Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 12:03 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

پہلا کوارٹرفائنل مقابلہ

 

طاہر اورڈیومنی کے حملے میں سری لنکائی خیمہ تباہ
آسان جیت کیساتھ جنوبی افریقہ سیمی فائنل میں،سری لنکا کی پوری ٹیم محض133رن ہی بناسکی، جنوبی افریقہ کی9وکٹ سے شاندار جیت
سڈنی، 18مارچ (یو این آئی) جے پی ٖڈیومنی کی ہیٹ ٹرک اورعمران طاہر(26رن پر چار وکٹ) کی عمدہ گیندبازی کے بعد کوئنٹن ڈی کاک (ناٹ آوٹ 78) کی شاندار اننگز کی بدولت جنوبی افریقہ نے سری لنکا کو 192 گیندیں باقی رہتے نو وکٹ سے روندکر ورلڈ کپ میں اپنا پہلا ناک آوٹ مقابلہ جیت لیا ۔جنوبی افریقی ٹیم نے عالمی کپ کے پہلے کوارٹرفائنل مقابلے میں آل راونڈ کارکردگی دکھاتے ہوئے سابق چمپئن سری لنکا کو ایک طرفہ انداز میں شکست دے کر سیمی فائنل میں جگہ بنا لی۔سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 37.2 اوور میں محض 133 رن بنائے اور جنوبی افریقہ نے صرف18اووروں میں ایک وکٹ کے نقصان پر 134 رن بنا کر یہ جیت اپنے نام کر لی ۔ جنوبی افریقہ کی جیت میں اہم کردار ادا کرنے والے عمران طاہر نے 8.2 اوور میں 26 رن دے کر سب سے زیادہ وکٹ حاصل کیے اور سری سری لنکا کو معمولی سے اسکور پر ڈھیر کر دیا ۔اس کے علاوہ میچ میں ہیٹ ٹرک لینے والے ڈیومنی نے اپنے ون ڈے کیریر کی بہترین گیندبازی کرتے ہوئے نو اووروں میں 29 رن پر تین وکٹ لیے ۔ وہ موجودہ عالمی کپ میں ہیٹ ٹرک لینے والے پہلے گیندباز بن گئے ہیں جبکہ عالمی کپ میں یہ کامیابی حاصل کرنے والے بھی وہ جنوبی افریقہ کے پہلے گیندباز ہیں۔سری لنکا کا یہ اسکور ون ڈے میں جنوبی افریقہ کے خلاف ساتواں سب سے کم اسکور ہے ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ سری لنکا نے جنوبی افریقہ کے خلاف ہی اپنا سب سے کم ون ڈے اسکور بنایا تھا ۔کاک نے 57 گیندوں میں 12 چوکے لگا کر ناٹ آؤٹ 78 رن کی اننگز کھیلی اور فاف ڈو پلیسس (ناٹ آوٹ 21) کے ساتھ دوسرے وکٹ کے لیے 94 رن کی ناٹ آوٹ ساجھیداری کرکے ٹیم کو اس کے عالمی کپ میں ناک آوٹ مقابلے میں پہلی جیت دلا ئی ۔ کاک نے آخر میں جیت کیلئے درکار چار رن چوکا لگاکرپورے کئے ۔اس میچ میں سری لنکا کی ٹیم آغاز سے لے کر آخر تک دباؤ میں نظر آئی اور خراب بلے بازی کے بعد گیندبازوں کی کارکردگی بھی ناقص رہی۔ لست ملنگا چھ اووروں میں 43 رن دے کر ایک ہی وکٹ لے سکے ۔اس سے پہلے سری لنکا کے سات بلے باز دہائی کے ہندسے کو بھی چھو نہ سکے اور اپنا آخری بین الاقوامی میچ کھیل رہے کمار سنگاکارا نے 45 اور لاھرو ترمانے (41) کو چھوڑ کر کوئی اور بلے باز بڑی اننگز نہیں کھیل سکا ۔جنوبی افریقہ کے اسپنر 35 سالہ عمران طاہر نے اس عالمی کپ میں اپنے 15 وکٹ پورے کئے جو کسی اسپنر کی بہترین کارکردگی ہے ۔طاہر کو سب سے زیادہ چار وکٹ لینے کے لیے مین آف دی میچ قرار دیا گیا ۔اس میچ کو مکمل طور پر یک طرفہ کہا جا سکتا ہے جس میں نہ تو سری لنکا کی بلے بازی اور نہ ہی گیند بازی میں دم تھا اور اسی کے ساتھ جنوبی افریقہ نے اہم مقابلوں میں دباؤ اور شکست کی کہانی کو پیچھے چھوڑتے ہوئے سیمی فائنل میں جگہ بنا لی ۔جنوبی افریقہ کے بلے بازوں نے اس ہدف کو آسانی سے حاصل کرلیا لیکن سلامی بلے باز ہاشم آملہ ملنگا کی گیند پر چھٹے اوور میں 16 رن بنا کر سستے میں آؤٹ ہو گئے ۔ٹیم نے اپنا پہلا وکٹ 40 رن پر گنوایا ۔ آملہ نے 23 گیندوں میں ایک چوکا بھی لگایا لیکن ملنگا نے ان کو کلشیکھرا کے ہاتھوں کیچ کراکر پویلین بھیج دیا ۔لیکن اس کے بعد کاک اور پلیسس نے پھر ٹیم کو جیت کی منزل تک پہنچایا۔ دونوں بلے بازوں نے دوسرے وکٹ کے لیے 11.2 اوور میں 94 رن کی ناٹ آووٹ ساجھیداری ادا کی۔ اس سے پہلے آملہ اور کاک نے پہلے وکٹ کے لیے 40 رن جوڑے ۔ پلیسس نے 31 گیندوں میں ناٹ آؤٹ 21 رن بنائے جبکہ جنوبی افریقہ کو آسان ہدف میں 19 اضافی رن بھی ملے ۔ خطاب کی دعویداروں میں شامل جنوبی افریقہ کے لیے عالمی کپ آوٹ مقابلوں میں پہلی جیت ہے ۔سری لنکا کے لیے اور اپنا آخری ون ڈے کھیل رہے سنگاکارا کے لیے ان کی ٹیم یہ مقابلہ یادگار نہیں بنا سکی ۔ سنگاکارا نے اپنے آخری میچ میں 45رن کی ٹیم کی سب سے بڑی اننگز کھیلی لیکن وہ سری لنکا کو سیمی فائنل تک لے جانے میں کامیاب نہیں رہے ۔سری لنکا کی شروعات انتہائی خراب رہی اور سلامی جوڑی ٹیم کے صرف چار رن کے اسکور پر آؤٹ ہو گئی۔ کشال پریرا 03 رن پر کائل ایبوٹ کی گیند پر کوہنٹن ڈی کاک کے ہاتھوں کیچ ہو کر پویلین لوٹ گئے جبکہ تلک رتنے دلشان کھاتہ کھولے بغیر تیز گیندباز ڈیل اسٹین کی گیند پر فاف ڈو پلیسس کو کیچ دے ا بیٹھے ۔سری لنکا جنوبی افریقہ کے سامنے دباؤ میں دکھائی دے رہا تھا اور بلے بازوں پر یہ دباؤ صاف دیکھا گیا۔ گزشتہ چار میچوں میں مسلسل سنچری بنا چکے سنگاکارا پر ایک وقت مکمل دباؤ آ گیا تھا اور انہوں نے 45 رن کی اننگز کھیلی۔ لیکن مورن مورکل نے ڈیوڈ ملر کے ہاتھوں سنگاکارا کو نویں بلے باز کے طور پر آؤٹ کر دیا۔سنگاکارا اپنی اہمیت کو سمجھ کر ایک سرے پر ٹکے رہے اور 36 ویں اوور تک جمے رہے ۔ لیکن دوسرے سرے پر مسلسل وکٹ گرتے رہے ۔ ترمانے نے 48 گیندوں میں پانچ چوکے لگا کر 41 رن کی دوسری بڑی اننگز کھیلی اور تیسرے وکٹ کیلئے 65 رن جوڑے ۔ اس کے علاوہ کپتان انجیلو میتھیوز نے 19 رن جوڑے ،کشال (تین)، دلشان (صفر)، مہلا جے وردھنے (چار)، تشارا پریرا (صفر)، نوان کلشیکھرا (ایک)، پہلامیچ کھیلنے والے تھارنڈو کشال (صفر)، لست ملنگا (تین) رن پر پویلین لوٹ گئے ۔جنوبی افریقہ کی جانب سے عمران نے چار وکٹ اور ڈیومنی نے تین وکٹ لیے جبکہ ڈیل اسٹین کو 18 رن پر ایک وکٹ، کائل ایبوٹ کو 27 رن پر ایک اور مورکل کو 27 رن پر ایک وکٹ ملا ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment