Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 06:04 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ہم کسی بھی پچ پر جیتنے کی صلاحیت رکھتے ہیں:روہت

 

سڈنی، 25 مارچ (یو این آئی) ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان جمعرات کو ہونے والے دوسرے سیمی فائنل مقابلے کے لیے سڈنی کی پچ اور گیند بازوں کے کردار اہم مانے جا رہے ہیں لیکن ہندستانی اوپنر روہت شرما کا کہنا ہے کہ ٹیم انڈیا کسی بھی پچ پر جیتنے کی صلاحیت رکھتی ہے ۔میچ کے موقع پر روہت نے کہا کہ ہمیں اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے کہ سڈنی کی پچ پر تیز گیند بازوں کو مدد ملے گی یا اسپنروں کو۔ہم ان تمام حقائق کے بجائے جیتنے کے لیے اتریں گے ۔ بدھ کو سڈنی کرکٹ کی پچ کافی خشک اور بھوری دکھائی دی جو ہندوستان کے لئے مددگار ثابت ہو سکتی ہے جبکہ گھریلو ٹیم آسٹریلیا نے یہاں کچھ گھاس کی امید کی تھی تاکہ اس کے تیز گیند بازوں کو اس پر فائدہ مل سکے ۔گزشتہ ہفتے سڈنی گراؤنڈ پر سری لنکا کے خلاف کوارٹرفائنل میں جنوبی افریقہ کے اسپنروں عمران طاہر اور جے پی ڈومنی نے سات وکٹ لیے تھے ۔آسٹریلوی ٹیم کے کوچ مائیکل کلارک سے لے کر کوچ ڈیرن لہمن جہاں سڈنی کی پچ کو لے کر فکر مند دکھائی دے رہے ہیں وہیں روہت نے کہا کہ ہندستانی ٹیم کو پچ کے مزاج سے فرق نہیں پڑتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمیں اس بات سے فرق نہیں پڑتا ہے کہ ہمیں کس طرح کی پچ ملتی ہے ہم کسی بھی طرح کی پچ پر اچھا کھیل سکتے ہیں ۔ ہم نے اب تک سات میچوں میں 70 وکٹ لئے ہیں اس لئے ہم جانتے ہیں کہ ہمیں کیسا کھیلنا ہے ۔ہمارے پاس فاسٹ بولر اور اسپنر دونوں موجود ہیں ہم کسی بھی صورت حال کے لیے تیار ہیں۔ٹیم انڈیا نے ورلڈ کپ ٹورنامنٹ میں اب تک کمال کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے تمام میچ جیتے ہیں لیکن آسٹریلیا کے خلاف فی الحال اس کا ریکارڈ اچھا نہیں رہا ہے ۔ہندستان نے گزشتہ 35 سالوں میں سڈنی کرکٹ گراؤنڈ پر آسٹریلیا کو ون ڈے میں صرف ایک بار شکست دی ہے جبکہ میزبان ٹیم نے عالمی کپ میں 1975 کے بعد سے اب تک چھ سیمی فائنل جیتے ہیں۔ لیکن ون ڈے میں ڈبل سنچری بنانے والے ہندوستانی بلے باز نے کہا کہ گزشتہ ریکارڈ سے ٹیم کا حوصلہ پست نہیں ہوگا ۔روہت نے کہا کہ ہم پر پرانے نتائج کو لے کر کوئی دباؤ نہیں ہے ۔اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ ہم جیت سکتے ہیں ۔ آسٹریلیا نے اچھی گیند بازی کی ہے لیکن ہم نے اچھی بلے بازی کی ہے ۔ہمارے پاس اچھے گیند باز بھی ہیں اور ہم مخالف ٹیم کو سخت ٹکر دینے کے لیے اتریں گے ۔سیمی فائنل سے پہلے جانسن کے سلیجنگ کرنے جیسے بیانات کے بارے میں روہت نے کہا کہ اس میچ میں دو بڑی ٹیمیں ایک دوسرے کے خلاف کھیلنے اتریں گی اس لئے مجھے تھوڑی بہت سلیجنگ سے پریشانی نہیں ہے ۔لیکن کسی کو بھی حد نہیں پار کرنی چاہیے ۔ ہندستان اپنی حد میں رہے گا لیکن ہم پیچھے بھی نہیں ہٹیں گے ۔انہوں نے کہا کہ میں کبھی نہیں چاہوں گا کہ میرا ریکارڈ ٹوٹے ۔لیکن ہر بلے باز بڑا سکور بنانا چاہتا ہے ۔ہمیشہ 200 یا اس سے زیادہ اسکور بنانا ممکن بھی نہیں ہوتا ہے ۔یہ ایک مشکل کام ہے ۔جب میں نے 264 رن بنائے تھے تو لوگ چاہتے تھے کہ میں 300 کا اسکور بناؤں۔ لوگوں کی امیدیں بڑھ جاتی ہیں کیونکہ جب آپ یہ اسکور بھی بنالوگے تو انہیں اور رنز چاہیے ہوں گے ۔لیکن کرکٹ اب الگ ہی سطح کا کھیل ہو گیا ہے ۔روہت نے اپنی اچھی فارم اور بہترین کرکٹ کھیلنے کے سوال پر کہا کہ میں اس سوال کا جواب نہیں جانتا ہوں۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment