Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 06:47 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

روہت کے ڈبل بلاسٹ سے سری لنکا پھر چاروں خانے چت

 

ٹیم انڈیا کے پہاڑ نما اسکور کے سامنے سری لنکائی چیتے پھر پست،گیندبازوں نے251 پر پلندہ باندھا کلکرنی نے چار ،یادو، پٹیل اور بنّی نے لئے دو ،دو وکٹ،شرما کے اسکور کو بھی نہ لانگ سکے لنکائی

کولکتہ، 13 نومبر (یو این آئی) چوٹ کے بعد اپنی واپسی کو صحیح ثابت کرنے اور آئی سی سی عالمی کپ 2015 کی ٹیم میں اپنی جگہ یقینی کرنے کے مقصد کے ساتھ کھیل رہے روہت شرما کی شاندار 264 رن کی دھماکہ خیز اننگز کی بدولت ہندوستان نے سری لنکا کو چوتھے ایک روزہ میچ میں 154 رن سے شرمناک شکست دی۔ ہندوستان نے میچ میں ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا صحیح فیصلہ کیا اور مقررہ 50 اوور میں پانچ وکٹ پر 404 رن کا ہمالیائی اسکور بنادیا۔ روہت نے 173 گیندوں میں 33 چوکے اور 09 چھکوں کی مدد سے 264 رن کی عمدہ اننگز کھیلی جو ان کے کیریئر کی سب سے بہترین اننگز ہے۔ ہدف کا تعاقب کرنے اتری سری لنکا کی پوری ٹیم 1ء43 اوور میں 251 رن پر ہی سمٹ گئی ۔روہت کی ریکارڈ 264 رن کی یہ اننگز ون ڈے تاریخ میں سر فہرست ہے ۔ ان سے پہلے ہندوستان کے جارح بلے باز وریندر سہواگ نے ویسٹ انڈیز کے خلاف آٹھ دسمبر 2011 کو 219 رن کی ڈبل سنچری بنائی تھی۔روہت اور وریندر کے علاوہ ماسٹر بلاسٹر سچن تیندولکر بھی سال 2010 میں ون ڈے میچ میں ڈبل سنچری کی کامیابی حاصل کرچکے ہیں۔ انہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف 200 رن بنائے تھے۔

ہندوستان نے میچ میں ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا اور 50 اوورز میں چار وکٹ پر 404 رنز کا پہاڑ جیسا اسکور کھڑا کر دیا۔ روہت نے 173 گیندوں میں 33 چوکے اور نو چھکے لگا کر 264 رنز کی اننگز کھیلی جس میں ان کے کیریئر کی بہترین اننگز ہے۔ روہت کو آخری گیند پر نوان لشی ھرا نے مہیلا جے وردھنے کے ہاتھوں کیچ کراکر آؤٹ کیا ۔روہت کی ریکارڈ 264 رنز کی یہ اننگز ون ڈے تاریخ میں سر فہرست ہے ۔ ان سے پہلے ہندوستان کے دھماکہ خیز بلے باز وریندر سہواگ نے ویسٹ انڈیز کے خلاف آٹھ دسمبر 2011 کو 219 رنز کی دوہری سنچری کھیلی تھی۔اگرچہ روہت کے لیے یہ کارنامہ نیا نہیں ہے۔ اس سے پہلے وہ آسٹریلیا کے خلاف دو نومبر 2013 کو کھیلے گئے ون ڈے میچ 209 رنز کی دوہری سنچری بھی کھیل چکے ہیں۔ روہت اور ویرو کے علاوہ ماسٹر بلاسٹر سچن تندولکر بھی سال 2010 میں ون ڈے میں ڈبل سنچری کی کامیابی حاصل کر چکے ہیں۔ انہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف 200 رنز بنائے تھے۔اس سے پہلے پانچ میچوں کی سیریز میں ہندستان 3۔0 سے پہلے ہی قبضہ کر چکا ہے۔ لیکن ورلڈ کپ سے پہلے تیاریوں کو مضبوط کرنے میں مصروف قائم مقام کپتان وراٹ کوہلی کی قیادت میں ٹیم انڈیا کسی بھی وقت صلہ رحمی برتنے کے موڈ میں دکھائی نہیں دی۔ چوٹ کے سبب طویل عرصے بعد ٹیم میں واپسی کر رہے روہت کو ایڈن گارڈن میں ہر علاقے میں چوکے چھکے لگاتے دیکھ کر ایسا نہیں لگا کہ وہ حال ہی میں چوٹ سے نکلے ہیں۔ اوپنر اجن یا ر انے کے 28 رن پر آؤٹ ہونے کے بعد روہت نے کریز پر ڈٹے رہ کر مسلسل رن بنانا جاری رکھا اور 100 گیندوں میں 100 رنز اور 151 گیندوں میں 201 رنز بنا کر ریکارڈ توڑ کر بہترین اننگ کھیلنا جاری رکھا۔ مکمل طور پر فٹ اور تازہ دکھائی دینے والے روہت نے کپتان وراٹ کوہلی کے ساتھ مل کر تیسری وکٹ کے لیے 202 رنز کی شراکت کی جبکہ رابن اتھپا کے ساتھ پانچویں وکٹ کے لئے 128 رنز کی شراکت نبھا ر اسکور 400 کے پار پہنچا دیا۔ہندستان کی جانب سے تیسرے وکٹ کے لیے 200 سے زیادہ رنز کی یہ آٹھویں شراکت ہے اور خاص بات یہ ہے کہ اس میں سے پانچ شراکت داریوں میں وراٹ کوہلی شامل ہیں۔ یہ بھی دلچسپ ہے کہ ون ڈے تاریخ میں صرف تین بلے بازوں نے ہی ڈبل سنچری لگانے کی کامیابی حاصل کی ہے اور یہ تمام ہندستانی کرکٹر ہیں۔ لیکن روہت کی 264 رنز کی اننگز ان میں سب سے اوپر ہے اور دنیا کے کسی بھی دوسرے بلے باز کے لیے یہ ریکارڈ کو توڑنا آسان نہیں ہوگا۔چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنے اترے قائم مقام کپتان وراٹ نے 64 گیندوں میں چھ چوکے لگا کر 66 رنز کی اننگز کھیلی جس میچ میں ٹیم کی دوسری سب سے بڑی اننگز ہے۔ لیکن پھر وراٹ ٹیم کے تیسرے بلے باز کے طور پر رن آؤٹ ہوکر پویلین لوٹ گئے۔ وراٹ کو دنیش چنڈیمل اور سیکاگے پرسنا نے رن آؤٹ کیا۔انباتی رایڈو 08 رن پر شمنڈا ارنگا کی گیند پر بولڈ ہو گئے جبکہ رہانے نے 24 گیندوں میں چھ چوکے لگا کر 28 رنز بنائے ۔ لیکن کپتان انجیلو میتھیوز کی گیند پر وہ ایل بی ڈبلیو ہو گئے۔ سریش رینا نے 11 رن بنائے جبکہ اتھپا 16 رن پر ناٹ آؤٹ رہے۔ سری لنکا کے سامنے 405 رنز کا ہدف رکھنے والی ہندوستانی کرکٹ ٹیم دنیا کی پہلی ایسی ٹیم بن گئی ہے جس نے ون ڈے میں پانچ بار 400 سے زیادہ کا اسکور کھڑا کیا ہے۔ اس سے پہلے کوئی اور ٹیم دو سے زیادہ بار ون ڈے میں 400 سے زیادہ کا اسکور کھڑا نہیں کر سکی ہے۔ اس کے علاوہ روہت شرما سچن تندولکر کے بعد پہلے ایسے ہندستانی ہیں جنہوں نے ون ڈے میں دو بار ڈیڑھ سو سے زیادہ کا اسکور کھڑا کیا ہے۔ سچن نے کیریئر میں پانچ بار ڈیڑھ سو سے زیادہ رن بنائے۔ روہت نے میچ میں جو دیگر کامیابی حاصل کی اس میں ایک یہ بھی ہے کہ ہندستان کی جانب سے پانچ یا اس سے زیادہ بار ون ڈے سنچری بنانے والے وہ اب 14 ویں ہندستانی بلے باز بن گئے ہیں۔سری لنکا کی جانب سے میتھیوز نے آٹھ اوورز میں 44 رنز پر سب سے زیادہ دو وکٹ لیے جبکہ نوان لشی ھرا کو 89 رن دے کر ایک وکٹ اور شمنڈا ارنگا کو 77 رن پر ایک وکٹ ملا۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment