Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 01:43 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

جارحانہ کھیل اور ایک یونٹ کے طور پر کھیلنے سے ملی شاندار جیت:وراٹ کوہلی

 

ہندوستان سے بڑی شکست کے بعد بھی عالمی کپ کیلئے تیار ہیں : میتھیوز

رانچی، 17 نومبر (یو این آئی) میدان پر جارحیت اور اپنی تنک مزاجی کے لیے معروف وراٹ کوہلی کو بھلے ہی اپنے اس رویے کے لیے کئی بار تنقید برداشت کرنی پڑی ہو لیکن قائم مقام کپتان نے سری لنکا کے خلاف ملی 5۔0 کی شاندار جیت کے لیے ٹیم کی جارحیت اور اتحاد کو ہی کریڈٹ دیا ہے۔وراٹ نے آخری میچ میں سنچری بنا کر ہندستان کو میچ میں فتح اور سیریز میں کلین سویپ دلانے کے بعد ا کہ ہم نے سیریز کے آغاز میں فیصلہ کیا تھا کہ ہم ایک ٹیم کی طرح متحد ہو کر کھیلیں گے۔ اس سیریز میں ہم نے اسے نافذ کیا اور ہمیں کامیابی ملی ۔ وراٹ نے میچ میں ناٹ آؤٹ 139 رنز کی اننگز کھیلی۔مین آف دی سیریز اورقائم مقام کپتان نے ٹیم کی مجموعی کارکردگی کی تعریف کی۔ انہوں نے ا مارے کھلاڑیوں نے پوری محنت اور جارحیت کے ساتھ مظاہرہ کیا ۔ ہم مسلسل اسی بات پر زور دے رہے تھیچا ے گیندباز رنز دے رہے ہیں لیکن اگر وہ وکٹ نکال رہے ہیں تو ہم نے ان کو ایسا کرنے کا موقع دیا ۔اپنی کپتانی کو بے حد اطمینان بخش بتاتے ہوئے وراٹ نے ا کہ میں ایک کپتان کے طور پر بہت اطمینان محسوس کر رہا ہوں۔ برصغیر کی ٹیم کے خلاف کلین سویپ کرنا آسان نہیں ہے۔ یہ ہمیشہ مشکل ہوتا ہے لیکن ٹیم کے کھلاڑیوں نے میرے پلان کے مطابق مظاہرہ کیا اور میں اس بات سے بے حد خوش ہوں ۔ٹیم انڈیا کے خلاف سخت رویہ اپنانے کے بارے میں وراٹ نے اکہ میں ٹیم کے تئیں کچھ سخت رہا کیونکہ میں ٹیم میں جیت کی عادت ڈالنا چاہتا ہوں۔ ہماری ٹیم میں جیتنے کی عادت ہونی چاہیے۔ اگر ہمیں آگے جانا ہے تو ہمیں جیتنے کی عادت ڈالنی ہوگی ۔ٹیم میں نئے چہروں کے ساتھ کھیلنا اور اپنے نمبر تین کے مقام پر چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنے کو لے کر قائم مقام کپتان نے اکہ میں مڈل آرڈر کو مضبوط کرنا چاہتا ہوں اور آنے والے وقت میں مجھے نہیں لگتا کہ میں اپنے اس آرڈر کو چھوڑوں گا۔ میں نے اپنی زیادہ تر سنچری تیسرے نمبر پر ہی لگائی ہیں اور کئی میچ بھی اسی آرڈر پر جیتے ہیں۔ اس لئے فی الحال تو میں اپنے اس آرڈر کو چھوڑنے کے بارے میں بالکل نہیں سوچ رہا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ جیسا میں نے نمبر چار پر اس میچ میں مظاہرہ کیا اگر میں ایسا ہی جاری رکھوں گا تو ہو بھی سکتا ہے کہ میں تیسرے اور چوتھے دونوں آرڈر میں کھیلنے میں آرام دہ محسوس کروں گا۔ میں اپنے من کی بات اور جیسا ٹیم کو ضروری ہوگا ویسا ہی کروں گا ۔ وراٹ نے سری لنکا کے خلاف سیریز میں نمبر تین کے اپنے آرڈر پر انباتی رایڈو کو بلے بازی کا موقع دیا اور خود چوتھے نمبر پر کھیلنے اترے۔ دوسری جانب سری لنکا کے کپتان انجیلو میتھیوز نے کہا ہے کہ ہندستان کے خلاف ون ڈے سیریز میں ملی 0۔5 کی شرمناک شکست کے باوجود ان کی ٹیم عالمی کپ کے لئے تیار ہے۔جبکہ سری لنکا کیسابق کھلاڑیوں نے اپنا تیکھا ردعمل ظاہر کیا ہے ۔سری لنکا کو کبھی بھی اتنی بڑی شکست کا سامنا نہیں کرنا پڑا ہے۔ اس سے پہلے ہندستان نے 1982 میں سری لنکا کو 3۔0 سے ہرایا تھا اور سری لنکا کو 1985 میں بھی پاکستان سے 0۔4 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ تاہم ہندستان کے خلاف اس سیریز میں سری لنکا کی ٹیم اپنے کچھ ا سٹار بلے بازوں کے بغیر اتری تھی۔ میتھیوز نے کہا کہ ان کی ٹیم اس ہار کو پیچھے چھوڑ کر آگے بڑھنے کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے نہیں لگتا کہ اس سیریز کا ہم پر کوئی منفی اثر پڑا ہے۔ ہم نے کچھ کھلاڑیوں کو ٹیم میں شامل کیا اور یہاں پر انہیں موقع دیا کیونکہ ہندوستان میں کھیلتے وقت ہمیشہ دباؤ بنا رہتا ہے۔ ہم دیکھنا چاہتے تھے کہ کون سے کھلاڑی دباؤ میں کھیل سکتے ہیں اور اب ہمیں اندازہ ہو گیا ہے۔ ہم اس شکست کو پیچھے چھوڑکر انگلینڈ سیریز پر توجہ لگائیں گے ۔ سری لنکائی بلے باز لا رو تھرمانے کی سیریز میں دو نصف سنچریوں نے انہیں چھٹے نمبر کی پوزیشن کا مضبوط دعویدار بنایا ہے۔ میتھیوز نے کہا کہ میں تھرمانے کی بلے بازی سے بہت زیادہ خوش ہوں کیونکہ ہمیں چھٹے نمبر کے لئے کوئی مضبوط بلے باز چاہئے تھا اور مجھے لگتا ہے آخری دو میچوں میں انہوں نے اپنا کام کر دیا۔ تمام کھلاڑیوں نے اچھا کھیلا لیکن مجھے لگتا ہے کہ کچھ شعبوں میں ہمیں کام کرنے کی ضرورت ہے ۔ تاہم سیریز میں خراب مظاہرے کے لئے بلے بازوں کو ذمہ دار ٹھہراتے آئے میتھیوز نے پانچویں ون ڈے میں شکست کے لئے گیند بازوں پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ آخری چار میچوں میں ہم نے بہتر کیا۔ یہاں پر بلے باز کرنا مشکل تھا لیکن بلے باز میدان پر ڈٹے رہے۔ اچھی شراکت کی اور اچھا اسکور بنایا لیکن بدقسمتی سے گیند بازوں نے مایوس کیا ۔ سری لنکا کے چیف سلیکٹر سنت جے سوریا نے ٹیم کی ہندستان کے ہاتھوں ون ڈے سیریز میں وائٹ واش شکست پر سخت مایوسی کا اظہار کیا ہے اس ضمن میں ان کا کہنا ہے کہ سری لنکا کیلئے دورہ ہندستان خوفناک خواب ثابت ہوا۔ ٹیم کی ناقص پرفارمنس کے سبب ہندستانی سرزمین میں پے در پے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ انہوں نے کبھی خواب میں بھی نہیں سوچا تھا کہ ہندستان کے ہاتھوں شرمناک شکست ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیم کی بولنگ متاثر کن نہ تھی جس کی وجہ سے ہندستانی ٹیم نے رنز کے انبار لگا دیئے اور ٹیم کو لے ڈوبی۔ حریف ٹیم نے سیزیز میں کلین سوئپ کامیابی اپنے نام کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹیم کیلئے ہندستان دورہ ایک خوفناک خواب ثابت ہوا۔ قوم کو کھلاڑیوں سے ذلت آمیز شکست کی امید نہیں تھی۔ ٹیم کو ورلڈ کپ کیلئے سخت محنت کرنی ہو گی۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment