Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 09:49 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

تیسرے ٹسٹ کے نتیجہ سے دھونی مطمئن


کیچ چھوڑنا ہمیں بھاری پڑا:اسمتھ
ملبورن، 30 دسمبر (یو این آئی) کپتان مہندر سنگھ دھونی نے آسٹریلیا کے خلاف منگل کو تیسرے ٹیسٹ کے آخری دن ہندستان کے ٹاپ آرڈر کے بلے بازوں کے مایوس کن مظاہرے کے باوجود اس میچ کو ڈرا کرانے پر خوشی ظاہر کی ہے۔دھونی نے تیسرا ٹیسٹ ڈرا کرانے کے بعد کہا کہ میں میچ ڈرا کرانے سے خوش ہوں۔ میچ کا نتیجہ اور خراب ہو سکتا تھا لیکن آخری گھنٹے میں ہم نے حالات کو کسی حد تک سنبھال لیا ۔ دھونی نے روی چندرن اشون کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 32 رنز کی ناٹ آؤٹ ساجھیداری کی اور میچ ختم ہونے تک کریز پر ڈٹے رہے جس سے مشکل ہدف اور ٹاپ آرڈر کے نمٹنے کے باوجود میچ ڈرا رہا۔کپتان نے گیند بازوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ گیند بازوں نے اچھا مظاہرہ کیا۔ خاص طور پر دوسری اننگز میں انہوں نے کنٹرول کے ساتھ گیند بازی کی۔ حالانکہ انہوں نے میچ میں آسٹریلیا کی دوسری اننگز ڈکلئیر کرنے کے وقت کو لے کر ہو رہی تنقید سے کنارہ کیا۔دھونی نے کہا کہ میں آسٹریلیا کی اننگز ڈکلئیر کرنے کے وقت کے بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کر سکتا ہوں کیونکہ جب آپ کا بلے باز 90 پر کھیل رہا ہوتا ہے تو آپ کو کئی بار اس کے لیے انتظار کرنا پڑتا ہے ۔ لیکن انہوں نے سمجھا کہ ٹیم انڈیا نے دوسری اننگز میں اپنے کچھ وکٹ جلدی جلدی گنواکر اپنے سامنے مشکلیں کھڑی کر لی تھیں ۔وکٹ کیپر بلے باز نے کہا کہ ہم مخالف ٹیم کو نہیں کہہ سکتے کیونکہ ہم نے اپنے لیے خود ہی مشکلات بڑھائیں۔ ہمیں ہر ٹیسٹ میں اچھی شراکت داری ملی لیکن ہم نے کئی خراب شاٹس کھیلے۔ اگر آپ اچھا کھیل رہے ہوتے ہیں تو آپ کو اس برتری کو آگے بھی برقرار رکھنا چاہیے۔ میچ کے آخری چار گھنٹوں میں یہ پچ انتہائی سست ہو گئی تھی اور اس پر رنز بنانا مشکل ہو رہا تھا جس سے دباؤ بڑھ گیا ۔دھونی نے کہا کہ میں اجنکیا رہانے اور وراٹ کوہلی کے مظاہرے سے بہت خوش ہوں۔ دونوں ہی کھلاڑیوں نے اچھی شراکت کی۔ دونوں ہی گیند بازوں کے خلاف کافی جارحانہ دکھائی دے رہے تھے۔ انہوں نے یہ یقینی بنایا کہ وہ شراکت کو 100 کے پار لے جائیں ۔کپتان نے ساتھ ہی ایک بار پھر سیریز گنوا چکی ٹیم انڈیا کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ ہماری ٹیم نوجوان ہے اور ہمیں ابھی اس ٹیم کو کچھ وقت دینے کی ضرورت ہے تاکہ کھلاڑی تجربہ حاصل کر کے اچھا مظاہرہ ر سکیں۔ جب یہ کھلاڑی تجربہ حاصل کر لیں گے تو مجھے یقین ہے کہ ہم غیر ملکی زمین پر جیت کی لے حاصل کر لیں گے ۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ان 45 منٹوں کو حاصل کرنے کی ضرورت ہے جہاں ہم لڑکھڑا گئے ہیں اور ہم نے اچھی حالت میں رہنے کے باوجود میچ گنوایا۔ ہماری ٹیم کے تمام کھلاڑی تجربہ کار نہیں ہیں ۔ لیکن گزشتہ چھ ماہ میں ہمارے کھلاڑی اور بہتر ہوئے ہیں۔ یہ وقت کی بات ہے انہیں کچھ وقت دیا جائے گا تبھی وہ نتائج دے پائیں گے ۔دھونی نے ساتھ ہی کہا کہ ٹیم انڈیا میں ایک اچھا آل راؤنڈر نہیں ہے لیکن اس کے باوجود کھلاڑیوں نے اچھی گیند بازی کی۔ ان کا کھیل تسلی بخش رہا اور مخالف ٹیم کے بلے بازوں پر بھی دباؤ بنانے میں کامیابی ملی۔ ہندستان چار ٹسٹ میچوں کی سریز میں 0۔2 سے پچھڑ ر گواسکر بارڈر ٹرافی گنوا چکا ہے۔دوسری جانب آسٹریلیا کے کپتان ا سٹیون اسمتھ نے ہندستان کے ساتھ تیسرا ٹیسٹ میچ ڈرا ہونے کے بعد کہا کہ میچ میں کچھ کیچ چھوڑنا بھاری پڑ گیا ورنہ ان کی ٹیم 3۔0 سے آگے ہوتی ۔اسمتھ نے منگل کو کہا کہ یہاں کی سپاٹ وکٹ پر پانچ دن کھیلنا مشکل رہا اور ساتھ میں کچھ کیچ چھوڑنا ہمیں بھاری پڑ گیا ۔ہندستانی ٹیم نے بھی اچھا کھیلا لیکن سیریز ہمارے پاس ہی آئی ۔ انہوں نے کہا کہ ہندستان ت کا بلے بازی آرڈر مضبوط ہے اس لئے ہم ان کی یہی طاقت چھیننا چاہتے تھے ۔ دوسری اننگز میں شان مارش کی سنچری سے زیادہ اہم ہمارے لئے سریز بچانا تھا اب ہمارا مقصد سڈنی میں آخری ٹیسٹ جیت کر سیریز کو 3۔0 سے اپنے نام کرنا ہے ۔مین آف دی میچ ریان ہیرس کی تعریف کرتے ہوئے اسمتھ نے کہا کہ انہوں نے گیند کے ساتھ بلے سے بھی شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی اننگز میں ٹیم کو مضبوط اسکور تک پہنچانے میں مدد کی ۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment