Today: Wednesday, September, 26, 2018 Last Update: 10:06 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

’گپٹلطوفان‘کے سامنے کالی آندھی بے اثر


عالمی کپ میں مارٹن نے کھیلی ریکارڈ ساز اننگ،ویسٹ انڈیز عالمی کپ سے باہر،24مارچ کو جنوبی افریقہ سے ٹکرائیں گے کیوی

ویلنگٹن، 21 مارچ (یو این آئی) مارٹن گپٹل( ناٹ آؤٹ 237 رن) کی ریکارڈ ڈبل سنچری اور پھر ٹرینٹ بولٹ (44رن پر چار وکٹ) کی شاندار بولنگ کی بدولت نیوزی لینڈ نے ہفتہ کو عالمی کپ کے چوتھے اور آخری کوارٹرفائنل میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 143 رن کے بڑے فرق سے جیت درج کرتے ہوئے سیمی فائنل میں جگہ بنا لی جہاں اس کا مقابلہ خطاب کی دیگر دعویدار جنوبی افریقہ سے ہوگا۔نیوزی لینڈ اور ویسٹ انڈیز کے میچ میں آغاز سے لے کر آخر تک رنز کی برسات ہوتی رہی اور میچ دیکھ رہے مداحوں کو ایک دلچسپ مقابلہ دیکھنے کو ملا۔ویسٹ انڈیز نے بھلے ہی میچ گنوایا لیکن اس کے بلے بازوں نے بڑے اسکور سے لڑنے کی جدوجہد کی اور کیوی گیندبازوں کی آخر تک پٹائی کرتے ہوئے آخر تک بہترین شاٹس لگاتے ہوئے کل 16 چھکے اور 23 چوکے لگاکر شان سے ٹورنامنٹ سے الوداعی لی۔اس سے پہلے نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 50 اوورز میں چھ وکٹ پر 393 کا زبردست اسکور کیا جس کے جواب میں ویسٹ انڈیز نے 30.3 اوور میں تمام وکٹوں کے نقصان پر 250 رنز بنائے ۔کیوی اوپنر گپٹل نے 237 رن کی ناٹ آؤٹ ریکارڈ اننگز کھیلی جو موجودہ ٹورنامنٹ کی دوسری ڈبل سنچری اور بہترین انفرادی اننگز ہے ۔اس کے علاوہ ان کی یہ اننگز عالمی کپ ناک آؤٹ مرحلے میں اب تک کی سب سے بڑی ذاتی اننگز بھی ہے ۔اس سے پہلے 2007 میں سری لنکا کے خلاف ایڈم گلکرسٹ نے ناک آؤٹ میں 149رن کا سب سے بڑا اسکور بنایا تھا۔گپٹل کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ہدف کا تعاقب کرنے اتری ویسٹ انڈیز کی جانب سے کرس گیل نے 61 رن بنائے جبکہ صرف ایک وکٹ باقی رہنے کے باوجود کمال کا مظاہرہ کرتے ہوئے کپتان جیسن ہولڈر نے 26 گیندوں میں 161 کے اسٹرائک ریٹ سے پانچ چوکے اور دو چھکے لگاکر 42رن بنائے ۔نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹرینٹ بولٹ نے 10 اوورز میں 44 رنز دے کر سب سے زیادہ چار وکٹ نکالے ۔وہ اسی کے ساتھ موجودہ عالمی کپ میں سب سے زیادہ وکٹ لینے والے گیند بازوں کی فہرست میں کل 19 وکٹ کے ساتھ سب سے اوپر پہنچ گئے ہیں۔گپٹل نے میچ میں اپنے کیریئر کی بہترین اننگز کھیلتے ہوئے 163 گیندوں میں 24 چوکے اور 11 چھکے لگاکر ناٹ آؤٹ 237 رن بنائے ۔اس سے پہلے ویسٹ انڈیز کے کرس گیل نے 147 گیندوں میں 10 چوکے اور 16 چھکے لگا کر زمبابوے کے خلاف 215 رنز کی اننگز کھیلی تھی۔ گپٹل نے اپنی شاندار اننگ میں پہلے 64 گیندوں میں 50 رن اور 111 گیندوں میں 100 رنز پورے کئے ۔اس کے بعد 134گیندوں میں کیوی اوپنر نے 18 چوکے اور تین چھکے لگا کر پہلے 150 رنز اور پھر 152 گیندوں میں 200رنز پورے کرکے ٹورنامنٹ کی دوسری ڈبل سنچری لگانے کا ریکارڈ اپنے نام کر لیا۔اس انتہائی دلچسپ مقابلے میں کل 643 رنز بنائے گئے جس میں کل 62 چوکے اور 31 چھکے شامل ہیں جو ایک میچ میں ریکارڈ ہے ۔ویسٹ انڈیز کی جانب سے ہدف کا تعاقب کرنے اتری کیریبین ٹیم کا آغاز اگرچہ اچھا نہیں رہا اور 27 رنز پر اس نے دو وکٹ گنوا دیے ۔ٹیم کے دھماکہ خیز بلے باز پر رن بنانے کا کافی دباؤ دکھا اور گیل نے 33 گیندوں میں دو چوکے اور آٹھ بہترین چھکے لگاکر زبردست اننگز کے ساتھ61 رن بنائے لیکن وہ ایڈم ملنے کی گیند پر بولڈ ہو گئے اور پانچویں وکٹ کے طور پر واپس آ گئے ۔نویں بلے باز کپتان ہولڈر نے ایک سرے پر وکٹ نہیں ہونے کے باوجود کوئی نرمی یا گھبراہٹ کے بجائے کھل کر42 رنز بنائے ۔وہ ڈینیل ویٹوری کی گیند پر آخری بلے باز کے طور پر آؤٹ ہوئے جب ایک بڑا شاٹ لگانے کی کوشش میں کوری اینڈرسن نے انہیں لپک کر کیریبین اننگز کو 250 پر سمیٹ دیا۔ویسٹ انڈیز کی جانب سے جوناتھن کارٹر نے 32 رن، ڈیرن سیمی نے 27، آندرے رسل 20، جیروم ٹیلر 11 اور مارلون سیمؤیلس 27 کے اسکور پر آؤٹ ہوئے ۔نیوزی لینڈ کی جانب سے بولٹ نے ویسٹ انڈیز کے چار وکٹ لے کر سات میچوں میں کل 19 وکٹ پورے کئے ۔اسی کے ساتھ آسٹریلیا کے مشیل اسٹارک (18) دوسرے اور ہندستان کے محمد شمي (17)تیسرے نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔اس کے علاوہ ٹم ساؤدی کو آٹھ اوورز میں مہنگی گیند بازی کے ساتھ 82 رن دے کر دو وکٹ، ڈینیل ویٹوری کو 6.3 اوور میں 58 رن پر دو وکٹ ملے ۔ملنے اور کوری اینڈرسن کو ایک ایک وکٹ ہاتھ لگا۔نیوزی لینڈ نے خطاب سے دو قدم دور ہے جہاں زبردست فارم میں چل رہی جنوبی افریقہ اور خطاب کی دیگر دعویدار ٹیم سے اس کی جنگ سیمی فائنل میں ہوگی۔اگرچہ اوپنر گپٹل کی موجودہ عالمی کپ ٹورنامنٹ کی سب سے بڑی اننگز نے مخالف ٹیم کو ابھی سے دباؤ میں ڈال دیا ہوگا۔ گپٹل اسی کے ساتھ ون ڈے میں ڈبل سنچری بنانے والے پانچویں اور اپنی ٹیم نیوزی لینڈ کے پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں۔نیوزی لینڈ کی جانب سے مارٹن گپتل نے 237 رنز کی اننگز کھیل کر کئی ریکارڈز بنائے جس میں کیوی سائیڈ سے پہلی بار ڈبل سینچری بھی شامل ہے جبکہ ورلڈ کپ میں کسی کھلاڑی کا سب سے زیادہ انفرادی اسکور اور دوسری بار ڈبل سینچری ہے ، اس سے قبل اسی ورلڈ کپ میں ویسٹ انڈیز کے کریس گیل نے زمبابوے کے خلاف 215 رنز بنائے تھے ۔
نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو مارٹن گپتل اور برینڈن میکلم نے تیز آغاز کیا مگر اس کی پہلی وکٹ 5ویں اوور میں صرف 27رنز پر گری۔اس کے بعد کین ویلیم سن اور گپتل نے 62رنز کی پارٹنر شپ کھیل کر اسکور 89رنز تک پہنچایا مگر 16ویں اوور میں ویلیم سن 33رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے ۔اس کے بعد روز ٹیلز کھیلنے آئے جنہوں نے مارٹن گپتل کے ہمراہ نیوزی لینڈ کو مستحکم پوزیشن تک پہنچایا، دونوں نے 143رنز کی پارٹنر شپ بنائی مگر پھر 39ویں اوور میں 232 کے مجموعی اسکور پر ٹیلر بھی رن آؤٹ ہو گئے انہوں نے 92گیندوں پر 42 رنز بنائے جو کہ اننگ میں گپتل کے بعد کسی کھلاڑی کا بڑا اسکور تھا۔ان کے بعد کورے انڈریسن 15رنز، گرانٹ ایلوٹ 27 اور لوکے رونچی 9 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے ۔البتہ دوسرے اینڈ پر گپتل نے وکٹ کو محفوظ رکھا اور 35ویں اوور کے بعد تیز کھیلنا شروع کر دیا۔مارٹن گپتل نے 237رنز صرف 163 گیندوں پر بنائے جبکی اس اننگ میں انہوں نے 11چھکے اور 24 چوکے لگائے ۔نیوزی لینڈ نے آخری 15 اوورز میں 206 رنز اسکور کیے ۔ویسٹ انڈیز کی جانب سے جرمی ٹیلر نے 7اوورز میں 71 رنز دے کر 3 جبکہ اینڈریو رسل نے 10 اوورز میں 96 رنز دے کر 2 وکٹیں حاصل کیں۔واضح رہے کہ نیوزی لینڈ 26مارچ کو آکلینڈ میں کھیلے جانے والے ورلڈ کپ کے پہلے سیمی فائنل میں جنوبی افریقہ کے مدمقابل آئے گی۔26مارچ کو سڈنی میں کھیلا جانے والا دوسرا سیمی فائنل میزبان آسٹریلیا اور دفاعی چمپئن ہندوستان کے درمیان کھیلا جائے گا۔
آئی سی سی ورلڈ کپ 2015کے کوارٹر فائنل میں نیوزی لینڈ نے ویسٹ انڈیز کے خلاف 393 رنز کا مجموعہ اب تک کے تما م ورلڈ کپ ٹورنامینٹس کے ناک آؤٹ مراحل کا سب سے بڑا اسکور ہے ۔اس سے قبل یہ ریکارڈ آسٹریلیا نے ورلڈ کپ 2003 کے فائنل میں ہندوستان کے خلاف 359 رنز بنا کر اپنے نام کیا تھا۔ورلڈ کپ کے چوتھے کوارٹر فائنل میں ویسٹ انڈیز کے خلاف سب سے زیادہ رنز بنانے والے نامور بلے باز مارٹن گپٹل نے 24 چوکوں اور 11 چھکوں کی مدد سے 237 رنز بنائے جو اب تک کے تمام ورلڈ کپ ٹورنامنٹس کی سب سے بڑی اننگ کھیلنے کا اعزاز ہے ۔کیوی اوپنر نے 237 رنز کی ناقابلِ شکست اننگ میں 24 چوکے لگائے جس کی بنا پر بین الاقوامی ایک روزہ میچ میں سب سے زیادہ چوکے لگانے والے بلے بازوں کی فہرست میں پانچویں نمبر پر موجود ہیں۔یاد رہے کہ ایک روزہ میچ میں سب سے زیادہ چوکے لگانے کا اعزاز 33 چوکوں کے ساتھ ہندوستانی بلے باز روہت شرما کے پاس ہے ۔ہندوستان کے ہی سچن ٹنڈولکر اور وریندر سہواگ 25 ، 25 چوکوں کے ساتھ دوسرے اور تیسرے نمبر پر ہیں، سری لنکا کے سنتھ جے سوریا 24 چوکوں کے ساتھ چوتھے نمبر پر موجود ہیں۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment