Today: Tuesday, November, 20, 2018 Last Update: 08:42 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

رنجی میچ میں سہواگ اور گمبھیر پر پھر رہیں گی نگاہیں

 

نئی دہلی، 06 دسمبر (یو این آئی) عالمی کپ کے ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل نہیں کئے گئے وریندر سہواگ اور گوتم گمبھیر اپنی ٹیم دہلی کے اتوار سے سابق رنراپ سوراشٹر کے خلاف یہاں ہونے والے رنجی ٹرافی میچ میں ایک بار پھر سب کی نگاہوں کا مرکز ہوں گے۔سہواگ اور گمبھیر کی ون ڈے وجے ہزارے ٹرافی میں مایوس کن مظاہرہ رہا تھا جس کے بعد ان دونوں کھلاڑیوں نے خود کو دیودھر ٹرافی ون ڈے ٹورنامنٹ سے ہٹا لیا تھا۔ گھریلو ون ڈے کرکٹ کے بعد اب فرسٹ کلاس کے چار روزہ رنجی ٹرافی مقابلے شروع ہونے جا رہے ہیں۔دہلی کو اپنا پہلا مقابلہ گروپ بی میں سوراشٹر کے ساتھ ھیلنا ہے۔ دہلی کی ٹیم گزشتہ رنجی سیزن میں گروپ اے میں پانچویں نمبر پر رہی تھی اور نا آؤٹ دور میں والیفائی نہیں کر پائی تھی۔ دہلی نے آٹھ میچوں میں سے صرف دو میچ جیتے تھے۔ دہلی کا گھریلو ون ڈے میچوں میں کافی خراب بلے بازی مظاہرہ رہا تھا۔ یہ دیکھنا دلچسپ رہے گا کہ ٹیم مینجمنٹ پرانے کھلاڑیوں کو ہی موقع فراہم کرتا ہے یا نئے کھلاڑیوں کو بھی آزماتا ہے۔ دہلی کی ٹیم میں انڈر 19 ٹیم کے کپتان اور باصلاحیت بلے باز ہمت سنگھ کو بھی شامل کیا گیا ہے جنہوں نے انڈر 19 سطح پر اس سیزن میں کافی متاثر کن مظاہرہ کیا۔میزبان ٹیم کو سوراشٹر کے خلاف ایک بار پھر سہواگ اور گمبھیر سے امیدیں رہیں گی کہ یہ دونوں بلے باز اپنی فارم میں لوٹ کر ٹیم کی نیا پار لگائیں۔ گزشتہ سیزن میں سہواگ نے خود کو مڈل آرڈر میں اتارا تھا اور تیسرے چوتھے اور پانچویں نمبر تک بلے بازی کی تھی۔ لیکن وہ سات اننگز میں صرف 234 رنز بنا پائے تھے۔ گمبھیر کپتانی کی ذمہ داری کے تلے کافی دبے نظر آئے تھے اور ان کا ٹکڑوں ٹکڑوں میں اچھا مظاہرہ رہا تھا۔ موجودہ ون ڈے میچوں میں بھی گمبھیر ٹیم کی حوصلہ افزائی نہیں کر پائے تھے۔ یہ دونوں بلے باز ایسے ہیں جو اگر چل نکلے تو وہ ٹیم کو کافی آگے تک لے جا سکتے ہیں ۔عالمی کپ کے ممکنہ کھلاڑیوں میں جگہ نہ مل پانے کے بعد یقینی طور پر یہ دونوں بلے باز خود کو ثابت کرنا چاہیں گے۔گزشتہ سیزن کے بعد کوچ کے عہدے سے ہٹنے کے لئے مجبور ہونے والے وجے د یا ایک بار پھر چیف کوچ کے عہدے پر واپس آئے ہیں۔ د یا کی رہنمائی میں دہلی نے آخری بار 2010 میں نا آؤٹ دور میں جگہ بنائی تھی تب دہلی کی ٹیم سیمی فائنل میں ممبئی سے ہاری تھی۔دہلی کو سہواگ اور گمبھیر جیسے سینئر کھلاڑیوں کے علاوہ پرانے بلے باز و تیز گیند باز آشیش نہرا اور انڈر 19 ورلڈ کپ فاتح ٹیم کے کپتان رہ چکے انم ت چند سے بھی امیدیں رہیں گی۔ انم ت کے کھیل میں تسلسل کا فقدان رہا ہے اور وہ گزشتہ سیزن میں چھ میچوں کی 11 اننگز میں 2680 کے اوسط سے 268 رن بنا پائے تھے جس میں ایک سنچری شامل تھی۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment