Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 06:04 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

عالمی کپ کرکٹ کی خطابی جنگ آج


آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان دھماکہ خیزمقابلہ متوقع
میلبورن، 28 مارچ (یو این آئی) چار بارکے چیمپئن آسٹریلیا اور پہلی بار فائنل میں پہنچ کر تاریخ رقم کرنے والے نیوزی لینڈ کے درمیان اتوار کو یہاں میلبورن کرکٹ میدان میں عالمی کپ کے فائنل میں دھماکہ خیز جنگ دیکھنے کو ملے گی۔اس جنگ سے دنیا کو یا تو نیا عالمی چیمپئن ملے گا یا پھر آسٹریلیا پانچویں مرتبہ یہ تاج اپنے نام کرے گا۔ٹورنامنٹ میں اپنی جیت کا سلسلہ برقرار رکھنے ،بہترین کارکردگی اور سیمی فائنل مقابلے میں جنوبی افریقہ کو شکست دے کر پہلی بار فائنل میں پہنچنے والی نیوزی لینڈ نے عالمی کپ کے چھ گروپ مقابلوں میں تمام میچ جیتے ہیں جبکہ آسٹریلیا کو واحد شکست نیوزی لینڈ کے ہاتھوں ہی ملی ہے ۔بنگلہ دیش کے خلاف اس کا مقابلہ بارش کی نذر ہو گیا تھا۔وہیں سیمی فائنل میں دفاعی چمپئن ہندستان کو شکست دے کر ٹورنامنٹ سے باہر کرنے والی ٹیم آسٹریلیا کے حوصلے بلند ضرور ہوں گے لیکن نیوزی لینڈ کے ہاتھوں ملی کراری شکست کو وہ ابھی تک بھولی نہیں ہوگی۔نیوزی لینڈ کے کپتان برینڈن میک کولم نے اپنی ٹیم میں کسی طرح کی کوئی تبدیلی نہیں کرنے کا اعلان بھی کیا ہے اور انہوں نے سیمی فائنل مقابلے میں جنوبی افریقہ کو شکست دینے والے کھلاڑیوں پر ہی بھروسہ کیا ہے ۔اگرچہ یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ نیوزی لینڈ خطاب اپنے نام کرکے تاریخ رقم کرے گي یا پھر آسٹریلیا اس کے ارادوں پر پانی پھیر کر پانچویں بار جیت کا سہرا اپنے سر باندھ لے گی۔یہ پہلا موقع ہوگا جب آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ عالمی کپ فائنل میں آمنے سامنے ہوں گی۔اگرچہ موجودہ ٹورنامنٹ میں دونوں کے درمیان ایک پول میچ میں جنگ ہو چکی ہے جس میں دونوں ہی ٹیموں کی کارکردگی عمدہ رہی تھی لیکن نیوزی لینڈ نے کرشمائی انداز میں صرف ایک وکٹ سے میچ میں جیت درج کی تھی۔سال 1996 کے عالمی کپ ٹورنامنٹ کے کوارٹرفائنل مقابلے میں دونوں کے درمیان مقابلے میں آسٹریلیا نے بازی مار لی تھی۔سات بار عالمی کپ فائنل تک پہنچنے والی آسٹریلوی ٹیم ایسا کرنے والی ٹاپ ٹیم ہے ۔دیگر کوئی بھی ٹیم تین بار سے زیادہ ایسا نہیں کر سکی ہے ۔میلبورن کے میدان پر آسٹریلیا کے خلاف نیوزی لینڈ کا ریکارڈ اچھا ہے ۔دونوں کے درمیان اس میدان پر کھیلے گئے گزشتہ پانچ ون ڈے مقابلوں میں سے تین نیوزی لینڈ نے جیتے ہیں جبکہ دو میچوں میں آسٹریلیا نے جیت کا پرچم لہرایا ہے ۔دونوں مشترکہ میزبان ٹیموں کے درمیان اس میدان پر آخری مقابلہ سال 2009 میں ہوا تھا جس میں نیوزی لینڈ نے جیت درج کی تھی۔لیکن ایم سي جي میدان پر نیوزی لینڈ آسٹریلیا کے خلاف کسی بھی ٹورنامنٹ یا سیریز کا ایک بھی فائنل میچ نہیں جیت سکی ہے اور گزشتہ پانچ فائنل میں آسٹریلیا نے ہی جیت اپنے نام کی ہے ۔
آسٹریلوی ٹیم کے کپتان اور تجربہ کار کھلاڑی مائیکل کلارک نے عالمی کپ فائنل کے موقع پر سب کو چونکاتے ہوئے اس میچ کے بعد ون ڈے کرکٹ کو الوداع کہنے کا اعلان کردیا ہے ۔ایسے میں ان کی ٹیم ان کو فاتحانہ وداعی دینے کی پوری کوشش کرے گی۔ نیوزی لینڈ کے کپتان برینڈن میک کولم نے عالمی کپ فائنل سے پہلے ہی اپنی ٹیم کے اعتماد سے پرہونے کی بات کہی ہے ۔میک کولم اس میچ سے پہلے بالکل بھی فکر مند نظر نہیں آئے اور انہوں نے کہا کہ ٹیم کے کھلاڑی آغاز سے ہی جارحانہ کھیل دکھانے کے لیے اتریں گے ۔کیوی کپتان نے کہا کہ انہیں شکست کا ڈر بالکل بھی نہیں ہے ۔ نیوزی لینڈ نے اپنی عمدہ کارکردگی سے سب کوحیران کیاہے لیکن امید ہے کہ آسٹریلیا کو اس کے گھریلو میدان کا فائدہ ضرور ملے گا۔آسٹریلیا نے اپنے گھریلو میدان پر کھیلے گئے گزشتہ 26 میچوں میں سے 24 میں جیت درج کی ہے اور یہی وجہ ہے کہ وہ اس میدان پر مضبوط نظر آ رہی ہے کیونکہ دونوں ٹیموں کے درمیان ورلڈ کپ پول مقابلہ نیوزی لینڈ کے آکلینڈ میدان پر کھیلا گیا تھا جس میں نیوزی لینڈ کو ایک وکٹ سے جیت ملی تھی۔ دونوں ہی ٹیموں کے پاس میچ ونر کھلاڑی ہیں۔ نیوزی لینڈ کے اوپنر مارٹن گپٹل زبردست فارم میں چل رہے ہیں اور عالمی کپ میں 237 رنز بنانے کا عالمی کپ ریکارڈ انہوں نے موجودہ ٹورنامنٹ میں ہی بنایا ہے ۔وہیں ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ 21 وکٹ لینے والے نیوزی لینڈ کے فاسٹ بولر ٹرینٹ بولٹ آسٹریلیا کے بلے بازوں کے لیے بڑا خطرہ بن سکتے ہیں۔وہیں 20 وکٹ اپنے نام کرنے والے آسٹریلیا کے مچل اسٹارک بھی اپنی گیند بازی سے نیوزی لینڈ کے بلے بازوں کو پریشان کرکے جلدی آؤٹ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔کرکٹ کے شائقین کو امید ہے کہ دونوں مشترکہ میزبان کے درمیان کھیلا جانے والا ورلڈ کپ خطابی مقابلہ سب سے زیادہ دلکش اور دلچسپ ہو جائے گا۔میلبورن کی پچ اچھال بھری ہے جس سے بلے بازوں کو فائدہ ملنے کی امید ہے ۔ایسے میں ٹاس کا کردار اہم رہے گا اور ٹاس جیتنے والی ٹیم پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کر سکتی ہے ۔عالمی کپ فائنل کے لیے دونوں ٹیموں کی ممکنہ الیون اس طرح ہے :آسٹریلیا (ممکنہ) :آرون فنچ، ڈیوڈ وارنر، اسٹیون اسمتھ، مائیکل کلارک (کپتان)، شین واٹسن، گلین میکسویل، بریڈ ہیڈن (وکٹ کیپر)، جیمز فاکنر، مچل جانسن، مچل اسٹارک، جوش ہیزل وڈ۔نیوزي لینڈ:مارٹن گپٹل، برینڈن میک کولم (کپتان)، کین ولیم، راس ٹیلر، گرانٹ ایلیٹ، کوری اینڈرسن، لیوک روچی، ڈینیل ویٹوری، ٹم ساؤدی، میٹ ہنری، ٹرینٹ بولٹ۔

...


Advertisment

Advertisment