Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 03:51 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

نئے چہروں کے ساتھ جیت کی لے برقرار رکھنا چاہے گی ٹیم انڈیا

 

روہت،اتھپا اور کرن شرما کو مل سکتا ہے موقع،سری لنکائی چیتے بھی وقار کے لئے بے قرار

کولکاتا،12 نومبر (یو این آئی) روہت شرما اور رابن اتھپا جیسے نئے چہروں کے ساتھ جمعرات کو ایڈن گارڈن میں کھیلے جانے والے چوتھے ون ڈے میچ میں سیریز پرقبضہ کر چکی ہندوستانی کرکٹ ٹیم سری لنکا کے خلاف جیت کی لے برقرار رکھنے اترے گی۔ پانچ ون ڈے میچوں کی سیریز میں ہندوستانی ٹیم پہلے ہی 0۔3 سیناقابل تسخیرسبقت حاصل کر چکی ہے لیکن فی الحال آئی سی سی ورلڈ کپ 2015 کو ہدف بنا کر کھیل رہی ٹیم کے لئے یہ سیریز بہتر تیاری کے لحاظ سے اہم ہے اور اس لئے قائم مقام کپتان وراٹ کوہلی کی قیادت میں وہ جیت کی لے برقرار رکھنے میدان پر اترے گی۔ کپتان مہندر سنگھ دھونی کے باقی میچوں سے بھی باہر ہو جانے کے بعد وراٹ پر ایک بار پھر اپنی کپتانی کو ثابت کرنے کی ذمہ داری ہے جبکہ فارم میں چل رہے اوپنر شکھر دھون اور آل راؤنڈر رویندر جڈیجہ کو باہر بٹھا کر روہت اور اتھپا کو موقع دیا گیا ہے ۔ ابتدائی میچوں میں کمال کی کارکردگی پیش کرکے سب سے زیادہ رن بنانے والے شکھر دھون کے باہر جانے سے روہت کے پاس اوپننگ میں اپنی اہمیت کو ثابت کرنے کا موقع ہو گا۔ موجودہ وقت میں اوپننگ اسپاٹ کے لئے اجن یا رہانے، دھون اور روہت کے درمیان مقابلہ ہے اور چوٹ سے صحت یاب ہونے کے بعد واپسی کرنے والے روہت کے لیے عالمی کپ سے پہلے باقی دونوں میچوں میں ہر حال میں بلے سے رنز کی برسات کرکیخود کو ثابت کرنا ہوگا۔دوسری طرف سری لنکا کی ٹیم اگرچہ سیریز گنوا چکی ہے لیکن کلین سویپ سے بچنے کیلئے وہ باقی میچوں میں بڑا الٹ پھیر کرنا چاہتی ہے اور اسی کے پیش نظر سری لنکا کرکٹ بورڈ نے ٹیم میں بڑی تبدیلی کی ہے ۔دھمی ا پرساد، سورج رندیپ، اپول تھرنگا اور کمار سنگاکارا کو ابتدائی میچوں میں خراب کارکردگی کے بعد آرام دیا گیا ہے جبکہ ان کی جگہ شمنڈاارنگا ، لا رو تھریمانے، دنیش چانڈیمل اور اجنتا مینڈس کو ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔رابن اتھپا کی بھی ٹیم میں واپسی ہوئی ہے اور ان کے پاس بھی خود کو ثابت کرنے کا یہ اچھا موقع ہے۔رابن نے ہندوستانی ٹیم کی جانب سے آخری بار جون میں بنگلہ دیش کے خلاف کھیلا تھا۔ اتھپا کے لیے ایڈن گارڈن پر کھیلنے کا اچھا تجربہ ہے۔آئی پی ایل کی کولکاتانائٹ رائڈرس کی ٹیم کے کھلاڑی اتھپا نے ساتویں ایڈیشن میں فاتح رہی کولکاتاکی جانب سے 16 میچوں میں 660 رنز بنائے تھے اگرچہ اوپننگ میں روہت اور رہانے کی موجودگی سے اتھپا کو نچلے آرڈرمیں کھیلنا پڑ سکتا ہے۔اس کے علاوہ امباتی رایڈو نے بھی ابتدائی تین میچوں میں بلے سے زبردست کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور 183 رن بنائے ہیں۔ کپتان کی ذمہ داری سنبھال رہے وراٹ کوہلی نے خود اپنے نمبر تین اسپاٹ کو پیچھے کر رایڈو کو تیسرے نمبر پر بلے بازی کا موقع دیا جسے وکٹ کیپربلے باز نے ثابت بھی کیا ہے۔تاہم مڈل آرڈر میں فی الحال ان کی یہ جگہ کتنی محفوظ رہتی ہے یہ کہنا مشکل ہے لیکن رایڈو، وراٹ اور سریش رینا کی موجودگی سے مڈل آرڈر اوپننگ کی ہی طرح مضبوط پوزیشن میں دکھائی دے رہا ہے۔گیند بازوں میں اکشر پٹیل، امیش یادو حال ہی میں شامل کئے گئے لیگ اسپنر کرن شرما اور آر ونے کمار اور آف اسپنر روی چندرن اشون کے کندھوں پر فتوحاتی مہم جاری رکھنے کی ذمہ داری ہوگی۔اکشرنے ابھی تک سیریز میں اپنی کارکردگی سے چونکایا ہے اور تین میچوں میں 71ء14 کے اوسط سے سات وکٹ لیے ہیں جبکہ فاسٹ بولر امیش نے اتنے میچوں میں سب سے زیادہ آٹھ وکٹ اپنے نام کئے ہیں۔تیز گیند باز ایشانت کو پیٹھ میں جکڑن کی وجہ سے آخری دو میچوں کے لیے منتخب نہیں کیا گیا ہے اورفزیو ان کی فٹنس کے حوالے سے ان پر نگرانی رکھیں گے۔ ایشانت نے ابتدائی میچوں میں چار وکٹ لئے تھے اور اس دوران ان کی ڈیڑھ سو کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے کی گئی گیندبازی نے کافی دادحاصل کی ۔لیکن اس تیزی سے ان کی فٹنس بھی سوالات کے گھیرے میں ہے۔بہرحال ٹیم میں شامل ہونے والے نئے چہروں میں چوٹ کے بعد واپسی کر رہے روہت، رابن، کرن ،ونے اور کیدار کے لیے آخری دو میچ ٹیم کے سیریز گنوانے کے باوجود کرو یا مرو کے ہوں گے جن میں ان کھلاڑیوں کو آئندہ اہم دوروں کیلئے ذاتی کارکردگی کی بنیاد پر پرکھا جائے گا۔مہمان ٹیم سری لنکا کے لیے بھی آخری میچ خود کو ثابت کرنے کے لحاظ سے اہم ہییہی وجہ ہے کہ میچ سے دو دن پہلے ٹیم نیٹ پریکٹس میں گھنٹوں پسینہ بہا رہی ہے۔ خراب فارم میں چل رہے تجربہ کار سنگاکارا کو باہر بٹھایا گیا ہے اور اب ٹیم میں شامل چار نئے چہروں شمنڈا، دنیش، اجنتا اور تھرمانے کو ٹیم کی کارکردگی کو پٹری پر لانے کی ذمہ داری ہے۔ٹیم کے تجربہ کار کھلاڑی ماہیلا جے وردھنے اور تلک رتنے دلشان کو چھوڑ دیں تو جیت کے لیے اور کوئی جدوجہد کرتا دکھائی نہیں دے رہا ہے اور خود کپتان انجیلو میتھیوز نے مانا کہ ہندوستانی پچوں پر 300 سے زیادہ کا اسکور بنانا لازمی ہے لیکن بلے بازوں کی خراب کارکردگی کی وجہ سے انہیں نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ اس کے علاوہ گیند بازوں میں حال ہی میں آئی سی سی ونڈے ٹیم میں شامل شامل کئے گئے مینڈس کے پاس اسپن گیند بازی کی کمان ہوگی۔

 

...


Advertisment

Advertisment