Today: Tuesday, November, 20, 2018 Last Update: 09:05 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

کاغذی شیر ثابت ہوئے بنگالی، انڈیاشان کیساتھ سیمی فائنل میں داخل


روہت شرما کے شاندار137رن اور سریش رینا کی 65رنوں کی شاندار بلے بازی ،پہاڑجیسے اسکور کا پیچھا کرتے ہوئے بنگلہ دیشی ٹیم تاش کے پتوں کی طرح بکھرگئی،109رنوں سے شرمناک شکست
ملبورن، 19 مارچ (یو این آئی) عالمی ریکارڈ ہولڈر روہت شرما (137) کی بہترین سنچری اور ان کی سریش رینا (65) کے ساتھ 122 رن کی سنچری رفاقت اور اس کے بعد گیند بازوں کی لاجواب کارکردگی سے دفاعی چمپئن ہندوستان نے بنگلہ دیش کو جمعرات کو 109 رنز سے شکست دے کر 2007 کی شکست کا بدلہ چکاتے ہوئے شان کے ساتھ عالمی کپ کے سیمی فائنل میں جگہ بنا لی۔ہندستان نے مقررہ 50 اوور میں چھ وکٹ پر 302 رن کا مضبوط اسکور بنانے کے بعد بنگلہ دیشی چیلنج کو 45اوور میں 193 رن پر نمٹا دیا ۔مین آف دی میچ روہت نے 126 گیندوں میں 14 چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے 137 رنز کی شاندار اننگز کھیلی ۔ہندستان کا سیمی فائنل میں آسٹریلیا اور پاکستان کے درمیان میچ کے فاتح سے مقابلہ ہوگا۔
کپتان مہندر سنگھ دھونی نے اپنی ٹیم کو مسلسل دوسری بار سیمی فائنل میں پہنچانے کے ساتھ ہی ون ڈے کرکٹ میں اپنی کپتانی میں 100 ویں کامیابی حاصل کر لی اور اس کے ساتھ ہی حریف ٹیم کو مسلسل ساتویں بار آل آؤٹ کرنے کا نیا عالمی ریکارڈ بنا دیا ۔اس سے پہلے ہندستانی ٹیم جنوبی افریقہ کی برابری پر تھی جس نے 2011 کے ورلڈ کپ میں مسلسل چھ بار حریف ٹیموں کو آل آؤٹ کیا تھا ۔ہندستان نے گروپ مرحلے میں مسلسل چھ میچ جیت کر اس ریکارڈ کی برابری کی تھی اور کوارٹرفائنل میں بنگلہ دیش کو روندکر اس ریکارڈ کو توڑ دیا ۔ہندستان نے اس کے ساتھ ہی بنگلہ دیش سے 2007 کے عالمی کپ کے گروپ مرحلے میں ملی شکست کا بدلہ بھی چکا لیا ۔اس ہار سے ہندوستان 2007 میں گروپ راؤنڈ میں ہی باہر ہو گیا تھا لیکن روہت، رائنا اور گیند بازوں نے بنگلہ دیش کو اس طرح کی انہونی کرنے کا کوئی موقع نہیں دیا ۔تیز گے ند باز امیش یادو نے 31 رن پر تین وکٹ، محمد شمي نے 37 رن پر دو وکٹ اور لیفٹ آرم اسپنر رویندر جڈیجہ نے 42 رن پر دو وکٹ لے کر بنگلہ دیش کو 45 رنز پر آؤٹ کردیا۔ہندوستان کی موجودہ عالمی کپ میں یہ مسلسل ساتویں اور مجموعی مسلسل 11 ویں فتح ہے ۔ہندستان کی اس شاندار فتح کے محرک رہے روہت شرما جنہوں نے میلبورن میدان پر اپنی دوسری اور کل ون ڈے کی ساتواں سنچری بنائی۔ روہت کی اس اننگز نے ہی ہندستان کو ایسا اسکور دیا جس کے دباؤمیں آکر بنگلہ دیشی ٹیم نکل نہیں پائی ۔روہت نے 137 گیندوں میں 14 چوکے اور تین چھکے مارے ۔رائنا نے 57 گیندوں میں سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 65 رن کی قیمتی اننگز کھیلی۔دونوں کے درمیان چوتھے وکٹ کے لیے 122 رنز کی شراکت ہوئی ۔بڑے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے بنگلہ دیش کی ٹیم 33 رن پر دو وکٹ گنوانے کے بعد مقابلے میں نہیں لوٹ سکی ۔یادو کی گیند پر تمیم اقبال (25) کو دھونی نے وکٹ کے پیچھے لپکا جبکہ اسی اسکور پر امرالقیس (پانچ) رن پر آؤٹ ہو گئے ۔اس کے بعد سمیا سرکار نے 29، محموداللہ نے 21، مشفق الرحیم نے 37، شبیر رحمان نے 30 اور ناصر حسین نے 35 رن بنائے ۔لیکن بنگلہ دیش کی اننگز میں ایک بھی بڑی شراکت نہیں بن پائی ۔بنگلہ دیش نے اپنے آخری چار وکٹ محض چار رنز جوڑ کر گنوا دیے ۔یادو نے تمیم کے علاوہ شبیر اور روبیل حسین کا وکٹ لیا جبکہ شمي نے سرکار اور محمود کو آؤٹ کیا۔ جڈیجہ نے شکیب الحسن (10) اور ناصر کو پویلین بھیجا ۔موہت شرما نے بنگلہ دیش کے کپتان مشرف مرتضی کا شکار کیا ۔کپتان دھونی نے وکٹ کے پیچھے چار کیچ لپک کر گیندبازوں کا کام آسان کیا ۔اس سے قبل خراب شروعات سے ٹیم کونکالتے ہوئے ذمہ دارانہ سنچری کھیل کر روہت شرما (137) اور سریش رینا (65) نے چوتھے وکٹ کے 122 رن جوڑ کر عالمی کپ کوارٹرفائنل مقابلے میں بنگلہ دیش کے خلاف چھ وکٹ پر ہندستان کو 302 کے مضبوط اسکور تک پہنچا دیا ۔کپتان مہندر سنگھ دھونی نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا لیکن ہندوستان کو شروع میں کئی جھٹکے لگے لیکن پھر مڈل آرڈر کے بلے بازوں نے محتاط مظاہرہ کرتے ہوئے 50 اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 302 کا مضبوط اسکور کر دیا۔ٹیم کی جانب سے اہم وقت پر ذمہ داری نبھاتے ہوئے روہت نے میلبورن کرکٹ گراؤنڈ پر اپنی دوسری اور ون ڈے میں کل ساتویں سنچری بنائی۔سریش رینا نے ون ڈے میں اپنی 35 ویں نصف سنچری اور چوتھے وکٹ کے لیے روہت کے ساتھ 15.5 اوور میں چوتھے وکٹ کے لیے 122 رنز کی سنچری رفاقت نبھاکر اسکور 200 کے پار پہنچانے میں مدد کی۔روہت نے 126 گیندوں میں 14 چوکے اور تین چھکے لگا کر 137 رنز کی بہترین اننگز کھیلی۔ہندستانی بلے باز وں نے آغاز میں کافی صبر سے رن بنائے اور آخری پانچ اوورز میں بڑے شاٹس لگا کر تابڑ توڑ 38 رن جوڑ ڈالے ۔43 ویں اوور میں رینا ایک زندگی ملنے کے بعد اگلی گیند پر آسان کیچ دے کر کپتان مشرف مرتضی کی گیند پر مشفق الرحیم کے ہاتھوں کیچ ہوگئے ۔زمبابوے کے خلاف آخری گروپ میچ کے سنچری میکر رائنا نے 57 گیندوں میں سات چوکے اور ایک چھکا لگا کر 65 رنز کی اننگز کھیلی ۔چھٹے نمبر پر اترے دھونی نے چھ اور رویندر جڈیجہ نے 23 رن بنائے ۔بنگلہ دیش کی جانب سے کپتان مرتضی میدان پر جتنا گیندبازوں اور فیلڈروں کے ساتھ بحث کرتے رہے اتنا ہی ہندوستانی بلے بازوں نے ان کی حکمت عملی کا بینڈ بجا یا ۔مرتضی نے 10 اوورز میں 69 رنز دے کر مہنگی گیند بازی کی اور ایک وکٹ نکالا ۔مرتضی کی گیند پر سب سے زیادہ 10 چوکے پڑے ۔تسکین احمد نے 10 اوورز میں 69 رنز دے کر تین وکٹ لیے ، روبیل حسین کو 10 اوورز میں 56 رنز دے کر ایک اور شکیب الحسن کو 10 اوورز میں 58 رنز دے کر ایک وکٹ ہاتھ لگا ۔روہت اور رائنا کی شراکت نے بنگلہ دیش کی میچ پر ایک وقت بنی گرفت کو پوری طرح ڈھیلا کر دیا اور آخری اوورز میں مخالف ٹیم کے گیند بازوں کی گھبراہٹ اور کئی اہم موقعوں پر کیچ چھوڑنے اور خراب فیلڈنگ کا فائدہ اٹھا کر ہندوستانی بلے بازوں نے رن بنائی۔روہت اسی کے ساتھ میلبورن کرکٹ گراؤنڈ پر دو سنچری بنانے والے تیسرے غیر ملکی کھلاڑی بن گئے ہیں۔ ان کے علاوہ یہ کامیابی ڈیوڈ گوور اور ویوین رچرڈس کے نام ہے ۔اسی کے ساتھ روہت اس گراؤنڈ پر سب سے زیادہ چھکے لگانے والے چھٹے بلے باز بن گئے ہیں ۔روھت نے یہاں پانچ میچوں میں 335 رنز بنا لیے ہیں جس میں دو سنچری اور سات چھکے شامل ہے یں۔ رکی پونٹنگ 20 چھکوں کے ساتھ ٹاپ پر ہیں۔
میچ میں 43 ویں اوور میں رینا کے آؤٹ ہونے کے بعد دھونی میدان پر اترے لیکن انہوں نے روہت کو اسٹرائک پر رکھا اور کریز پر ڈٹے رہ کر بنگلہ دیش پر نفسیاتی دباؤ بنا کر رکھا۔دھونی نے اگرچہ آخری گیندوں میں بڑا شاٹ لگانے کے چکر میں چھٹے بلے باز کے طور پر آؤٹ ہو گئے ۔ دھونی کو تسکین احمد نے ناصر حسین کے ہاتھوں کیچ کرایا ۔کپتان نے 11 گیندوں میں چھ رن بنائے اور روہت کے ساتھ پانچویں وکٹ کے لیے صرف 3.1 اوور میں اہم 36 رن جوڑے ۔رویندر جڈیجہ نے 10 گیندوں میں چار چوکے لگا کر ناٹ آؤٹ 23 رنز بنا کر اسکور 300 کے پار پہنچانے میں مدد کی ۔لیکن اس سے پہلے ہندوستان کی شروعات کچھ اچھی نہیں رہی اور یہ پانچواں موقع تھا جب ہندوستان اس عالمی کپ میں پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 25 اوور کے اندر اندر 100 رن تک نہیں بنا سکا ۔ہندستان نے سب سے پہلے شکھر دھون کو کھویا ۔بنگلہ دیش کی کسی ہوئی گیند بازی اور فیلڈنگ کی وجہ سے دھون نے 50 گیندوں میں تین چوکے لگا کر 30 رنز بنائے لیکن وہ 16 ویں اوور میں 75 کے اسکور پر آؤٹ ہو گئے ۔اس کے بعد وراٹ کوہلی جلد ہی چار رن کے اندر اندر دوسرے بلے باز کے طور پر پویلین لوٹ گئے ۔روہت تین رن بنا کر روبیل کی گیند پر مشفق الرحیم کو کیچ تھما بیٹھے ۔ہندوستان کے لیے محض 79 کے اسکور پر دونوں اہم بلے بازوں کو گنوانا بڑا جھٹکا تھا اور پھر اجنکیا رہانے بھی 19 رنز بنا کر 27 ویں اوور میں آؤٹ ہو گئے ۔رہانے نے 37 گیندوں میں ایک چوکا لگایا اور تسکین نے انہیں آؤٹ کیا ۔لیکن اوپننگ بلے باز روہت ڈٹے رہے ۔روہت نے دھونی کے ساتھ پہلے وکٹ کے لیے 75 رن کی ساجھے داری کی ۔ روہت پانچویں بلے باز کے طور پر 46 ویں اوور میں تسکین احمد کی گیند پر بولڈ ہو گئے ۔لیکن اس وقت تک وہ ہندوستان کو مضبوط پوزیشن میں پہنچا چکے تھے ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment