Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:00 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

آسٹریلیا میں بلے بازوں پر ہوگا دارومدار: دراوڑ

 

ممبئی، 22 نومبر (یو این آئی) سابق ہندوستانی کپتان راہل دراوڑ نے کہا ہے کہ اگر ٹیم انڈیا کو آسٹریلیا میں جیت درج کرنی ہے تو اس کے بلے بازوں کو اسکے لیے اضافی ذمہ داری ادا کرنی ہوگی۔آسٹریلیا کے دورہ پر جانے والی ہندستانی کرکٹ ٹیم کو غیر ملکی زمین پر فتح کے لیے اہم مشورہ دیتے ہوئے دراوڑ نے کہا کہ ہندستان کیلئے انگلینڈ کے بجائے آسٹریلیا میں کھیلنا بالکل الگ ہوگا اور وہاں پر جیت کے لیے ٹیم کے بلے بازوں کا اہم کردارہوگا ۔دراوڑ نے آسٹریلیا کو بہترین اور چیلنجنگ حریف بتاتے ہوئے کہا کہ میرا خیال ہے کہ آسٹریلیا ایک بہترین اور بہت چیلنجنگ ٹیم ہوگی۔ آسٹریلیا میں کرکٹ کھیلنا اچھا تجربہ ہوتا ہے۔ خاص طور پر اس موسم میں وہاں کی وکٹ الگ ہوتی ہے اور ٹیسٹ میچ دیکھنے کے لیے بھی شائقین حوصلہ افزا ہوتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ آسٹریلیا کی پچیں بہت اچھال بھری ہوتی ہیں اور ہندستان کیلیے ان پچوں پر کھیلنا بڑا چیلنج ہوگا۔ لیکن ان کی ایک اچھی بات یہ ہے کہ اگر آپ ان پچوں پر ٹک کر کھیلتے ہیں تو پھر آپ کے لیے رن بنانا آسان ہو جاتا ہے۔ دوسری طرف انگلینڈ کی پچیں بالکل مختلف ہیں اور کئی بار تو سارادن ان پر سوئنگ ہوتی ہے ۔سابق کپتان نے مانا کہ آسٹریلیا دورہ میں ٹیم کے لیے سیکھنے کا موقع ہو گا۔ دراوڑ نے کہا کہ آسٹریلیا دورہ ہندستان کے لیے بہت چیلنج ہوگا اور مجھے یقین ہے کہ انہیں وہاں بہت کچھ سیکھنے کو ملے گا۔ ٹیم میں کئی نوجوان کھلاڑی موجود ہیں اور ان کے پاس وہاں کی کنڈیشنز میں سیکھنے کا موقع ہو گا ۔ دراوڑ نے کہا کہ بلے بازوں میں چتیشور پجارا اور وراٹ کوہلی ٹیم کے لیے اہم ثابت ہوں گے۔ لیکن ان کھلاڑیوں کے لئے اپنی ٹیکنالوجی پر کام کرنے کی ضرورت ہو گی۔ سابق کرکٹر نے کہا کہ آسٹریلیا میں آن اینڈ آف اسٹمپ اور اچھال ایک بڑا مسئلہ ہو گی اور پجارا اور وراٹ کو انہی پہلوؤں پر کام کرنا ہوگا ۔ ٹیکنالوجی کے بارے میں بات کرتے ہوئے دراوڑ نے کہا کہ آسٹریلیا میں فٹ ورک پر کھلاڑیوں کو زیادہ توجہ دینا ہوگی تاکہ جہاں بھی موقع ملے آپ رن بنا سکیں۔ مجھے لگتا ہے کہ وراٹ اور پجارا ہی نہیں بلکہ ہندوستان کے تمام بلے بازوں کو اس سمت میں کام کرنا ہو گا۔سال 12۔2011 میں ہندستانی ٹیم کے آخری آسٹریلوی دورے میں ٹیم کو 0۔4 سے کلین سویپ کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ لیکن دراوڑ کا خیال ہے ہندستانی ٹیم اس بار بہتر کارکردگی کرے گی اور اس کے نتیجہ میں بہتری ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ اس بار ہندستان کا نتیجہ بہتر ہوگا۔ مجھے ایسا لگتا ہے کہ اس بار ٹیم صحیح سمت میں آگے بڑھ رہی ہے ۔ سابق کپتان نے ساتھ ہی موجودہ ہندستانی ٹیم کا موازنہ سال 1990اور 2000 کی ٹیم سے کیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان ہندوستانی ٹیم کو کچھ وقت دینے کی ضرورت ہے اور اگر ان کے ساتھ احتیاط برتی جائے تو وہ مستقبل میں بہترین کارکردگی کرے گی۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اس نوجوان ٹیم کو کچھ وقت دینا ہوگا۔ مجھے لگتا ہے کہ موجودہ ٹیم 1990 اور 2000 کی ٹیم کی طرح ہے جس میں کئی نوجوان کھلاڑی ہیں۔ اگر یہ ٹیم تیار کی جائے تو مستقبل میں اس سے اچھے نتائج ملیں گے۔ اس لئے ہمیں تھوڑا انتظار کرنا ہوگا آپ کو کچھ مشکل وقت بھی دیکھنے کو ملے گا لیکن اس کا نتیجہ ضرور ملے گا ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment