Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 01:17 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

سری لنکا کیخلاف اپنی بالادستی قائم رکھنا چاہیں گیٹیم انڈیا کے جانباز

 

احمد آباد، 5 نومبر (یو این آئی) شکھر دھون اور اجنکیا راہانے کی زبردست سلامی جوڑی او ر گیند بازوں بہترین کارکردگی کے ساتھ اپنے مجموعی کھیل سے پہلا ایک روزہ میچ جیتنے والی ہندستانی کرکٹ ٹیم جمعرات کو سری لنکا کے خلاف یہاں کھیلے جانے والے دوسرے میچ میں بھی اپنی بالادستی قائم رکھنے کے ارادے سے میدان میں اترے گی۔ طویل عرصے کے بعد فارم میں لوٹے سلامی بلے باز شکھر ، سریش رینا اور تیز گیند باز ایشانت شرما اور ساتھ ہی دیگر کھلاڑیوں کی بھی ٹیم کے جیت میں اہم رول ادا کرنے کی بدولت ہندستان نے پانچ میچوں کی سریز میں کٹک میں 169 رنوں کی زبردست جیت درج کی اور سریز میں ایک صفر کی سبقت بنائی ۔ لیکن فی الحال موجودہ عالمی کپ چیمپئن کا ہدف سریز جیتنا نہیں بلکہ مضبوطی کے ساتھ ایک ٹیم کے طور پر کھیلنا ہے تاکہ اگلے سال ہونے والے ٹورنامنٹ میں خطاب کا دفاع کیا جاسکے۔
انگلینڈ سیریزکے بعد سے ہی شکھر نے پچھلے میچ سے اپنا رول ادا کرتے ہوئے 113 رن بنائے تو دوسری طرف راہانے نے بھی 111 رنوں کی اننگز کھیلی ۔ ساتھ ہی چوٹ کی وجہ سے کھیل سے دور رہے ایشانت شرما نے بھی اپنی واپسی کو صحیح ثابت کرتے ہوئے اکیلے چار وکٹ حاصل کر سری لنکائی ٹیم کے بلے بازوں کو جدوجہد کرنے کا موقع نہیں دیا۔ مہندر سنگھ دھونی کی عدم موجودگی میں نوجوان بلے باز وراٹ کوہلی ٹیم کی قیادت سنبھال رہے ہیں اور ان کی کپتان میں کٹک میں کھیلا گیا پہلا ایک روز ہ میچ بڑے فرق سے ملی جیت سے کہیں زیادہ اس بات کیلئے اہم ہے کہ اس میں ٹیم میں مجموعی طور پر ہر شعبے میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا گیا جو آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کی مشترکہ میزبانی میں ہونے والے عالمی کپ کیلئے نیک شگون ہیں۔

سری لنکا کی ٹیم میں وہ جوش و جذبہ نظر نہیں آیا جس کے لئے وہ مشہورہے اور پچھلے میچ میں گیند بازی اور بلے بازی دونوں ہی شعبوں میں کمزور ثابت ہوئی تاہم یہ تو یقینی ہے کہ ٹی۔20 کی عالمی فاتح سری لنکا کوئی کمزور ٹیم نہیں ہے۔ اس لئے ٹیم انڈیا کو ضرورت سے زیادہ خوداعتمادی کے بجائے اپنی حکمت عملی پر عمل کرنے پر توجہ دینی ہوگی۔ مڈل آرڈر میں چوتھے نمبر سریشن رینا کا رول بہت اہمیت رکھتا ہے۔ دھونی کے بعد دو سو ایک روزہ میچ کھیلنے والے رینا سب سے زیادہ تجربہ کار کھلاڑی ہیں ایسے میں مشکل حالات میں ان پر اننگز کو سنبھالنے کی بھی ذمہ داری ہوگی۔ حالانکہ وراٹ اب بھی اپنے پورے فارم میں نہیں ہیں لیکن کچھ عرصے سے اپنی کارکردگی سے ٹیم انڈیا کے سب سے مضبوط اور مستقبل بلے باز بن گئے ہیں اور امید ہے کہ وہ اپنی دوہری ذمہ داری کو بخوبی نبھائیں گے۔ عالمی کپ جیسے ٹورنامنٹوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے وراٹ کو اپنی کاردگی کو بہتر بنانا ضروری ہے۔ٹیم کے بلے بازی کے آرڈر کی بات کی جائے تو اس وقت روہت شرما ،راہانے اور شکھر کو سلامی بلے بازی کیلئے مضبوط دعویدار مانا جارہا ہے۔ روہت پوری طرح فٹ نہ ہونے کی وجہ سے فی الحال ٹیم سے باہر ہیں لیکن پریکٹس میچ میں انکی 142 رنوں کی اننگز سے یہ واضح ہوگیا ہے کہ وہ زیادہ عرصہ تک ٹیم سے باہر نہیں رہیں گے ،بلے بازوں کی طرح گیند باوزں کی کارکردگی بھی ٹیم کے لئے ضروری ہے۔ کٹک میں چوٹ کی وجہ سے ٹیم سے باہر ہوئے ورن ارون کی جگہ آل راؤنڈر اسٹورٹ بنی کو ٹیم میں شامل کیا گیا ہے لیکن اس کے علاوہ ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی اس لئے احمد آباد میں ایشانت اور اومیش یادو پر اضافی ذمہ دار ہوگی۔کٹک میں ایشانت او رورن وکٹ لینے کیسے بھی زیادہ 150 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند بازی کرنے کی وجہ سے بھی سرخیوں میں رہیتھے۔

ورن نے اس میچ میں 1ء152 فی کلو میٹر کی رفتار سے سب سے تیز گیند پھینکی تھی ان کی عدم موجودگی میں ٹیم کو کچھ نقصان ضروری ہوگا لیکن امیش نے دو اور ایشانت نے چار وکٹ لیکر سری لنکا کے سامنے اسکور کا بخوبی دفاع کیا۔ جبکہ اکشر پٹیل نے بھی دو وکٹ نکالیا ور احمد آباد میں ایک بار پھر ان کا رول اہم ہوجاتا ہے۔آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کی پچوں پر تیز گیند بازی کی ہمیشہ اہمیت رہی ہیاور ایسے میں ہمارے تیز گیند بازوں کو اپنی لے قائم رکھنی ہوگی اور خود کو چوٹ سے بچاناہوگا۔ ورن کے کوچ کہہ چکے ہیں انکی چوٹ کی وجہ تیز اسپیڈ ہے۔ موجودہ سیریز میں بھونیشور کمار اور محمد سمیع جیسے دو اہم تیز گیند باز پہلے ہی چوٹ لگنے کی وجہ سے باہر ہیں۔ اس لئے ٹیم میں جگہ بنائے رکھنے کیلئے ایشانت اور امیش کو زیادہ ذمہ داری سے کھیلنا ہوگا۔ دوسری طرف سری لنکا کی بات کریں تو کپتان انجیلو میتھیوز پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ ٹیم کی تیاری کم ہے۔ پچھلے میچ میں ان کی کارکردگی سے یہ صاف ہوجاتا ہے لیکن ٹیم کے پاس اوپل تھرنگا ، تلک رتنے دلشان مہیلا جے وردھنے کمار سنگاکارا اور میتھیوز کی شکل میں بلے بازی کا مضبوط سلسلہ ہے۔ جبکہ صورت رنیپ تشارا پریرا ،دھمیکا پرساد جیسے اچھے گیند باز بھی ہیں جو کھیل کاپانسہ پلٹ سکتے ہیں۔

...


Advertisment

Advertisment