Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:07 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

میری کوم اور سریتا کوارٹرفائنل میں

 

انچیون، 27 ستمبر (یو این آئی) اولمپک تمغہ فاتح اور پانچ بار کی عالمی چمپئن ایم سی میریکوم نے رنگ میں شاندار واپسی کرتے ہوئے انچیون ایشیائی کھیلوں کے آٹھویں دن ہفتہ کو کوریا کی یجی کم کو یک طرفہ انداز میں 3۔0 سے ہرا کر خواتین کی فلائی ویٹ 48 سے 51 کلو گرام مقابلہ کے کوارٹرفائنل میں داخلہ حاصل کر لیا۔ میریکوم کے ساتھ لیشرام سریتا دیوی نے شمالی کوریا کی چگسن ری کو لائٹ ویٹ (57 سے 60 کلوگرام) میں 3۔0 سے ہرا کر آخری آٹھ میں مقام بنا لیا۔ اس طرح ہندستان کی دو خاتون مکہ باز کوارٹرفائنل میں پہنچ گئیں۔ خاتون باکسنگ مقابلے میں تمام ہندوستانیوں کی نظریں میریکوم پر لگی ہوئی تھیں کہ ٹرائل جیت کر ایشیاڈ کے لئے کوالیفائی کرنے والی یہ آئکن مکہ باز اپنی شروعات کیسی کرتی ہے۔ میریکوم نے اپنے مداحوں کو قطعی مایوس نہیں کیا اور زبردست پنچ اور بہترین ڈیفنس سے کوریا ئی مکہ باز کو پست کر دیا۔ میریکوم کو تینوں ججوں نے یک طرفہ فیصلہ سے فاتح قرار دیا۔ چار راؤنڈ کے اس مقابلے میں پہلے جج نے 40۔36، دوسرے جج نے 40۔35 اور تیسرے جج نے 40۔34 پوائنٹس سے میریکوم کے حق میں اپنا فیصلہ لیا۔ سریتا دیوی کی کارکردگی بہترین رہی اور انہوں نے شمالی کوریا کی مکہ باز کو دھو ڈالا۔ مقابلے کے چاروں راؤنڈ سرتا کے حق میں رہے۔ پہلے جج نے 40۔36، دوسرے نے 40۔36 اور تیسرے نے 39۔37 کے اسکور سے سریتا کے حق میں فیصلہ کیا۔ہندستان کو عالمی چمپئن شپ کے نقرئی تمغہ فاتح اور دولت مشترکہ طلائی فاتح امت سے بہت توقع تھی لیکن امت جاپان کے مورشتا پھومتا کا کی حکمت عملی کو سمجھ نہیں سکے اور دو مرتبہ دو انتباہ ملنے کے بعد مقابلہ گنوا بیٹھے۔ جاپانی پہلوان کو پہلا پوائنٹ امت کو انتباہ ملنے کے بعد ملا۔ امت نے اس کے بعد دو پوائنٹس لے کر 2۔1 کی سبقت بنا لی۔ اس وقت ایسا لگ رہا تھا کہ ہندستانی پہلوان فتح حاصل کر لے گا لیکن پھومتا کا نے امت کو پھر الجھایا اور ہندستانی پہلوان کو ایک اور انتباہ مل گیا۔ اس انتباہ کے 30 سیکنڈ کے اندر امت کو پوائنٹس حاصل کرنا تھا لیکن وہ ایسا نہیں کر پائے اور جاپانی پہلوان کو دوسرا پوائنٹس مل گیا۔ مقابلہ 2۔2 سے برابر رہا لیکن آخری پوائنٹس ملنے کے سبب پھومتا کا فاتح اعلان کئے گئے۔ یہی صورت حال پروین رانا کے ساتھ بھی رہی جنہوں نے جیتی ہوئی بازی اپنی غلطی سے گنوا دی۔ ان ایشیائی کھیلوں میں اولمپک تمغہ فاتح سشیل کمار کے ہٹنے کے بعد ٹیم میں شامل کئے گئے پروین جاپان کے تا اپھوم وجما کے خلاف 2۔1 کی سبقت بنا چکے تھے اور فتح کے بالکل قریب تھے۔ آخری منٹ میں وجما کو انتباہ ملا اور انہیں 30 سیکنڈ میں پوائنٹس حاصل کرنا تھا جبکہ ہندستانی پہلوان کو 30 سیکنڈ تک جاپانی پہلوان کو روکنا تھا۔ اگر پروین کامیاب ہو جاتے تو وہ 3۔1 سے یہ مقابلہ جیت سکتے تھے لیکن وجما نے آخری چند سیکنڈ میں پروین کو داؤ پر الجھا ر دو پوائنٹس لے لئے اور مقابلہ 3۔2 سے جیت لیا۔

 

...


Advertisment

Advertisment