Today: Thursday, September, 20, 2018 Last Update: 02:17 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

سری لنکا کیلئے صورتحال بہتر بنانے کا موقع،اسکاٹ لینڈ سے مقابلہ آج

 

ہوبارٹ، 11 مارچ (یو این آئی) عالمی کپ کے کوارٹرفائنل میں جگہ بنا چکی سری لنکا کی ٹیم کے لیے بدھ کو اسکاٹ لینڈ کے خلاف ہونے والا مقابلہ پول اے میں اپنی پوزیشن بہتر بنانے کے لحاظ سے اہم موقع ہوگا جس سے وہ اپنے گروپ میں آخری نمبر پر آنے سے بچ سکے گی ۔بنگلہ دیش کی انگلینڈ پر جیت سے کوارٹرفائنل کی صورت صاف ہو چکی ہے ۔لیکن فی الحال تیسرے اور چوتھے مقام کی ٹیموں کو لے کر صورتحال کشمکش والی ہے ۔گروپ اے سے کوارٹرفائنل میں پہنچ چکی چار ٹیموں میں سے بنگلہ دیش سات پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر جبکہ سری لنکا چھ پوائنٹس کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے ۔اسکاٹ لینڈ چار میچوں میں تمام ہار کر آخری مقام پر ہے اور عالمی کپ سے باہر ہو چکی ہے اور اگر سری لنکا کے خلاف جیت درج کر لیتا ہے تو وہ تیسرے مقام پر پہنچ جائے گا ۔اس سے وہ شاید پول بی کی سب سے اوپر کی ٹیم ہندستان سے مقابلے سے بچ جائے گا ۔ایسے میں جہاں سری لنکا کے پاس حالت میں بہتری کے لحاظ سے یہ اہم موقع ہوگا تو وہیں اسکاٹ لینڈ کے پاس کھونے کے لئے کچھ نہیں ہے لیکن وہ سری لنکا کے منصوبوں پر پانی پھیر سکتی ہے ۔اگرچہ سری لنکا کی ٹیم کے لیے آگے کی راہ اتنی آسان بھی دکھائی نہیں دے رہی ہے ۔میچ سے ٹھیک پہلے اس کے بلے باز دنیش چنڈیمل زخمی ہو کر وطن واپس لوٹ گئے ہیں ۔گزشتہ میچ میں ریٹائرڈ ہرٹ ہونے سے پہلے چنڈیمل نے نصف سنچری بنائی تھی اور اب ان کی جگہ کشال پریرا کو لیا گیا ہے ۔اس سے پہلے اس کی عالمی کپ کی 15 رکنی ٹیم سے تین اور کھلاڑی گھر لوٹ گئے ہیں جبکہ رنگنا ہیرات پوری طرح فٹ نہیں ہے ۔سال 1999 میں عالمی کپ میں ڈیبوکرنے والی آئرلینڈ کی صورت میں اب تک کوئی بہتری نہیں آئی ہے اور ٹورنامنٹ میں کوئی میچ جیت نہیں سکی ہے ۔سری لنکا کے لیے اس میچ کو پہلے ہی یک طرفہ کہا جا سکتا ہے لیکن موجودہ عالمی کپ میں ایسوسی ایٹ ممالک کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے اسے کمتر نہیں لیا جاسکتا ہے جو بڑے اپ سیٹ کر رہی ہے ۔آئرش کھلاڑی کائل کوئٹزر نے عالمی کپ کے پریکٹس ٹورنامنٹ میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 96 رن کی شاندار اننگز کھیلی تھی ۔اس کے بعد ٹورنامنٹ میں انہوں نے انگلینڈ کے خلاف 71 اور بنگلہ دیش کے خلاف 156 رنز بنائے ۔ایسے میں سری لنکا کو جو کھلاڑی چیلنج دے سکتا ہے وہ یقینی ہی کوئٹزر مانے جا سکتے ہیں ۔آئرش بلے باز ون ڈے میں اپنے 1000 رن پورے کرنے سے بھی صرف 29 رن دور ہیں۔اسی کے ساتھ وہ اس ہندسے تک پہنچنے والے تیسرے بلے باز بن جائیں گے ۔میچ میں کسی سرپرائز کی امید بھی کی جا سکتی ہے کیونکہ دونوں ٹیم جولائی 2011 میں صرف ایک بار ایک دوسرے کا سامنا کر چکی ہیں اور ایسے میں دونوں ٹیموں کو ایک دوسرے کی طاقت اور کمزوریوں کا زیادہ احساس نہیں ہوگا ۔لیکن آئرلینڈ کے خلاف اس مقابلے میں سری لنکا نے 183 رنز کی بڑی جیت درج کی تھی اور وہ اس بار بھی ایسی ہی جیت کے ارادے سے اترے گی ۔سری لنکا کے تجربہ کار بلے باز کمار سنگاکارا اس وقت کمال کی فارم میں ہیں اور گزشتہ تین میچوں میں مسلسل تین سنچری لگا چکے ہیں ۔گیندباز لست ملنگا بھی فارم میں واپسی کر رہے ہیں اور آسٹریلیا کے خلاف ان کا مظاہرہ کمال کا رہا تھا ۔اس کے علاوہ ان کی فیلڈنگ میں بھی بہتری آئی ہے ۔سری لنکا کے لیے ٹیم میں متبادل کھلاڑیوں کے طور پر آئے نئے چہروں کو ٹیسٹ کرنے کا بھی یہ اچھا موقع ہوگا ۔چنڈیمل کی جگہ ٹیم میں لیے گئے پریرا کو اسکاٹ لینڈ کے خلاف اتارا جا سکتا ہے جبکہ ہیرات کی غیر موجودگی میں سرنگا لکمل کو حتمی الیون میں واپسی کا موقع مل سکتا ہے ۔اگر کپتان انجیلو میتھیوز چار ماہر گیند بازوں کو اتارتے ہیں تو امید ہے کہ دشمت چمیرا کو بھی کھیلنے کا موقع مل جائے ۔اس کے علاوہ اسکاٹ لینڈ بھی پچ اور حالات کے مطابق آخری الیون میں تبدیلی کر سکتا ہے ۔ ہوبارٹ کی پچ کی بات کریں تو رن بنانے کے لحاظ سے یہ بہترین ہے اور جنوری میں آسٹریلیا نے یہاں انگلینڈ کے خلاف 304 رن کے بڑا اسکورکا بھی آسانی سے پیچھا کر لیا تھا جبکہ آئرلینڈ اور زمبابوے کے میچ میں بھی دونوں ٹیموں نے بڑے اسکور بنائے تھے ۔پس امید کی جا سکتی ہے کہ سنگاکارا اس پچ پر سنچری کا چوکا مکمل کر لیں ۔سری لنکا کے کوچ مارون اٹاپٹو نے ٹیم کے آخری اوورز میں زیادہ رنز لٹانے کے باوجود ٹیم کا دفاع کیا اور میچ سے پہلے کھاکہ مجھے لگتا ہے کہ یہ کسی ٹیم کا عام مسئلہ ہے اور آسٹریلیا جیسی ٹیموں نے بھی آخری اوورز میں بہت رنز لٹائے ہیں۔ ہماری توجہ رن بنانے پر رہے گی۔ٹیم کو اپنی قیادت میں ایک بھی جیت دلانے میں ناکام رہے آئرش کوچ پریسٹن مومینسن نے بڑے اپ سیٹ کی امید ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ان کی ٹیم نے اب بھی اپنا 100 فیصد مظاہرہ نہیں کیا ہے اور انہیں امید ہے کہ وہ سری لنکا کو حیران کر سکتے ہیں ۔

...


Advertisment

Advertisment