Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:32 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

معجزہ کی امید میں کیویوں کے مدمقابل ہونگے بنگالی ٹائیگرس


ہیملٹن، 12 مارچ (یو این آئی) انگلینڈ کو شکست دے کر کوارٹرفائنل میں مقام بنا نے والی ٹیم بنگلہ دیش کا جمعہ کو عالمی کپ پول اے مقابلہ اپنے گروپ کی سب سے اوپر کی ٹیم اور موجودہ عالمی کپ میں خطاب کی بڑی دعویدار نیوزی لینڈ سے ہوگا جہاں وہ معجزہ کرنے کے مقصد سے اترے گی۔دونوں ہی ٹیمیں کوارٹرفائنل میں اپنی جگہ پکی کر چکی ہیں لیکن ناک آؤٹ سے پہلے دونوں کیلئے خود کو تیار کرنے کا یہ آخری موقع ہوگا۔ایڈیلیڈ میں اپنے گزشتہ میچ میں انگلینڈ کو معجزانہ انداز میں شکست دینے والی بنگلہ دیش کے حوصلے بلند نظر آ رہے ہیں۔اگرچہ بنگلہ دیش کی شاندار کارکردگی کے باوجود اس میچ میں نیوزی لینڈ کا پلڑا زیادہ بھاری نظر آ رہا ہے اور یہ یقینی ہے کہ گھریلو میدان پر کھیلنے کا اس کو فائدہ ضرور ملے گا۔نیوزی لینڈ اپنے ابتدائی پانچوں مقابلے جیت کر پول اے میں ٹاپ پر قابض ہے ۔ اگر بنگلہ دیش اس مقابلے میں نیوزی لینڈ کو شکست دے دیتا ہے تو وہ اپنے گروپ میں نو پوائنٹس کے ساتھ سری لنکا کے پیچھے پہنچ جائے گا اور کوارٹرفائنل میں گزشتہ چمپئن ہندوستان سے مقابلہ سے بچ جائے گا۔بنگلہ دیش نے نیوزی لینڈ کے میدان پر اسے کبھی بھی نہیں ہرا یاہے جبکہ عالمی کپ مشترکہ میزبان نیوزی لینڈ سات میچوں کی ون ڈے سیریز اپنے نام کر چکی ہے ۔اس کے علاوہ موجودہ ٹورنامنٹ میں وہ اپنے گروپ کی سب سے اوپر کی ٹیم ہے اور اپنے پانچوں مقابلے جیتی ہے ۔ اگرچہ اپنے کھلاڑیوں کی چوٹ کا شکار رہی نیوزی لینڈ کی ٹیم کے لیے تھوڑی مشکلات بڑھی ہیں۔ ٹیم کے فاسٹ بولر ایڈم ملنے کندھے کی چوٹ سے پریشان ہیں جبکہ کین ولیم کو کچھ دن پہلے بخار ہو گیا تھا۔بنگلہ دیش کے لیے یہ سنہری موقع ہے کہ وہ نیوزی لینڈ کو شکست دے کر کوارٹرفائنل میں ہندستان سے مقابلہ سے بچ جائے ۔بنگلہ دیش اپنے گزشتہ پانچ مقابلوں میں سے صرف ایک ہاری ہے جبکہ نیوزی لینڈ نے اب تک عالمی کپ میں ایک میچ بھی نہیں ہارا ہے ۔اس کے علاوہ اس نے ورلڈ کپ کے پانچوں میچوں میں حریف ٹیموں کے تمام دس وکٹ لیے ہیں اور پورے 50وکٹ ہیں۔اگرچہ نیوزی لینڈ کے مڈل آرڈر میں بلے بازوں کا دباؤ میں آ جانا پریشانی کی بات ہے ۔آسٹریلیا کے خلاف کھیلتے وقت ٹیم 151 رنز کے ہدف کا تعاقب کرتے وقت دباؤ میں آ گئی تھی اور صرف ایک وکٹ سے یہ میچ جیتی تھی۔راس ٹیلر پورے ورلڈ کپ کے دوران فارم میں نظر نہیں آئے ھے جبکہ گرانٹ الیوٹ نے ابھی تک پورے ٹورنامنٹ کے دوران 94 گیندوں کا سامنا کیا ہے وہیں لیوک روچي کل 36 گیندوں کا سامنا کر سکے ہیں۔بنگلہ دیش کے تیز گیند باز روبیل حسین پوری فارم میں نظر آ رہے ہیں اور انگلینڈ کے خلاف گزشتہ میچ میں اپنی ٹیم کو فتح دلانے میں انہوں نے اہم کردار نبھایا تھا۔چار وکٹ لے کر مین آف دی میچ روبیل سال 2013 میں ڈھاکہ میں نیوزی لینڈ کے خلاف کرکٹ سیریز میں ایک میچ میں ہیٹ ٹرک کے ساتھ 26 رن پر چھ وکٹ لے چکے ہیں۔ہیملٹن کے اسی میدان پر سابقہ [؟][؟]مقابلہ ہندستان اور آئرلینڈ کے درمیان ہوا تھا جس میں گزشتہ چمپئن کو 260 رنز کے ہدف کا تعاقب کرنے میں زیادہ پریشانی نہیں ہوئی تھی لیکن گیند بازوں کے لیے اس پچ پر اچھال ملنا تھوڑا مشکل ہوگا۔اگرچہ نیوزی لینڈ کے تجربہ کار گیندبازوں کے لئے سوئنگ حاصل کرنے میں زیادہ مشکل نہیں ہوگی۔اس کے علاوہ گھریلو میدان ہونے کا فائدہ بھی ٹیم کو ضرور ملے گا۔بنگلہ دیش کی میزبانی میں دونوں ٹیموں کے درمیان ون ڈے سیریز کھیلی گئی تھی جس میں بنگلہ دیش نے جیت درج کی تھی۔اسی میدان پر سال 2010 میں ٹیسٹ میچ میں برینڈن میک کولم اور مارٹن گپٹل نے چھٹے وکٹ کے لیے 339 رنز کی شراکت نبھائی تھی۔ اگر نیوزی لینڈ ٹیم یہ میچ جیت جاتی ہے تو وہ بغیر ایک میچ ہارے ناک آؤٹ اسٹیج میں جانے والی پہلی ٹیم بن کر تاریخ رقم کرے گی۔اس میچ کے لیے دونوں ٹیموں کی ممکنہ الیون اس طرح ہے : ۔نیوزی لینڈ : مارٹن گپٹل، برینڈن میک کولم (کپتان)، کین ولیم، راس ٹیلر، گرانٹ الیوٹ، کوری اینڈرسن، لیوک روچي (وکٹ کیپر)، ڈینیل ویٹوری، آدم ملنے / مشیل میک کلے گن، ٹم ساؤدی، ٹرینٹ بولٹ۔بنگلہ دیش:تمیم اقبال، امرالقیس، سومیہ سرکار ، محموداللہ ، شکیب الحسن، مشفق الرحیم (وکٹ کیپر)، شبیر الرحمن، مشرف مرتضی (کپتان)، عرفات سنی، روبیل حسین، تسکین احمد۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment