Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 01:09 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

نئے قوانین سے پارٹ ٹائم گیند بازوں کو ہوگی پریشانی : دراوڑ

 

نئی دہلی،17 جنوری (یو این آئی) ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان راہل دراوڑ نے ون ڈے کرکٹ کے قوانین میں تبدیلی کو پہلے فیلڈنگ کرنے والی ٹیم کے حق میں بتایا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ورلڈ کپ 2015 کے دوران نئے قوانین کی وجہ سے پہلے فیلڈنگ کرنے والی ٹیموں کو زیادہ جارح ہونے کا موقع ملے گا۔حالانکہ اس سے آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ جیسے ممالک کی زمین پر مضبوط اسکور بنانے میں بلے بازوں کو کوئی خاص فرق نہیں پڑے گا لیکن دو نئی گیندوں کی بدولت تیز گیند بازوں کو زیادہ فائدہ ہو سکتا ہے ۔دوسری طرف یہاں کے ممالک میں میدان بہت بڑے ہیں جس وجہ سے باونڈري لگانے میں بھی زیادہ محنت کرنی پڑے گی ۔دراوڑ نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ دونوں ٹیموں کے کپتانوں کے لیے یہ زیادہ بڑا چیلنج ہوگا۔مثال کے طور پر جب آپ کے پانچ فیلڈر رنگ کے اندر ہیں،ایسے وقت میں پارٹ ٹائم گیند بازوں کے لیے بہت پریشانی ہوگی۔ایک کپتان کو ٹیم میں پانچ ماہر گیند بازوں کو کھلانے کا دباؤ بنا رہے گا۔یہ مثبت ہے کیونکہ ایسی صورت میں آپ کو اٹیک کرنے کا زیادہ موقع ملے گا ۔اکتوبر 2012 میں ون ڈے کرکٹ میں کئی اہم تبدیلیاں کی گئی تھیں جن میں پانچ فیلڈروں کو 30 یارڈ کے گھیرے میں پوری اننگز کے دوران کھڑا رہنا اب لازمی کر دیا گیا ہے ۔اس کے علاوہ صرف دو فیلڈر ہی ابتدائی دس اوورز کیلئے گھیرے کے باہر کھڑے کئے جا سکتے ہیں جبکہ محض تین فیلڈرو ں کو ہی پانچ اوورز کے پاورپلے کیلئے گھیرے سے باہر کھڑا کرنے کی اجازت ہے جسے بلے بازی کرنے والی ٹیم 40 اوور کے پہلے لے سکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پانچ ماہر گیند بازوں کو ٹیم میں موقع دینے کے بعد کپتان کے پاس حملے کے زیادہ موقع رہیں گے اور ایسے میں پارٹ ٹائم گیند بازوں کی زیادہ دیر تک بولنگ کرنے کے لیے مجبوری نہیں رہے گی ۔آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے میدانوں کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے دراوڑ نے کرک انفو سے کہا کہ ورلڈ کپ میں یہی میدان ہوں گے جہاں ہم کھیلنے جا رہے ہیں۔ہندستان نے حال ہی میں آسٹریلیا میں ٹیسٹ سیریز کھیلی ہے اور ابھی سہ رخی سریز میں بھی ہندستانی ٹیم یہاں کھیلے گی۔مجھے لگتا ہے کہ ان کی پچ سست ہے اور اسپنر کو یہاں کھیلنا ہوگا۔اب ضرورت ہے تو اپنے کھیل میں توازن کی ۔انہوں نے کہا کہ سست پچ پر گیند بازوں کو زیادہ ہوشیار اور توازن کے ساتھ گیند بازی کرنی ہوگی۔عالمی کپ لمبا ٹورنامنٹ ہے اور موسم گرما کے موسم میں کھیلا جائے گا۔ایسے میں گیند بازوں کو زیادہ ہوشیاری ، مختلف حالات میں اپنے سے مختلف حملے کے طریقہ کو اپنانا ہوگا ۔دراوڑ نے کہا کہ مجھے یہ دیکھنا ہے کہ ٹیم کے کپتان پورے ٹورنامنٹ میں کس طرح پانچ اوورز کے پاورپلے کا استعمال کرتے ہیں۔35۔40 اوورز پھینکے جانے کے وقفے کاکپتان کو انتظار کرنا ہو گا۔ہم نے دیکھا ہے کہ وراٹ کوہلی نے گھریلو سیریز میں اس میں ہلکے تبدیلی کی اور سری لنکا کے خلاف یہ مؤثر بھی رہا ۔انہوں نے کہا کہ یہ دیکھنا ہوگا کہ ٹیم کا کپتان کس طرح پاورپلے کے اپنے پانچ اوورز کو استعمال کرتا ہے ۔یہ کپتانوں کے لیے ایک موقع ہوگا جسے کپتان اپنے ا سمارٹ طریقوں اور تجربے سے فائدہ اٹھا سکیں گے ۔

...


Advertisment

Advertisment