Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 02:24 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

مقابلہ تو دل ناتواں نے خوب کیا

 

وراٹ کی دلیرانہ اننگز پر بھاری پڑے ناتھن لیون

میزبان آسٹریلیا نے پہلے ٹیسٹ میچ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 48 رن سے جیت حاصل کی

ایڈیلیڈ، 13 دسمبر (یو این آئی) ناتھن لیون (152 رن پر سات وکٹ) کی خطرناک گیند بازی کے سامنے ہندستان کے کارگزار کپتان وراٹ کوہلی کی دلیرانہ 141 رنوں کی اننگ پھیکی پڑ گئی اور میزبان آسٹریلیا نے پہلا ٹسٹ 48 رن سے اپنے نام کرلیا۔آسٹریلیا نے میچ کے پانچویں اور آخری دن آج اپنی اننگ کل کے 69 اوور میں پانچ وکٹ اور 290 رن پر ختم کرنے کا اعلان کیا۔ اس کے بعد دوسری اننگ کھیلنے اتری ہندستانی ٹیم 364 رنوں کے ہدف کے سامنے 1ء87 اوور میں 315 رن بناکر آؤٹ ہوگئی اور ساتھ ہی میچ بھی گنوادیا۔حالانکہ آسٹریلیا کی شاندار کارکردگی اور سبقت کے باوجود ہندستانی بلے باز وں نے ہمت کا مظاہرہ کیا اور وراٹ نے مسلسل دوسری اننگ میں سنچری لگائی جبکہ اوپنر مرلی وجے نے کپتان کا اچھا ساتھ دیکر 99 رنوں کی مثالی اننگ کھیل کر اسکور 300 کے پار پہنچایا لیکن بالاخر آسٹریلیائی اسپنر لیون ہندستان کے ہاتھ سے میچ چھیننے میں کامیاب رہے۔لیون نے ہندستان کی دوسری اننگز میں 1ء34 اوور میں 152 رن دیکر سات وکٹ لئے اور میچ میں شروع سے لیکر آخر تک بلے بازوں کو پریشان کیا اور تقریباً ہندستان کی پوری ٹیم کو آؤٹ کردیا۔ لیون نے مرلی، چتیشورپجارا، واراٹ کوہلی ، اجنکیا راہانے ، روہت شرما ، ردھن مان ساہا اور ایشانت شرما کو آؤٹ کیا۔ایک طرف سے ہندستانی بلے باز وں کے گرتے ہوئے وکٹ کے بیچ وراٹ کوہلی اور مرلی نے بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے تیسرے وکٹ کیلئے 185 رنوں کی شاندار شراکت نبھائی۔ وراٹ نے میچ میں مسلسل دوسری سنچری لگاتے ہوئے 175 گیندوں پر 16 چوکے او ر ایک چھکا لگایا۔ اس کے علاوہ مرلی نے 234 گیندوں پر 10 چوکے اور دو چھکے لگائے۔
ایک وقت میچ پر اپنی گرفت مضبوط کرچکی ہندستانی ٹیم نے آخری سیشن میں شرمناک کارکردگی پیش کی اور بلے بازی کا نچلا آرڈر تاش کے پتوں کی طرح بکھر گیا۔ ہندستان کی آسٹریلیا کے ہاتھوں ٹسٹ میں یہ مسلسل 12 شکست ہے۔میچ کے آخری دن ٹیم کے بیشتر بلے باز دباؤ میں نظر آئے اور سات بلے باز دہائی کے ہند سے کو بھی نہیں چھوسکے۔ اس سے قبل ہندستان نے صبح کے سیشن میں شکھر دھون (9) اور پھر چتیشور پجارا (21) کا وکٹ کھودیا۔ لیکن تب بھی ہندستان کی حالت مستحکم تھی کیونکہ مرلی اور وراٹ میدان پر تھے اور دونوں چائے تک اسکور کو دو وکٹ پر 205 تک لے گئے۔ ہندستان کے پاس ابھی آٹھ وکٹ تھے اور اسے میچ کے باقی کھیل میں 159 رنوں کی ضرورت تھی۔ایک وقت آسٹریلیا کے ہاتھوں سے میچ نکلتا نظر آرہا تھا لیکن پھر لیون نے مرلی کو سنچری سے ٹھیک ایک رن پہلے ایل بی ڈبلیو آؤٹ کردیا۔ مرلی ہندستان کے 242 کے اسکور پر تیسرے وکٹ کی شکل میں آؤٹ ہوئے۔ حالانکہ وکٹ کے دوسرے اینڈ پر ڈٹے وراٹ کوہلی کو دیگر بلے بازوں کا ساتھ نہیں ملا اور اس اسکور پر اجنکیا راہانے چوتھا شکار بن گئے۔رہانے کھاتہ بھی نہیں کھول سکے تھے کہ لیون نے کرس روجرس کے ہاتھوں انہیں کیچ کرادیا۔ ہندستان کو پانچواں جھٹکا روہت شرما کی شکل میں لگا جو صرف 6 رن بناکر لیون کی ہی گیند پر ڈیوڈ وارنر کو کیچ دے بیٹھے۔ہندستان کے لئے خطرہ بنے لیون نے دہلی میں کھیلے گئے چوتھے ٹسٹ سمیت 13۔2012 میں آسٹریلیا کی طرف سے لیے گئے آخری 34 ہندستانی وکٹوں میں سے تنہا 21 وکٹ اپنے نام کئے ہیں۔روہت کا وکٹ گرنے کے بعد ہندستان اپنے اسکور میں مزید 22 رن ہی جوڑ سکا تھا کہ ردھی مانا ساہا 299 کے اسکور پر ہندستان کے چھٹے وکٹ کے طور پرآؤٹ ہوئے۔ساہا کا وکٹ بھی اسپنر لیون نے اپنے نام کیا۔ لیون نے ساہا کو 13 کے اسکور پر بولڈ کیا۔ ہندستانی بلے باز نے 10 گیندوں پر ایک چوکا اور ایک چھکا لگایا۔ ہندستان کیلئے سب سے مہنگا وکٹ واراٹ کا رہا جو کافی حد تک میچ کو جیت کے قریب لے گئے۔ وراٹ 81 ویں اوور میں لیون کی گیند پر مشیل مارش کو کیچ دے بیٹھے۔وراٹ نے میچ کی دوسری اننگز میں ایک بار پھر سنچری لگائی۔ پہلی اننگ میں وراٹ نے 115 رن بنائے تھے جبکہ دوسری اننگ میں انہوں نے 141 رن بنائے۔ اسی اننگ کی بدولت وراٹ ٹسٹ میچ کی چوتھی اننگ میں سب سے زیادہ رن بنانے والے تیسرے بلے باز بن گئے ہیں۔آسٹریلیائی گیند باز لیون نے وراٹ کا اہم وکٹ لینے کے بعد ہندستانی بلے بازی کی تقریباً کمر توڑ دی اور اس کے بعد نچلے آرڈر کے بلے بازوں نے جلدوجہد بھی نہیں کی۔ وراٹ کے بعد محمد سمیع (5) رن جوڑ کر ریاس ہیرس کی گیند پر تیز گیندباز مشیل جانسن کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔ ہندستان کے آخری تین وکٹ 10 رنوں کے فرق پر گرے۔ ہندستان نے 309 کے اسکور پر اپنا آٹھواں وکٹ سمیع کی شکل میں کھویا اور اس وقت تک آسٹریلیا کی فتح تقریباً طے ہوگئی تھی۔ اس کے بعد ورون آرونا نویں بلے باز کی شکل میں ایک رن بناکر ٹیم کے 314 کے اسکور پر ایل بی ڈبلیو ہوئے جبکہ 315 کے اسکور پر ایشانت کا آخری وکٹ گرا۔ لیگ سائڈ سے ہیڈن نے ایشانت کو اسٹمپ آؤٹ کیا جس کے بعد پوری آسٹریلیائی ٹیم خوشی سے جھوم اٹھی اور سب ہی نے ایک دوسرے کو گلے لگاکر مبارک باد دی۔ دوسری اننگ میں سات وکٹ لے کر آسٹریلیا کی جیت میں اہم رول ادا کرنے والے لیونا کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ اس جیت کے ساتھ میزبان ٹیم نے چار ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں 0۔1 کی سبقت حاصل کرلی ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment