Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 10:43 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

وقار یونس کا شین ایبٹ کو نفسیاتی کاؤنسلنگ کا مشورہ

 

لاہور،28 نومبر (یواین آئی)پاکستانی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ اور سابق فاسٹ بولر وقار یونس نے کہا ہے کہ آسٹریلوی بلے باز فلپ ہیوز کو ہلاکت خیز گیند کرنے والے بولر شین ایبٹ کو نفسیاتی مدد کی ضرورت ہے تاکہ یہ نوجوان کھلاڑی کرکٹ سے وابستہ رہے۔فلپ ہیوز کی ناگہانی ہلاکت کے بعد وقار یونس کی طرح دنیائے کرکٹ کے متعدد سابق کھلاڑیوں نے ایسے خدشات کا اظہار کیا ہے کہ شاید بائیس سالہ آسٹریلوی بولر شین ایبٹ کرکٹ کو خیر باد کہہ دیں گے۔ اس تناظر میں وقار یونس نے کہا کہ یہ ایک سوال ہے کہ آیا شین ایبٹ کرکٹ کھیلنا جاری رکھیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایبٹ کو نفسیاتی مدد کی ضرورت ہے اور مجھے یقین ہے کہ یہ عمل شروع کر دیا گیا ہو گا۔ وقار کے بقول اس مخصوص وقت میں شین ایبٹ کو پرسکون رہنے کی ضرورت ہے۔منگل کے دن سڈنی کرکٹ گراؤنڈ میں آسٹریلوی ڈومیسٹک کرکٹ کے ایک میچ کے دوران شین ایبٹ کا ایک باؤنسر اس وقت فلپ ہیوز کے سر پر لگا تھا، جب وہ اس تیز ڈیلیوری کو ہْک کرنے کی کوشش میں تھے۔
اس چوٹ کے بعد وہ بے ہوش ہو کر گر گئے۔ انہیں فوری طور پر اسپتال منتقل کر دیا گیا لیکن دو دن بعد جمعرات 27 نومبر کو وہ اس زخم کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہو گئے۔اس دہلا دینے والے واقعے کے بعد جہاں دنیائے کرکٹ ایک غم کی کیفیت میں ہے، وہیں یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ اس ہلاکت میں شین ایبٹ کا کوئی قصور نہیں ہے اور انہیں اس وقت مدد کی ضرورت ہے۔ سابق انگلش فاسٹ بولر ڈیوڈ لارنس نے تو اس تناظر میں یہ بھی کہہ دیا ہے کہ اس سانحے کے بعد ایبٹ اپنا کیریئر جاری نہیں رکھ سکیں گے۔ سن 1980میں ویسٹ انڈیز کے بلے باز فل سیمینز کو باؤنسر پر شدید زخمی کرنے والے لارنس نے کہا کہ میں سمجھ سکتا ہوں کہ شین ایبٹ اس وقت کیا سوچ رہے ہوں گے۔ میرا خیال نہیں کہ وہ دوبارہ کرکٹ کھیل سکیں گے۔

یاد رہے کہ لارنس کی گیند پر شدید زخمی ہونے والے سیمینز تندرست ہو گئے تھے، جس کے بعد انہوں نے لارنس سے کہا تھا کہ اس حادثے میں ان کا کوئی قصور نہیں تھا۔ لیکن ایبٹ کے معاملے میں ایسا نہیں کیونکہ ہیوز یہ کہنے کے لیے زندہ نہیں ہیں۔ کرکٹ آسٹریلیا کے مطابق شین ایبٹ انتہائی صدمے کی حالت میں ہیں اور انہیں نفسیاتی مدد فراہم کی جا رہی ہے تاکہ وہ جلد ہی اس کیفیت سے باہر آ جائیں۔ایک اور انگلش فاسٹ بولر پیٹر لیور نے بھی شین ایبٹ سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں اپنے حواس مجتمع رکھتے ہوئے پرسکون رہنا چاہیے۔ پیٹر لیور نے 1975ء میں کرائسٹ چرچ میں کھیلے گئے ایک ٹیسٹ میچ کے دوران نیوزی لینڈ کے کھلاڑی ایوان چیٹفیلڈ کو باؤنسر مار کر شدید زخمی کر دیا تھا۔ چیٹفیلڈ کو اس انجری سے مکمل طور پر صحت مند ہونے کے لیے کئی ماہ کا وقت لگا تھا۔ اپنے تجربات کی بنیاد پر پیٹر نے کہا کہ یہ صورتحال بہت مشکل ہوتی ہے۔ مجھے یقین ہے کہ شین ایبٹ آئندہ کچھ ہفتوں تک سو نہیں سکے گا۔کرکٹ کے متعدد کھلاڑیوں کی طرح عالمی سیاستدانوں اور ٹٰینس کے معروف کھلاڑیوں رفیل نڈال اور اینڈی مرے نے بھی ہیوز کی ہلاکت پر شدید افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس مخصوص وقت میں شین ایبٹ کے ساتھ ہمدردی ظاہر کی ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment