Today: Wednesday, September, 26, 2018 Last Update: 09:52 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

رینا اور دھونی کے دم پر ٹیم انڈیا نے لگایا جیت کاچھکا

 

رینا کی سنچری اور دھونی کی کپتانی اننگ کی بدولت زمبابوے کو 6وکٹوں سے دی شکست ،کپتان ٹیلر کی الوداعی میچ میں ریکارڈ ساز سنچری رائیگاں

آکلینڈ، 14 مارچ (یو این آئی) سریش رینا (ناٹ آؤٹ 110) اور کپتان مہندر سنگھ دھونی (ناٹ آؤٹ 85) کے درمیان پانچویں وکٹ کے لیے 196 رنز کی شاندار ناٹ آؤٹ ساجھے داری نے خراب شروعات کے بعد ہندوستان کی پوزیشن کو سنبھالتے ہوئے زمبابوے کے خلاف پول بی کے آخری میچ میں چھ وکٹوں سے جیت درج کرتے ہوئے جیت کے سلسلے کو جاری رکھا ۔دھونی اور رینا نے پانچویں وکٹ کے لیے 196 رنز کی ناٹ آؤٹ ساجھے داری کی جو موجودہ عالمی کپ میں ہندستان کی جانب سے سب سے بڑی شراکت ہے ۔کپتان دھونی نے چھکا لگا کر ٹیم کو ایک بار پھر جیت کی منزل تک پہنچایا ۔دھونی نے ناٹ آؤٹ 85 اور رینا نے ناٹ آؤٹ 110 رن کی بہترین اننگ کھیلی ۔ہندستان نے 48.4 اوورز میں آٹھ گیند باقی رہتے چار وکٹ کے نقصان پر 288 رنز بنا کر جیت درج کی ۔اس سے پہلے زمبابوے نے 48.5 اوورز میں تمام وکٹوں کے نقصان پر 287 رنز بنائے تھے ۔یہ مسلسل چھٹا میچ ہے جب ہندوستان نے مخالف ٹیم کو آل آؤٹ کیا ہے ۔اسی کے ساتھ چھ میچوں میں ہندستان نے 60 وکٹ کی تعداد مکمل کر لی ہے ۔ اپنے کیریئر کا آخری بین الاقوامی میچ کھیل رہے زمبابوے کے قائم مقام کپتان برینڈن ٹیلر کی تاہم جیت کے ساتھ الوداعی کی خواہش ادھوری رہ گئی لیکن ان کی 138 رنز کی شاندار اننگز نے ضرور ان کی وداعی کو جذباتی اور یادگار بنا دیا ۔ٹیلر نے 110 گیندوں میں 15 چوکے اور پانچ چھکے لگائے ۔ٹیلر کے کیریئر کی یہ آٹھویں سنچری ہے ۔وہ زمبابوے کی جانب سے ون ڈے میں تیسرے سب سے زیادہ رن بنانے والے کھلاڑی بن گئے ہیں ۔انہوں نے 167 میچوں میں 5258 رنز بنائے ہیں ۔اس کے علاوہ زمبابوے کی جانب سے ورلڈ کپ میں 400 رن بنانے والے وہ پہلے کھلاڑی بن گئے ہیں ۔اس سے پہلے ہندستانی تیز گیندبازوں نے تسلی بخش کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور زمبابوے کی رنز کی رفتار کو روکنے کی کوشش کی ۔محمد شمي نے نو اوورز میں 48 رنز پر تین وکٹ، امیش یادو نے 9.5 اوور میں 43 رن پر تین اور موہت شرما نے 10 اوورز میں 48 رن پر ایک وکٹ لیا ۔ لیکن آف اسپنر روی چندرن اشون بہت مہنگے ثابت ہوئے اور 10 اوورز میں 75 رنز پر ایک وکٹ لے سکے ۔اشون کی ون ڈے میں یہ سب سے مہنگی کارکردگی تھی ۔آخری بار انہوں نے 2011 میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 10 اوورز میں 74 رنز کی سب سے مہنگی اور مایوس کن کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا ۔ہندوستان کے لیے اس میچ کو پہلے ہی یک طرفہ سمجھا جا رہا تھا لیکن ٹورنامنٹ سے باہر ہو چکے زمبابوے نے عالمی کپ سے خوشگوار الوداعی کیلئے کوئی کسر نہیں چھوڑی اور اپنی طرف سے بلے بازی سے لے کر بولنگ تک میں کافی اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرکے ہندوستان کو چونکادیا ۔ہدف کا تعاقب کرنے اتری ٹیم انڈیا نے دیکھتے ہی دیکھتے 100 رنز کے اندر اپنے ٹاپ چار بلے بازوں روہت شرما (16)، شکھر دھون (04) وراٹ کوہلی (38) اور اجنکیا رہانے (19) کو سستے میں گنوا دیا ۔لیکن ہمیشہ کی طرح اس بار بھی مشکل صورتحال سے ہندستان کو نکالنے کا ذمہ کیپٹن کول دھونی نے نبھایا ۔اس میچ نے ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ کی یاد دلا دی جس میں دھونی نے آخری وقت میں ناٹ آؤٹ 45 رن کی اننگ کھیل کر جیت کی منزل تک پہنچایا تھا ۔چھٹے نمبر پر دھونی اور پانچویں نمبر پر رینا نے پھر ٹک کر چوکے اور چھکے لگا کر تابڑ توڑ رن بنائے ۔ دھونی نے 76 گیندوں میں آٹھ چوکے اور دو چھکے لگا کر ناٹ آؤٹ 85 اور رینا نے 104 گیندوں میں نو چوکے اور چار چھکے لگاکر ناٹ آؤٹ 110 رن بنائے ۔رینا نے ون ڈے کریئر کی پانچویں سنچری لگائی جس کے لئے انہیں مین آف دی میچ قرار دیا ۔دھونی اور رینا نے پانچویں وکٹ کے لیے 196 رنز کی ناٹ آؤٹ ساجھے داری کی جو موجودہ ٹورنامنٹ میں ہندستان کی سب سے بڑی شراکت ہے ۔اس سے پہلے دھون اور روہت نے آئرلینڈ کے خلاف پہلے وکٹ کے لیے 174 رنز کی شراکت کھیلی تھی ۔ہندستان کی یہ چھ میچوں میں چھٹی جیت ہے اور وہ پول بی میں سب سے زیادہ 12 پوائنٹس کے ساتھ سرفہرست ہے ۔ اس کا کوارٹرفائنل میں پول اے کی چوتھے نمبر کی ٹیم بنگلہ دیش سے ہونا طے ہے ۔زمبابوے کی جانب سے تناشے پنیگارا نے 8.4 اوور میں 53 رن پر سب سے زیادہ دو وکٹ اور سکندر رضا نے آٹھ اوور میں 37 رن پر ایک وکٹ لیا ۔رہانے رن آؤٹ ہوئے ۔میچ میں ہندستان کی شروعات کافی خراب رہی اور روہت محض 21 کے اسکور پر 16 رنز بنا کر پنیگارا کی گیند پر سکندر کو کیچ تھما بیٹھے ۔چھوٹے گراؤنڈ کا زمبابوے کے فیلڈرو ں نے بھرپور فائدہ اٹھایا اور محض چار گیند بعد اسی اسکور پر ہندستان کو دھون کے طور پردوسرا بڑا جھٹکا دے دیا ۔دھون چار رن بنا کر پنیگارا کی گیند پر بولڈ ہو گئے ۔وراٹ اور رہانے نے تیسرے وکٹ کے لئے 50 رن جوڑے ۔لیکن رہانے 19 رنز بنا کر رن آؤٹ ہو گئے ۔وراٹ کو سکندر نے بولڈ کرکے 38 رن پر پویلین بھیج دیا ۔ہندستان 22 ویں اوور تک 100 رنز پر بھی پہنچ نہیں سکا تھا لیکن دھونی اور رینا نے متوازن مظاہرہ کرتے ہوئے رن بنائے ۔ رینا نے 67 گیندوں میں 50 اور 95 گیندوں میں اپنے 100 رن پورے کئے ۔
اس سے پہلے زمبابوے نے خراب شروعات سے نکلتے ہوئے کپتان برینڈن ٹیلر (138) کی بہترین سنچری اور سین ولیمز (50) کی نصف سنچری کی بدولت ہندستان کے خلاف 287 رنز بنائے ۔ٹیلر نے اپنی شاندار سنچری میں 15 چوکے اور پانچ چھکے لگائے ۔ ٹیلر نے 110 گیندوں میں 138 رنز بنائے ۔ٹیلر کی شاندار اننگز کی مدد سے زمبابوے نے 48.5 اوور میں 287 رن کا اسکور کھڑا کیا۔زمبابوے کا آغاز خراب رہا اور اس نے 33 رن پر ہی اپنی تین وکٹ گنوا دیئے تھے لیکن اس کے بعد چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنے اترے ٹیلر اور سین ولیمز نے زمبابوے کی لڑکھڑاتي اننگز کو سنبھالا۔ولیمز کو آر اشون نے پویلین بھیجا۔ولیمز نے تین چوکے اور تین چھکے لگائے ۔زمبابوے کی طرف سے سب سے زیادہ شراکت ٹیلر اور کریگ ارون (27) کے درمیان ہوئی ۔دونوں نے پانچویں وکٹ کے لئے 109 رنز جوڑے ۔ٹیلر نے اپنی اننگز کی آخری 29 گیندوں میں شانداررن بنائے ۔انہوں نے 29 گیندوں میں سات چوکے اور پانچ چھکے کی مدد سے 70 رن بنائے ۔ٹیلر موہت شرما کی گیند پر شکھر دھون کو کیچ تھماکر چلتے بنے ۔زمبابوے کی طرف سے سکندر رضا نے 28 اور ریگس چکابوا نے بھی دس رنز بنائے ۔ہندستان کی طرف سے محمد شمی، امیش یادو اور موہت شرما نے بہترین گیند بازی کا مظاہرہ کیا۔ لیکن اشون اور رویندر جڈیجہ مہنگے ثابت ہوئے ۔اشون نے جہاں ون ڈے میں سب سے مہنگا مظاہرہ کیا تو جڈیجہ نے بھی مہنگا مظاہرہ کیا اور 10 اوورز میں 71 رنز دے کر کوئی وکٹ نہیں لیا۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment