Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 06:08 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

افغانستان سے جیت کر وطن واپس لوٹنا چاہیں گے انگریز


سڈنی، 12 مارچ (یو این آئی) اپنے خراب دور سے گزر رہی اور عالمی کپ ٹورنامنٹ سے باہر ہونے والی انگلینڈ کا پول اے میں آخری مقابلہ جمعہ کو سڈنی کے میدان پر ایسوسی ایٹ ٹیم افغانستان سے ہوگا جہاں وہ جیت درج کرنے کے مقصد سے اترے گی۔عالمی کپ میں اب تک کی اپنی سب سے خراب کارکردگی کرنے والی ٹیم انگلینڈ اپنے گزشتہ میچ میں بنگلہ دیش سے شکست کھاکر ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی ہے ۔انگلینڈ کے بلے باز اور بالر اس بار کچھ خاص کمال دکھا نے میں کامیاب نہیں ہو پائے اور ٹیم اس بار عالمی کپ کوارٹرفائنل میں جگہ بنا نے میں بھی کامیاب نہیں ہو سکی۔وہیں دوسری طرف افغانستان بھی کوارٹرفائنل میں نہیں جا سکی ہے ۔جمعہ کو مقابلہ والی دونوں ٹیمیں ابھی تک اپنے پانچ مقابلوں میں سے صرف ایک ہی جیتی ہیں۔ کمال کی بات یہ ہے کہ دونوں ہی ٹیموں نے اپنے گروپ کی ایسوسی ایٹ ٹیم اسکاٹ لینڈ کو شکست دے دی ہے جو ٹورنامنٹ میں ایک میچ بھی نہیں جیت سکی ہے ۔انگلینڈ کو گزشتہ میچ میں بنگلہ دیش نے 15 رنز سے ہرایا تھا جبکہ افغانستان گزشتہ میچ میں نیوزی لینڈ سے ہاری تھی۔اپنے گزشتہ میچ میں بنگلہ دیش سے ہارنے والی ٹیم انگلینڈ کا اس عالمی کپ ٹورنامنٹ میں مظاہرہ بہت خراب رہا ہے ۔اس سے پہلے وہ سری لنکا کے ہاتھوں نو وکٹوں سے ہاری تھی جس کے بعد یہ صاف ہو گیا تھا کہ اس کے بلے بازوں کے ساتھ ساتھ گیند باز بھی فارم میں نہیں چل رہے ہیں اور کھلاڑیوں میں خود اعتمادی کی کمی ہے ۔سڈنی کے میدان پر مقابلہ والی دونوں ہی ٹیموں کے پاس گنوانے کے لیے کچھ نہیں ہوگا کیونکہ دونوں ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہو چکی ہیں۔اگرچہ افغانستان کے مقابلے انگلینڈ کی ٹیم زیادہ تجربہ کار ہے اور اس کے پاس یہ میچ جیتنے کے زیادہ موقع ہیں اور وہ اپنے گروپ کا آخری میچ جیت کر گھر لوٹنا چاہے گی۔امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ انگلینڈ کے کپتان ایون مورگن اس عالمی کپ کے بعد کپتانی چھوڑ دیں گے ۔اس کے علاوہ ٹیم کی خراب کارکردگی کی وجہ سے سخت تنقید برداشت کررہے ٹیم کے کوچ اینڈی مورس بھی اپنے عہدے کو چھوڑ سکتے ہیں۔دونوں ہی ٹیمیں اس سے پہلے آپس میں ایک بار بھی نہیں کھیلی ہیں۔افغانستان کے کوچ اینڈی مولس کا خیال ہے کہ ان کی ٹیم چاہے اس ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی ہو لیکن وہ اپنے آخری میچ میں اگر انگلینڈ کو ہرا دیتی ہے تو یہ صاف ہو جائے گا کہ ٹیم نے بہت کم وقت میں خود کو نکھارا ہے ۔اگرچہ ان کا خیال ہے کہ افغانستان اگلے چار سالوں کے دوران دیگر ممالک کے ساتھ کرکٹ سیریز کھیلے اور کچھ تجربہ حاصل کرے ۔انگلینڈ کے کرس ووکس اور معین علی کا اس میچ میں کھیلنا مشکوک سمجھا جا رہا ہے اور امید ہے کہ ان کی جگہ ٹیم میں شامل روی بوپارا اور جیمز ٹریڈویل کو جگہ مل سکتی ہے ۔اس کے علاوہ ٹیم تجربے کے طور پرا یلیکس ھیلس کو تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنے اتار سکتی ہے ۔سری لنکا اور اسکاٹ لینڈ کے خلاف شاندار گیند بازی کرنے والی ٹیم افغانستان کے گیند باز حامد حسن انگلینڈ کو سستے میں آؤٹ کرناچاہیں گے ۔افغانستان پہلی بار ون ڈے میچ میں انگلینڈ سے کھیلے گی۔اس سے پہلے دونوں ٹیمیں ایک بار ٹوئنٹی 20 ورلڈ کپ میچ میں آمنے سامنے رہی ہیں۔ افغانستان سڈنی کے میدان پر بھی اپنا پہلا ہی میچ کھیلے گی۔اس درمیان افغانستان کے کوچ اینڈی مولس نے کہاکہ ہم عالمی کپ میں سب کو چونکانے آئے تھے ۔سری لنکا اوراسکاٹ لینڈ کے خلاف ہم صحیح سمت میں تھے ۔لیکن پھر ٹاپ ٹیموں سے ہارنے کے بعد ہمارے خواب پورے نہیں ہوئے ۔لیکن انگلینڈ کے خلاف ہم جیت درج کرنے اتریں گے اور امید ہے کہ اپنی مہم میں کامیاب ہوں گے ۔اس میچ کے لیے دونوں ٹیموں کی ممکنہ الیون اس طرح ہے : ۔انگلینڈ:ایان بیل، ایلیکس ہیلس، جیمز ٹیلر، جو روٹ، ایون مورگن (کپتان)، جوس بٹلر، روی بوپارا، کرسجارڈن، اسٹورٹ بریڈ، جیمز ٹریڈویل، جیمز اینڈرسن۔افغانستان:جاوید احمدی، نوروز منگل ، اصغر استنک زئی ، سمیع اللہ شینواری، محمد نبی (کپتان)، نجیب اللہ زدران، افسرززئی (وکٹ کیپر)، گلبدن نائب، دولت زدران، حامد حسن، شاہ پور زدران۔

 

...


Advertisment

Advertisment