Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:17 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ہند ،آسٹریلیا پہلا ٹیسٹ میچ غیر یقینی صورتحال سے دو چار

 

بی سی سی آئی کو آسٹریلیا کے فیصلے کا انتظار

سڈنی، 28 نومبر (یو این آئی) عام طور پر کسی میچ سے پہلے حکمت عملی پر بحث کرنے کے لئے اکٹھا ہونے والی آسٹریلوی کرکٹ ٹیم اپنے ساتھی کھلاڑی فلپ یوز کو کھو دینے کے بعد اس قدرصدمے میں آ گئی ہے کہ جمعرات سے ہندستان کے خلاف شروع ہونے والے پہلے کرکٹ ٹیسٹ کا انعقاد غیر یقینی صورتحال سے دو چار ہو گیا ہے۔دونوں ممالک کے درمیان پہلا ٹیسٹ برسبین کے گابا میدان پر کھیلا جانا ہے لیکن کرکٹ آسٹریلیا(سی اے ) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر جیمز سدرلینڈ کا کہنا ہے کہ یہ ٹیسٹ اب سینکڑوں میل دور دکھائی دیتا ہے کیونکہ کھلاڑی اپنے دوست اور ٹیم کے ساتھی یوز کی باؤنسر سے ہوئی موت کو لے کر گہرے صدمے میں ہے۔آسٹریلوی ٹیم کے کھلاڑی جمعہ کو سڈنی کرکٹ گراؤنڈ میں ٹیم کے نفسیاتی معالج مائیکل لائیڈ اور سڈنی میدان پر یوز کا علاج کرنے والے ڈاکٹر جان اور ارڈ اور ٹیم ڈاکٹر پیٹر بر نر سے ملے جنہوں نے کھلاڑیوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ روزانہ اپنی زندگی جس طرح گزرتے ہیں اسی طرح آگے بڑھیں اور اس واقعہ کے بارے میں بہت زیادہ نہ سوچیں۔اس دوران کچھ دیر تک ٹیم کے تمام کھلاڑی ایک کمرے میں بیٹھے رہے اور کچھ کھلاڑی اس دوران زار قطار رو دئیے تو کچھ ایک دوسرے کو ڈھارس بندھاتے رہے۔ آسٹریلوی کھلاڑیوں کو اس صورت حال سے باہر نکلنے کے لیے اؤنسلنگ دی جا رہی ہے۔مانا جا رہا ہے کہ اس دردنا حادثے کے بعد آسٹریلوی ٹیم ذہنی طور پر پہلا ٹیسٹ کھیلنے کے لیے تیار نہیں دکھائی دے رہی ے سابق ہندستانی کپتان سنیل گواسکر نے بھی مشورہ دیا ہے کہ پہلا ٹیسٹ فی الحال منسوخ کر دیا جانا چاہیے۔سدرلینڈ نے کہا کہ اگر میں ایمانداری سے کہوں تو کھلاڑی ابھی کچھ بھی نہیں سوچ پا رہے ہیں۔ میں جانتا ہوں کہ بہت سے لوگوں کے لیے سات دن زیادہ دور نہیں ہوں گے لیکن آپ اگر دوسرے نظریہ سے دیکھیں تو اگلا جمعرات سینکڑوں میل دور دکھائی دیتا ہے۔ جب ہم صحیح دماغی حالت میں ہوں گے تو ہم یقینی ہی پہلا ٹیسٹ کھیل سکیں گے ۔اس درمیان کرکٹ آسٹریلیا کے ایگزیکٹو جنرل منیجر پیٹ ووارڈ نے کہا کہ اس وقت سارا دھیان کھلاڑیوں کو ان کی زندگی میں آگے بڑھانے پر لگا ہوا ہے اور پہلے ٹیسٹ کو لے کر کوئی بات نہیں ہو رہی ہے۔ ووارڈ نے کہا کہ ہم نے پوری ٹیم کو یہاں اکٹھا کیا ہے۔ آج ہم سوگوار ہیں اور اپنے سوالات کا جواب ڈھونڈ رہے ہیں۔ ووارڈ نے ساتھ ہی کہا کہ ہمیں یہ یقینی بنانے کی ضرورت ہے کہ کھلاڑی اپنی مثبت سوچ میں واپس آئیں تاکہ وہ اپنے فیصلے کر سکیں۔ لیکن فی الحال ایسا کچھ کرنا مشکل دکھائی دے رہا ہے۔ یوز خاندان کو مدد کرنے کے لئے ہم سے جو کچھ ہوگا وہ ہم کریں گے۔ ہماری مکمل توجہ اس وقت کرکٹ کے بجائے یوز خاندان کو سنبھالنے اور کھلاڑیوں کو صدمے سے باہر نکالنے پر لگی ہوئی ہے ۔اس وقت یہ سوچ پانا بھی بہت مشکل ہے کہ کھلاڑی یوز کی موت کے ایک ہفتے بعد ٹیسٹ میچ کھیلنے کے لیے میدان پر کیسے اتر سکیں گے۔ سدرلینڈ نے یوز کے والد گریگ سے جمعہ کو بات بھی کی۔ انہوں نے کہا کہ یوز کرکٹ کو اتنا پیار کرتے تھے کہ وہ ہمیشہ چاہتے تھے کہ کھیل چلتا رہے۔ لیکن کھیل تب ہی آگے بڑھ سکے گا جب ہم اس کے لیے ذہنی طور پر تیار ہوں گے ۔ہندستان کا کرکٹ آسٹریلیا الیون کے ساتھ جمعہ اور ہفتہ کو ہونے والا دو روزہ پریکٹس میچ یوز کی موت کی خبر کے بعد ہی منسوخ کر دیا گیا تھا۔ سدرلینڈ نے کہا کہ ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ(بی سی سی آئی) نے اس دردنا حادثے کے بعد انہیں کافی تعاون دیا ہے۔ بی سی سی آئی کی پوزیشن کو بہت اچھی طرح سمجھتا ہے اور وہ سی اے کو ہر ممکن مدد دے رہا ہے۔

دوسری جانب بلے باز فلپ یوز کی سر پر باؤنسر لگنے سے ہوئی موت کے بعد ہندستان اور آسٹریلیا کے درمیان اگلے جمعہ سے شروع ہونے والے پہلے ٹیسٹ کو لے کر جہاں شک پیدا ہو گیا ہے وہیں ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ( بی سی سی آئی) کو اس ٹیسٹ کے لیے کرکٹ آسٹریلیا (سی اے ) کے فیصلے کا انتظار ہے۔بی سی سی آئی کے سیکرٹری سنجے پٹیل نے کہا کہ میں سی اے کے اپنے ہم منصب حکام کے مسلسل رابطے میں ہوں۔ ہم چاہتے ہیں کہ وہ پہلے اس دردنا حادثے سے باہر نکل آئیں اور اس کے بعد جا کر پہلے ٹیسٹ کے انعقاد کے بارے میں کوئی فیصلہ کریں۔سابق کپتان سنیل گواسکر نے یوز کی موت کے بعد کہا ہے کہ پہلا ٹیسٹ منسوخ کر دیا جانا چاہیے جبکہ سی اے کے چیف ایگزیکٹو آفیسر جیمز سدرلینڈ کا کہنا ہے کہ ابھی پہلے ٹیسٹ کے بارے میں کچھ بھی سوچا نہیں جا رہا ہے اور سب کا دھیان کھلاڑیوں کو اس حادثے کے صدمے سے باہر نکالنے پر لگا ہوا ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment