Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 06:45 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

اسپورٹس اتھارٹی آف انڈیا سے میٹنگ کے بعد والش نے اپنا استعفیٰ واپس لیا

 

نئی دہلی، 22 اکتوبر (یو این آئی) ہندوستانی ہاکی کو ایک بڑی راحت فراہم کرتے ہوئے ٹیم کے کوچ ٹیری والش نے بدھ کو اسپورٹس اتھارٹی آف انڈیا (سائی) کے ساتھ میٹنگ کے بعد اپنا استعفی واپس لے لیا ہے۔ہندوستانی ہاکی ٹیم کو 16 برسوں کے طویل وقفہ کے بعد انچیون کے ایشیائی کھیلوں میں سونے کا تمغہ دلانے میں اہم کردار ادا کرنے والے کوچ والش نے ادائیگی سے متعلق تنازعہ کے بعد منگل کو اپنے عہدہ سے استعفی دے دیا تھا۔مسٹر والش کے استعفی کے بعد ہاکی انڈیا (ایچ آئی) اور سائی کے درمیان جاری تلخی سامنے آگئی تھی۔ انہوں نے اپنے استعفے کے لئے کھیلوں میں موجودبیوروکریسی کو ذمہ دار ٹھہرایا تھا۔اسپورٹس اتھارٹی آف انڈیا کے ڈائرکٹر جی جی تھامسن کو 19 اکتوبر کو تحریر کردہ اپنے ایک خط میں مسٹر والش نے کہا تھا کہ میں ہندوستان میں کھیلوں میں موجود بیوروکریسی کی وجہ سے یہ فیصلہ کرنے پر مجبور ہوں ۔ میرا خیال ہے کہ یہ رویہ مستقبل میں ہندوستانی ہاکی اور اس کے کھلاڑیوں کے لئے نقصان دہ ثابت ہوگا۔مسٹر والش نے آسٹریلیا میں اپنے کنبہ سے طویل عرصہ سے دوری کو بھی استعفی دینے کی وجہ قراردیتے ہوئے کہا تھا کہ میرے لئے پروفیشنل کے طورپر کام کرنا بہت مشکل ہورہا تھا ۔ معاہدہ کے تئیں میری موجودہ ذمہ داریوں کی وجہ سے میری گھریلو زندگی متاثر ہورہی ہے۔۔2013 میں ہندوستانی ٹیم کے ساتھ وابستہ ہونے والے والش کا معاہدہ 19 کونومبر کوختم ہورہا ہے۔ ان کی رہنمائی میں ہندوستانی ہاکی ٹیم نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے گلاسگو دولت مشترکہ کھیلوں میں چاندی کا اور ایشیائی کھیلوں میں سونے کا تمغہ جیت کر 2016 میں ہونیوالے ریو اولمپک کے لئے کوالیفائی بھی کرلیا ہے۔اس کے ساتھ ہی مسٹر والش اور اسپورٹ اسٹاف کا حکومت کے ساتھ ان کی تنخواہ پر ٹی ڈی ایس لگائے جانے پر تنازعہ چل رہا تھا۔ ایچ آئی کے صدر نریندر بترا نے سائی اور حکومت کے سامنے کئی بار اس معاملے کو اٹھایا تھا۔

 

...


Advertisment

Advertisment