Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 12:22 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ایڈیلیڈ ٹسٹ کیلئے کھلاڑیوں پر دباؤ نہیں

 

ہندوستان کے ساتھ سیریز کیلئے تیار کیا گیا نیا پروگرام تسلی بخش نہیں،میں سمجھ سکتا ہوں اپنے دوست کی آخری رسومات کے بعدکھلاڑیوں کا میدان پر کھیلنا آسان نہیں ہوگا:جیمس سدرلینڈ

سڈنی، 02 دسمبر (یو این آئی) کرکٹ آسٹریلیا (سی اے) کے چیف ایگزیکٹو جیمس سدرلینڈنے کہا ہے کہ ساتھی کھلاڑی فلپ یوز کی موت کے بعد گہرے صدمے سے دو چار ٹیم کے کھلاڑیوں پر ہندوستان کے خلاف اگلے ہفتے سے شروع ہو نے والی سیریز میں لازماً اترنے کا کوئی دباؤ نہیں ہے۔میچ کے دوران ایک حادثے کی وجہ سے زندگی گنوا نے والے آسٹریلیائی بلے بازفلپ ہیوز کی آخری رسوم ادا کرنے کیلئے ان کے آبائی گھر میکسویلے روانہ ہونے سے قبل سدرلینڈ نے ہوائی اڈے پر صحافیوں سے بات چیت میں تسلیم کیا کہ ہندوستان کے ساتھ سیریز کیلئے تیار کیا گیا نیا پروگرام تسلی بخش نہیں ہے۔سدرلینڈ نے کہا کہ میں کھلاڑیوں کی ذہنی حالت کو سمجھ سکتا ہوں کہ ان کے لیے اپنے دوست کے آخری رسومات کے بعد میدان پر کھیلنا آسان نہیں ہوگا۔ میں نے تمام کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی ہے لیکن ہمیں ان کے جذبات کو سمجھنا ہوگا۔ ان پر کوئی دباؤ نہیں ہے یہ ان کا ذاتی فیصلہ ہوگا ۔سی اے افسر نے کہا کہ ہیوز کی بدھ کے روز آخری رسومات ادا ہونی ہے۔ اس لئے یہ کھلاڑیوں پر منحصر ہوگا کہ وہ کھیلنا چاہتے ہیں یا ابھی وہ بہتر محسوس نہیں کررہے ہیں ۔ ہم اس بات کو مکمل طور پر سمجھتے ہیں اور ہر کھلاڑی کے ذاتی فیصلے کا احترام کریں گے ۔ہندوستان اور آسٹریلیا کے مابین پہلا ٹیسٹ موخر ہونے کے بعد نیا پروگرام کا پیر کے روز اعلان کیا گیا جس کی بنیاد پر اب ایڈیلیڈ میں نو دسمبر کو پہلا ٹسٹ کھیلا جائے گا۔سدرلینڈ نے کہا کہ وہ ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے اس موجودہ صورتحال کو سمجھا ہے اور تسلیم کیا کہ کھلاڑیوں سے بھی پہلے ہیوز کا خاندان سبھی کیلئے اولین ترجیح ہے۔سدرلینڈ نے ساتھ ہی ہیوز کے خاندان کیلئے دنیا بھر سے آنے والے پیغامات پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہم تمام میکسویلے جا رہے ہیں جہاں پر ہیوز کی آخری تقریب ہونے والی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ برسبین ٹسٹ منسوخ کرنے کے بارے میں غور کیا گیا تھا جس سے کرکٹ آسٹریلیا کو تقریباً دو کروڑ ڈالر کا نقصان اٹھانا پڑتا لیکن اسے اب ایڈیلیڈ اور میلبورن کے درمیان میں 17 سے 21 دسمبر تک کھیلا جائے گا ۔سی اے کے ایگزیکٹو افسر نے کہا کہ حقیقتاًان ٹسٹ میچوں کے درمیان کھلاڑیوں کو بہت مختصر وقت ملے گا ۔لیکن یہ بھی حقیقت ہے کہ آخر کار ہم کسی نتیجے پر پہنچ پائے ہیں۔ یہی سب سے زیادہ مناسب متبادل ہمارے پاس تھا۔ مجھے یقین ہے کہ سب اس صورتحال کو سمجھیں گے کیونکہ یہ ایسی المناک اور غیر معمولی صورت حال ہے جو اچانک ہی سامنے آ جاتی ہے ۔آسٹریلیائی کرکٹ ایسوسی ایشن (اے سی اے) کے چیف ایگزیکٹو ایلسٹر ن ولسن نے سیریز کے نئے پروگرام کو طے کرنے کے لیے میٹنگ میں کھلاڑیوں کی نمائندگی کی اور انہوں نے اسے مکمل طور پر تسلی بخش قرار دیا ہے۔ ن ولسن نے کہا کہ میرا خیال ہے کہ یہ بہت اہم ہے کہ ہم یوز کے کنبے کو ان کے بیٹے کو الوداع کہنے کا موقع دیں۔ اس کے علاوہ کھلاڑیوں کے پاس سیریز کی تیاری کے لیے بھی وقت ہونا ضروری ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے خلاف آسٹریلیائی کھلاڑیوں کو پانچ دن تک چیلنج سے بھرا کرکٹ کھیلنا ہوگا۔ اس لئے ضروری ہے کہ ان کے پاس اپنی تیاری کو مضبوط کرنے کا کچھ وقت ضرور ہو۔ ہندوستان کے خلاف چار ٹیسٹ اور پھر ورلڈ کپ جیسی تیاریوں کیلئے ٹیم کے پاس زیادہ وقت ہونا چاہیے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment