Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 06:05 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ہم ورلڈ کپ جیت سکتے ہیں:مصباح الحق

 

اب یاسر شاہ کو نہ کھلانے کی غلطی کی جارہی ہے:رمیز راجہ

ایڈیلیڈ16مارچ(آئی این ایس انڈیا)آئرلینڈ کو آخری لیگ میچ میں شکست دے کر کوارٹر فائنل میں جگہ پکی کرنے والی پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کو بھروسہ ہے کہ ان کی ٹیم دوسری بار عالمی کپ خطاب جیتنے میں کامیاب رہے گی۔پول بی میچ میں کل یہاں آئرلینڈ پر سات وکٹ کی جیت کے بعد مصباح نے کہا کہ بیشک ہم ورلڈ کپ جیت سکتے ہیں،ہم تال میں ہیں،گیندباز کافی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں،بلے بازوں نے بھی اپنا کردار ادا کرنا شروع کر دیا ہے۔ہندوستان اور ویسٹ انڈیز کے خلاف دو میچ گنوانے کے بعد پاکستان نے مسلسل چار میچ جیتے ہیں اور وہ کوارٹر فائنل میں جمعہ کو آسٹریلیا سے بھڑے گا۔مصباح نے کہا کہ وہ شریک میزبان آسٹریلیا کو ہرا سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی دن کچھ بھی ہو سکتا ہے،ہمارے پاس ایسا گیندبازی اٹیک ہے جو کسی کو بھی حیران کر سکتا ہے۔
سابق ٹیسٹ کرکٹر رمیز راجہ کا خیال ہے کہ پاکستان نے سرفراز احمد کو ابتدائی میچوں میں نہ کھلا کر بہت بڑی غلطی کر ڈالی اور اب یاسر شاہ کو نہ کھلانے کی غلطی کی جارہی ہے۔رمیز راجہ نے انٹرویو میں کہا کہ سرفراز احمد کو بہت پہلے کھلا لینا چاہیے تھا۔انہوں نے کہا کہ آسٹریلیا کے خلاف سرفراز احمد اگر بڑی اننگز کھیلنے میں کامیاب ہوگئے تو پاکستانی ٹیم کو اس کا بہت زیادہ فائدہ ہوگا۔رمیز راجہ نے کہا کہ انہیں ٹیم منجمنٹ کی عقل پر افسوس ہوتا ہے کہ لیگ سپنر یاسر شاہ کو ہندوستان کے خلاف میچ میں کھلایا گیا اور اس کے بعد انہیں بھول گئے حالانکہ آج کل کی کرکٹ میں وکٹ لینے والے بالر کی اہمیت ہے اور یاسر شاہ وکٹ لینے والے بالر ہیں۔ انہیں آئرلینڈ کے خلاف میچ میں کھلانا چاہیے تھا کیونکہ آئرش بیٹسمین لیگ سپن پر کمزور ہیں۔رمیز راجہ نے کہا کہ ٹیم منجمنٹ کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ اگر آپ لیگ سپنر کو آسٹریلیا میں استعمال نہیں کریں گے تو پھر کہاں کریں گے۔سابق کپتان نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کوارٹرفائنل میں اپنے اوپر غیرضروری دباؤ لے کر پہنچی ہے۔ وہ ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ جیت سکتی تھی اور آج اسے کوار ٹرفائنل میں آسٹریلیا کا سامنا نہ کرنا پڑتا۔جب ایک سینئر کرکٹر کا ان آؤٹ شروع ہوجائے تو سمجھ لینا چاہیے کہ کریئر کا اختتام قریب ہے۔ پاکستان کو یونس خان کی ٹیسٹ کرکٹ میں اب بھی ضرورت ہے لیکن ون ڈے میں یونس خان کو اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنا ہوگا کیونکہ وہ نہیں چاہیں گے کہ انہیں کوئی اس طرح ٹیم سے باہر کرتا رہے۔ رمیز راجہ نے کہا کہ آسٹریلوی ٹیم کے ساتھ اسی کے گھر میں مقابلہ ہے۔ پاکستانی ٹیم کیلئے مشکل مرحلہ ہے لیکن پریشر آسٹریلیا پر ہوگا۔ پاکستانی بالنگ اچھی ہے جس سے تمام ٹیمیں گھبرارہی ہیں۔اگر پاکستانی بیٹسمین مچل سٹارک کا وار جھیل گئے تو بقیہ چالیس اوورز میں بڑا سکور ممکن ہوسکے گا۔رمیز راجہ نے کہا کہ مصباح الحق کو ان کی فتوحات اور ریکارڈز کے بجائے ایک خاموش اور محتاط کپتان کے طور پر یاد رکھا جائے گاجو اپنی حد میں رہ کر کھیلے ہیں اور وسائل کا استعمال بھی اپنے حساب سے کیا ہے اور وہ بھی محتاط طریقے سے۔رمیز راجہ نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کو ایک قدم آگے بڑھنا ہوگا۔ اب اسے استعمال کیے ہوئے کھلاڑی اور کپتان نہیں چاہئیں بلکہ ایک تازہ سوچ کے ساتھ ٹیم بنانے کی ضرورت ہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment