Today: Sunday, September, 23, 2018 Last Update: 12:06 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

پاکستان آئرلینڈ میں کوارٹر فائنل کیلئے کرو یا مرو کا مقابلہ آج

 

2007کی اندوہناک یادیں پھر ہوں گی تازہ،آئر لینڈ سابقہ کارکردگی کو دہرانے کیلئے تیار

ایڈیلیڈ14مارچ(آئی این ایس انڈیا) مسلسل اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کر پا رہی پاکستانی ٹیم ورلڈ کپ کرکٹ پول بی کے کرو یا مرو کے مقابلے میں کل’جاٹ کلر‘ آئرلینڈ سے کھیلے گی۔گروپ مرحلے کے اس آخری لیگ میچ کی فاتح ٹیم کوارٹر فائنل میں پہنچے گی جبکہ ہارنے والی ٹیم کا رن ریٹ کی بنیاد پر ویسٹ انڈیز سے مقابلہ ہوگا۔ویسٹ انڈیز کو کل متحدہ عرب امارات سے کھیلنا ہے جسے جیتنے پر اس کے پاکستان اور آئرلینڈ کی طرح6 پوائنٹس ہو جائیں گے،اس سے یہ پول سے کوارٹر فائنل میں جانے والی چوتھی ٹیم کیلئے رسہ کشی تیز ہو جائے گی۔دفاعی چمپئن ہندوستان اور جنوبی افریقہ پہلے دو مقامات پر ہے جبکہ شریک میزبان آسٹریلیا، نیوزی لینڈ، سری لنکا اور بنگلہ دیش پول اے سے کوالیفائی کر چکے ہیں۔پاکستانی ٹیم کو اس میچ سے پہلے ورلڈ کپ 2007کی یادیں تازہ ہو گئی ہونگی جب آئرلینڈ نے اسے شکست دی تھی،اس میچ سے نہ صرف پاکستانی ٹیم ورلڈ کپ سے باہر ہو گئی تھی بلکہ کوچ باب وولمر بھی میچ کے ایک دن بعد اپنے ہوٹل کے کمرے میں مردہ پائے گئے تھے۔اس کے بعد سے دونوں ٹیموں نے ایک دوسرے کے خلاف چار ون ڈے کھیلے جن میں سے پاکستان نے تین جیتے اور چوتھا ٹائی رہا۔موجودہ عالمی کپ میں بھی دونوں ٹیموں نے پانچ میں سے تین میچ جیت کر6 پوائنٹس حاصل کئے ہیں۔پاکستان کو پہلے ہی میچ میں ہندوستان نے اور پھر ویسٹ انڈیز نے شکست دی۔مصباح الحق کی قیادت والی ٹیم نے اگرچہ زمبابوے، متحدہ عرب امارات اور جنوبی افریقہ کو شکست دے کر واپسی کی۔
دوسری طرف آئرلینڈ نے پہلے ہی میچ میں ویسٹ انڈیز کو 305رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے شکست دی،اس کے بعد متحدہ عرب امارات اور زمبابوے پر جیت درج کی لیکن ہندوستان اور جنوبی افریقہ سے ہار گئی۔پاکستانی ٹیم میں مصباح کے علاوہ کوئی بلے باز 50سے زیادہ کے اوسط سے رن نہیں بنا سکا،ٹیم نے صرف ایک بار 250سے زیادہ رن بنائے اور وہ بھی متحدہ عرب امارات کے خلاف۔پاکستان کے بلے بازی کوچ گرانٹ فلاور نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ بلے باز اچھی کارکردگی کریں جو ان کا کام ہے،وہ اس سے کہیں بہتر بلے بازی کر سکتے ہیں۔پاکستان کے اٹیک کا دار و مدار اس کے تیز گیند بازوں پر ہوگا جنہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا،بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز محمد عرفان، راحت علی اور وہاب ریاض نے تین تین وکٹ چٹکائے تھے۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment