Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 03:08 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

قیادت کو مثبت بنانے کی کوشش کررہا ہوں

 

کھلاڑیوں کو پرجوش کرنے اور حوصلہ افزائی کرنے کیلئے ہر ممکن کوشش میں مصروف ہیں:وراٹ کوہلی

احمدآباد، 7 نومبر(یو این آئی)مستقل کپتان مہندر سنگھ دھونی کی غیر موجودگی میں قیادت کی ذمہ داری انجام دینے والے نوجوان بلے باز وراٹ کوہلی نے آج یہاں کہا ہے کہ وہ اپنی قیادت میں کھلاڑیوں کو پرجوش کرنے اور حوصلہ افزائی کرنے کیلئے اپنی جانب سے ہر ممکن کوشش کرنے میں مصروف ہیں۔سری لنکا کے خلاف مسلسل دوسری جیت حاصل کرنے کے بعد اخباری نمائندوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے وراٹ کوہلی نے کہاکہ وہ ایک کپتان کے طور پر اپنے ساتھی کھلاڑیوں کا اعتماد حاصل کرنیاور انہیں بہتر کھیل کی تحریک دینے کے لئے بھرپور کوشش کررہے ہیں۔انہو ں نے کہاکہ کوچ ڈنکن فلیچر اور ٹیم انتظامیہ بھی کھلاڑیوں کی مدد کررہی ہے تاکہ وہ میدان پر جاکر اچھی کارکردگی پیش کرسکے۔ اس کے لئے جواب میں ہمارے ساتھی کھلاڑی ایک ٹیم یونٹ کے طور پر مظاہرہ کررہے ہیں۔ہندوستان سری لنکا کو دوسرے میچ میں چھ وکٹ سے شکست دے کر پانچ میچوں کی سیریز میں دو۔صفر کی مضبوط برتری حاصل کرلی ہے۔ آئی سی سی ون ڈے کرکٹر آف دی ائر ایوارڈ کے لئے نامزد وراٹ کوہلی موجودہ سیریز کے پہلے تین میچوں میں ٹیم کی قیادت کررہے ہیں۔رائڈو سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کوہلی نے کہاکہ رائڈو طویل عرصے فرسٹ کلاس کرکٹ کھیل رہے ہیں اس لئے انہیں ایک موقع ملنا چاہئے۔رائڈو نے بارہ سال قبل ہندوستان اے کے لئے کھیلا تھا۔ اس لئے انہیں ایک موقع دیا جانا چاہئے۔ جس کے وہ حقدار ہیں اور اس کا انہو ں نے بھرپور فائدہ بھی اٹھایا ہے۔انہوں نے مزید کہاکہ ان کے نزدیک ہر میچ کی برابر اہمیت ہے۔ وہ سیریز کے ہر مقابلے کو فیصلہ کن مقابلے کے طور پر کھیل رہے ہیں۔انہو نیکہا کہ میچ میں ٹاس جیت کر فائدہ مند ثابت ہوا ویسے بھی ٹاس ہارنا پسند نہیں ہے۔دوسری جانب مڈل آرڈر کے نوجوان بلے باز انباتی رائڈو نے کہاکہ وہ اپنے کوچ کپتان وراٹ کوہلی کو مستقل کپتانی دھونی بھائی کے سب سے زیادہ مشکور ہیں۔ جنہو ں نے ان کی زبردست حوصلہ افزائی کی۔انہو ں نے کہاکہ سب نے ہی ان سے زیادہ توقعات لگارکھی تھی۔ لیکن انہوں نے سنچری بنانے کے لئے بالکل نہیں سوچا تھا۔ انہو ں نے یہ حکمت عملی ضرور اختیار کی تھی کہ وہ زیادہ سے زیادہ کیریز پر رک سکیں تاکہ ٹیم کی جیت کو یقینی بنایا جاسکے اور اس عمل میں ان کی سنچری مکمل ہوئی۔ہندوستان کی 19 برس سے کم عمر کھلاڑیوں کی ٹیم میں قیادت کی ذمہ داری انجام دینے والے رائڈو نے نمبر تین مقام سے متعلق ایک سوال کے جواب میں کہاکہ اس کا انحصار کپتان پر ہے کہ وہ اس مقام پر کس کو کھیلانا چاہتے ہیں۔ٹیم میں ان کے لئے جو بھی فیصلہ ہوگا وہ انہیں منظور ہوگا۔

...


Advertisment

Advertisment