کے دسویں امتحان میں شریک ہوئی ہوں، طلبہ وطالبات اپنے قریبی سنٹر سے ۷؍ اپریل تک داخلہ فارم حاصل کرکے جمع کرسکتے ہیں، آن لائن فارم بھر نے کی سہولت بھی موجود ہے، سہرسہ اور سپول کے مراکز یہ ہیں:سوپول ،مہیلا ٹیکنیکل سینٹر، سوپول، جناب ابوظفر صاحب 9431497779 جناب مولانا وصی احمد رحمانی صاحب 9430695940 ۔سہرسہ ،مدرسہ امجدیہ میر ٹولہ ، بن گاؤں روڈ، سہرسہ۔ 06478-223526 ۔جناب ڈاکٹر ابوالکلا م صاحب۔06478-223367 جناب محمد انوار عالم صاحب۔ /9135521588 9534462094جناب محمد انصار عالم صاحب 9430632901 ۔ جناب ماسٹرمحمد عبد اللہ غالب صاحب 9430018208 ۔ مسلم طلبہ وطالبات کو رحمانی ۳۰ کی طرف سے فراہم کردہ مواقع کو غنیمت سمجھنا چاہئے، اور زیادہ سے زیادہ تعداد میں ۱۲؍ اپریل کے داخلہ امتحان میں شریک ہونا چاہئے۔ یاد رہے رحمانی ۳۰ وہ ادارہ ہے، جس نے مسلم طلبہ کے لیے اعلیٰ تعلیمی میدان میں کامیابی یقینی بنادی ہے، مسلم طلبہ اب عالمی سطح کے مقابلوں میں کامیابی حاصل کررہے ہیں، ان کے حوصلوں میں اضافہ ہؤا ہے، اور اعلی تعلیمی میدان میں بڑی کامیابی درج کرارہے ہیں۔ خانقاہ رحمانی مونگیر کے سجادہ نشیں مفکراسلام حضرت مولانا محمد ولی صاحب رحمانی نے ۲۰۰۸ء میں رحمانی ۳۰ قائم کیا تھا ، پہلے ہی سال اس کے تربیت کے نتیجہ میں بڑی نمایاں کامیابی مسلمانوں کو ہاتھ لگی تھی، جس کا سنہرا سلسلہ جاری ہے، اب رحمانی ۳۰ کا دائرہ ملک کے ۱۵؍ صوبوں تک پھیل چکا ہے، اور اس کے تحت مسلم طلبہ کو آئی آئی ٹی کے علاوہ میڈیکل ، وکلاء اور سائنٹسٹ بنانے کی مفت کامیاب تعلیم وتربیت دی جارہی ہے۔
 

خاتون نے بیٹے کے ساتھ خودسوزی کی

سیتامڑھی، 23 مارچ (یو این آئی) بہارمیں ضلع سیتامڑھی کے فیبیلا تھانہ علاقے کے سوربھر گاؤں میں آج صبح ایک عورت نے اپنے بیٹے کے ساتھ خودسوزی کرلی۔پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ سوربھر گاؤں کی رنکو دیوی (25) نے اپنے دو سالہ بیٹے ادیتہ کمار کے ساتھ گھر میں مٹی کا تیل چھرک کر آگ لگالی جس سے دونوں کی موقع پر ہی موت ہوگئی۔ خودسوزی کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ عورت کا شوہر راج کمار دہلی میں کام کرتا ہے ۔ پولیس نے شبہ ظاہر کیا ہے کہ گھریلو تنازعہ سے تنگ آکر عورت نے انتہائی قدم اٹھایا ۔ لاشیں پوسٹ مارٹم کے لئے سیتامڑھی صدر اسپتال بھیج دی گئی ہیں۔ پولیس معاملے کی چھان بین کررہی ہے ۔
 

وجہ سے چھپرہ تین بچوں سمیت چار ہلاک
چھپرا، 21 مارچ (یو این آئی) بہار میں ضلع سارن کے دگوارا تھانہ علاقے کے پیرگج گاؤں میں دیر رات ایک گھر میں شدیدلگنے والی آگ کی زد میں آکر ایک ہی خاندان کے تین بچوں سمیت چار افراد ہلاک ہو گئے ۔سارن کے پولیس سپرنٹنڈنٹ ستیہ ویر سنگھ نے آج یہاں بتایا کہ پیرگج گاؤں واقع ایک گھر میں دیر رات اچانک آگ لگ گئی۔ اس واقعہ میں گڑیا (چھ سال)، راجو (سات سال) اور کشن (تین سال) کے علاوہ ان کی ماں کی موقع پر ہی موت ہو گئی۔
کافی مشقت کے بعد مقامی لوگوں کی مدد سے آگ کو بجھایا جا سکا۔
مسٹر سنگھ نے بتایا کہ معاملے کی جانچ کے لیے خصوصی تفتیشی ٹیم کو دارالحکومت پٹنہ سے بلایا گیا ہے۔ سانحات کی وجوہات کا فوری طور پتہ نہیں چل سکا ہے ۔

 

خاتون کلرک کی لاش برآمد
سمستی پور 21 مارچ (یو این آئی) بہار میں سمستی پور ضلع کے مفصل تھانہ علاقے کے سونورشا چوک کے قریب ایک مکان سے پولیس نے آج ضلع کونسل کی ایک خاتون کلرک کی لاش برآمد کی ہے ۔پولیس ذرائع نے یہاں بتایا کہ مقامی لوگوں کی اطلاع پر پولیس نے ضلع کے سونورشا چوک واقع ایک گھر سے ضلع کونسل کی کلرک نیلو سنہا (50 سال) کی لاش برآمد کی ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ خاندانی تنازعہ کی وجہ سے ضلع کونسل ملازم نے زہر کھا کر خود کشی کی ہے ۔ مردہ خاتون ضلع کے کبولی رام گاؤں کی رہنے والی تھی۔ پولیس نے لاش کو اپنے قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کیلئے سمستی پور صدراسپتال بھیج دیا ہے ۔ اس سلسلے متعلقہ تھانہ میں ایک ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے ۔ معاملے کی جانچ کی جا رہی ہے ۔

 

بہار کے نوجوان ریاست کی سب سے بڑی پونجی :نتیش
پٹنہ: بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے نوجوانوں کو ریاست کی سب سے بڑی پونجی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اگر ریاست کے نوجوانوں کی استعداداور توانائی کا صحیح استعمال کیا گیا تو یہ بہار اور ملک کے لئے بڑا کام ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اس کے ساتھ ہی روزگار کے نئے مواقع بڑھانے میں بھی ان سے مدد ملے گی۔مسٹر کمار آج مقامی آدیٹوریم میں بہار کے دوسرے انٹرپرائزز کانفرنس کے افتتاح کے بعد خطاب کر رہے تھے ۔انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ بہار میں نوجوانوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے اور یہی ہماری پونجی ہے ۔نوجوانوں کی آبادی کا زیادہ ہونا ہمیشہ فائدہ مند ہوتا ہے ۔ ہر نوجوان میں اچھی نوکری کی خواہش ہوتی ہے ۔ پہلے سرکاری نوکری ملنے کی ان کے دل میں خواہش ہوتی ہے ۔اگر انہیں وہاں نوکری نہیں ملتی ہے تو وہ ملٹی نیشنل کمپنی میں کام کرنے کو ترجیح دیتے ہیں۔ اس کے بعد ہی وہ کسی دوسری طرح کی نوکری تلاش کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کوئی بھی حکومت اپنے سبھی نوجوانوں کو نوکری نہیں دے سکتی ہے ۔مسٹر کمار نے کہا کہ آج سبھی شعبوں میں روزگار کے کافی مواقع موجود ہیں۔ مواقع کے مطابق اپنی استعداد کو دیکھتے ہوئے نوجوان اپنے لئے نوکری حاصل کر سکتے ہیں۔مواقع کے مطابق نوجوانوں کے اسکل کو ڈولپ کرنا پڑے گا تبھی ہمارے نوجوان ہر شعبے میں نوکری حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کمپنیوں کے مالکان کو چاہئے کہ وہ ان نوجوانوں کی خوابیدہ صلاحیتوں کو جانیں اور ان کے مطابق انہیں ٹریننگ دیں۔انہوں نے زور دیکر کہا کہ نوجوانوں کے اندر پوشیدہ انوویٹیو آئیڈیا کو ابھارنے کے لئے مثبت پہل کی جانی چاہئے ۔

 

بہار اناج کی پیداوار میں خود کفیل بننے کیلئے تیارہے : چودھری
سمستی پور 21 مارچ (یو این آئی) بہار کے آبی وسائل کے وزیر وجے کمار چودھری نے کہا ہے کہ اناج کی پیداوار کے معاملے میں بہار تیزی سے خود کفیل بننے کے جانب گامزن ہے ۔مسٹر چودھری نے آج یہاں سمستی پور ضلع کے سرائے رجن اسمبلی علاقے میں تقریبا 30 لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیرپی سی سی سڑک سمیت مختلف ترقیاتی منصوبوں کے افتتاح کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کا بنیادی مقصد عام لوگوں تک ترقی کا فائدہ پہنچانا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بہار میں زراعت اور صنعتی ترقی کے لئے روڈ میپ کے تحت کام کئے جا رہے ہیں۔آبی وسائل کے وزیر نے سمستی پور سمیت ریاست کی زمین کو ایک پیداواری زمین بتایا اور کہا کہ اناج کی پیداوار کے معاملے میں ریاست تیزی سے خود کفیل بننے کے لیے تیار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی نتیش کمار کی باصلاحیت قیادت میں پوری ریاست میں آپسی ہم آہنگی اور بھائی چارہ قائم ہوا ہے ۔ بعد میں وزیر نے ضلع کے ہر پور ایلوتھ میں افکو کی طرف سے منعقد ایک پروگرام کو بھی خطاب کیا۔

 

مسافر گاڑی حادثہ میں 9 مسافر زخمی

جموئی، 20 مارچ (یو این آئی) بہارمیں جموئی ضلع کے سونو تھانہ علاقے کے جھا جھا وفائی روڈ پر ڈمری گاؤں کے نزدیک آج صبح مسافروں سے بھری ایک گاڑی پلٹ جانے سے 9 افراد زخمی ہوگئے ۔پولیس نے بتایا کہ مسافروں کو جھا جھا سے وفائی لے کر جارہی گاڑی ڈمری گاوں کے نزدیک پلٹ گئی۔ نو زخمیوں میں سے تین کی حالت نازک ہے ۔
انہیں علاج کے لئے جھارکھنڈ کے گریڈیہہ بھیجا گیا ہے جبکہ 6 دیگر کا علاج مقامی اسپتال میں چل رہا ہے ۔ حادثے کے بعد ڈرائیور موقع سے فرار ہوگیا۔ پولیس نے گاڑی کو ضبط کرلیا ہے ۔

 

سی پی آئی ایم کا انتہاپسند باغی پنڈت گرفتار
مونگیر،18مارچ(یو این آ:ی) بہار میں انتہاپسندی سے متاثر مونگیر ضلع کے کھڑگ پور تھانہ علاقے کے گنگٹا گاؤں سے آج علی الصبح پولیس نے ہندوستان کی کمیونسٹ پارٹی (ماؤنواز) کے انتہاپسند ادھک لال پنڈت کو گرفتار کر لیا۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ ورون کمار سنہا نے یہاں بتایا۔ کہ اطلاع ملی تھی کہ ماؤنواز ادھک لال پنڈت اپنے گھر گنگٹا آیا ہوا ہے ۔ اسی بنیاد پر سی آرپی ایف اور مقامی پولیس نے گاؤں کی گھیرا بندی کر کے باغی لیڈر کو گرفتار کر لیا۔مسٹر سنہا نے بتایا کہ ادھک لال پنڈت پر سی آر پی ایف کے ایک جوان کا قتل کرنے سمیت چھ سے زائد معاملے مختلف تھانوں میں درج ہیں اور وہ گذشتہ دس برسوس سے فرار چل رہا تھا۔ ماؤنواز سے پولیس پوچھ گچھ کر رہی ہے ۔

دربھنگہ ٹائمزکا زیر ترتیب شمارے میں ادب کو نئے انداز سے پیش کرنے کی سعی
دربھنگہ (پریس ریلیز) دربھنگہ ٹائمز کا نیا شمارہ بہت جلد قارئین کے ہاتھوں میں ہوگا ،طباعت کا مرحلہ طے ہوتا ہی یہ قارئین کے دسترس میں ہوگا ۔ دربھنگہ ٹائمز کے مدیر ،نوجوان صحافی اور شاعرڈاکٹر منصورخوشتر نے دربھنگہ ٹائمز کے زیر ترتیب شمارے کے بارے میں میڈیا کو جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ اس شمارے میں ادب کو نئے انداز سے پیش کرنے کی سعی کی گئی ہے ۔ مجلس مشاورت نے ہر طرح سے دربھنگہ ٹائمز کو ادبی رسالہ بنانے میں اپنا بھر پور تعاون دیا ہے ۔اس شمارے کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں منٹو پر ایک نئے انداز سے گوشہ ترتیب دیا گیا ہے اور معروف اداکارہ نندتا داس کے تاثرات کو بھی جگہ دی گئی ہے ۔ اس کے علاوہ کئی علمی اور ادبی مضامین قارئین کو متوجہ کریں گے ۔ اس شمارے کی خاص پیشکش یہ ہوگی کہ ہم پہلی بار معروف موسیقاراے آر رحمن اور ہدایت کار امتیاز علی (راک اسٹار والے ، واضح ہو کہ ان کا تعلق بھی دربھنگہ سے ہے) کی ٹیم میں نمایاں ہوکر انڈین سنیما میں اپنی جگہ بنانے والے اور کن فیکون ، نادان پرندے اور انڈیا والے جیسے مقبول و معروف نغموں کے خالق ارشاد کامل جن کو نئی نسل تونے ماری انٹری یار اور دھنکی لاگی جیسے گانوں کے لیے بھی جانتی ہے سے خالص ادبی گفتگو اور فلموں میں ادب کے حوالے سے ان کے تاثرات پڑھنے کو ملیں گے ۔ دربھنگہ ٹائمز کے لیے ان سے یہ خاص بات چیت کی ہے نوجوان افسانہ نگار اور نقاد فیاض احمد وجیہہ نے ۔ ارشاد کامل سے اس بات چیت کو جلد ہی http://darbhangatimes.in/پر بھی آڈیو ویڈیو میں ملاحظہ کر سکیں گے اور یہ جان پائیں شعر و ادب کے بارے میں یہ کیا سوچتے ہیں ۔ اردو زبان کس طرح سے فلموں میں اپنی جگہ برقرار رکھنے میں کامیاب رہی ہے اور کس طرح کوئی فلمی نغمہ خالص شاعری سے الگ ہے اور ایسا بہت کچھ جو عام طور سے ارشاد کامل جیسے لکھنے والے سے نہیں پوچھا جاتا۔

 

بہار اسمبلی الیکشن سے قبل مسلمانوں کے حقوق کیلئے ملّت سرگرم
200لوگوں پر مشتمل ٹیم بہار کے مسلمانوں میں سیاسی شعور پیداکرے گی*مہم میں مولانابدرالدین اجمل اور اسدالدین اویسی کی بھی شرکت متوقع*مسلمانوں کو ووٹ بینک سے باہر نکال کر سیاسی بیداری پیدا کرنا مہم کا ہدف : مفتی اعجاز ارشدقاسمی
نثاراحمدخان
نئی دہلی، 18مارچ (ایس ٹی بیورو)رواں سال کے آخر میں بہار میں ہونے والے اسمبلی انتخابات سے قبل سیاسی سر گرمی میں اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے۔ بہار میں سیاسی جماعتوں کے ذریعہ مسلمانوں کا استحصال کئے جانے کے بعد اب ایک نئی حکمت عملی تیار کرکے مسلمانوں کیلئے ایک متبادل دینے کی کوشش کی جارہی ہے۔ چنانچہ اس ضمن میں 200لوگوں پر مشتمل ایک ٹیم تیار کی گئی ہے، جو بہار کی سیاسی جماعتوں سے مسلمانوں کے مسائل سے متعلق گفت وشنید تیارکرنے کامنصوبہ تیار کیاہے اور اگر ضرورت پڑتی ہے تو پھر یہ ٹیم خود ایک پلیٹ فارم مہیاکراسکتی ہے۔ یہی نہیں مولانا بدر الدین اجمل کی قیادت والی آسام ڈیموکریٹک فرنٹ اور اسدالدین اویسی کی قیادت والی مجلس اتحاد المسلمین کو دعوت دے کر بہار میں اتارا جاسکتاہے۔ ان خیالات کااظہار دہلی وقف بورڈ کے ممبرمفتی اعجاز ارشد قاسمی نے آج نامہ نگاروں سے غیر رسمی بات چیت کے دوران کیا۔ اس موقع پر ڈاکٹر مدحت حسین، انجینئر شکیل فاروقی، خالد صابر قاسمی، مولانا قاسم نوری، ارشاد عالم رضوی، ڈاکٹر شربِ عالم، ڈاکٹرعبدالسلام اور ڈاکٹر مہتاب بھی موجود تھے۔ مفتی اعجاز ارشد قاسمی نے کہاکہ مسلمانوں میں سیاسی بیداری پیداکرنے کیلئے یہ ٹیم کام کرے گی اور گھر گھرجاکر عوام کو بیدار کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ بہار کے مسلمانوں کے پاس کوئی متبادل نہیں ہے اور سیکولر سیاسی جماعتیں صرف ووٹ بینک سمجھتی ہیں، لہٰذا مسلمانوں کی اپنی نمائندگی بہت ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 200لوگوں پر مشتمل یہ ٹیم اس ماہ کے آخر میں بہارجاکر اس مہم کاآغاز کرے گی اور وہاں بھی 113لوگوں کو شامل کیاجائے گا، اس طرح سے مکمل تعداد 313ہوجائے گی۔ 313کی یہ تعداد جنگ بدر کی یاد تازہ کردیتی ہے، جہاں 313مسلمانوں نے ایک ہزار مشرکین کی تعداد کو شکست دی تھی۔ مفتی اعجاز قاسمی نے کہا کہ مسلمانوں کی بہار میں آبادی تقریباً 18فیصد ہے، لیکن ان کے لیڈر لالو یادو ہیں ،نتیش کمار ہیں پاسوان ہیں جبکہ یادو بہار میں محض 11فیصد ہیں 4 فیصد پاسوان اور دوسرے طبقات دو فیصد ہیں اب وقت آگیا ہے کہ مسلمان دوسرے لوگوں کے ساتھ اتحاد کی سیاست کریں نہ کہ سیکولر طاقتیں مسلمانوں کو لاچار سمجھ کر ان کا ووٹ بینک کی طرح استعمال کریں ۔انھوں نے بتایا کہ مجلس اتحاد المسلمین کے اسد الدین اویسی اور مولانا بدرالدین اجمل بہار میں مسلمانوں کی بیداری مہم جائیں گے جبکہ اس مہم کی سرپرستی معروف عالم دین مولانا محمدولی رحمانی کریں گے۔ اس موقع پر ڈاکٹر مدحت حسین نے کہاکہ اب تک مسلمانوں کو صرف ووٹ بینک کے طور پر استعمال کیاگیاہے، لیکن اب وقت آگیا ہے کہ ہم ووٹ بینک کی سیاست سے باہر نکل کر اپنے حقوق کو حاصل کرنے کیلئے جدوجہد کریں۔ انہوں نے اس بات سے بھی انکار کیا کہ مہاراشٹر میں کانگریس اور این سی پی کی شکست مجلس اتحادالمسلمین کی وجہ سے ہوئی، انھوں نے کہا کہ کانگریس اور این سی پی خود اپنے زوال کیلئے ذمہ دار ہیں ۔ڈاکٹر مدحت حسین نے کہاکہ اس مہم کے شروع ہونے پر سیکولر ووٹوں کی تقسیم کی دہائی دی جائے گی، مگر اس سے سیکولرازم کمزور نہیں ہوگا بلکہ اسے تقویت ملے گی۔

 

بس سے کچل کر دو خواتین ہلاک دو دیگر سنگین
سہسرام17مارچ (یو این آئی) بہار میں ضلع روہتاس کے اگریر تھانہ علاقے کے موکر گاؤں کے نزدیک سہسرام۔پٹنہ روڈ ر پر آج صبح بس سے کچل کر دو خواتین ہلاک اور دو دیگر زخمی ہو گئیں۔پولیس کے ذرائع نے یہاں بتایا کہ موکر گاؤں کی کچھ خواتین سہسرام۔پٹنہ روڈ پر سڑک کنارے رفع حاجت کر رہی تھی تبھی چار خواتین پٹنہ سے سہسرام جانے والی ایک پرائیویٹ بس کی زد میں آ گئ...


Advertisment

Advertisment