Today: Thursday, November, 22, 2018 Last Update: 02:13 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

بلے بازوں نے بھری ہنکار،گرین شرٹس نے یو اے ای کو دھویا

 

احمد شہزاد ،حارث سہیل اور کپتان مصباح کی شاندار نصف سنچریوں کی مددسے339بناکر129 رنوں سے دی متحدہ
عرب امارات کو شکست،مسلسل دوسری جیت سے کواٹر فائنل کی امیدیں قائم،ٹورنامنٹ کے ٹاپ اسکوررانور کی محنت رائیگاں
نیپئر،04مارچ (یو این آئی) احمد شہزاد (93)،حارث سہیل (70)اور کپتان مصباح الحق (65 )کی شاندار نصف سنچریوں سے پاکستان نے متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کو بدھ کو 129 رن سے شکست دے کر عالمی کپ کے پول بھی میں اپنی دوسری جیت درج کرلی۔پاکستان نے چھ وکٹ پر 339رن کا عظیم اسکور بنانے کے بعد یو اے ای کو آٹھ وکٹ پر 210 رن پر روک دیا۔ پاکستان کی چار میچوں میں یہ دوسری جیت ہے اور وہ کوارٹرفائنل کی دوڑ میں لوٹ آیا ہے جبکہ یو اے ای کو ٹورنامنٹ میں مسلسل چوتھی ہار کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔پاکستان نے ٹورنامنٹ میں مسلسل دو میچ ہارنے کے بعد زمبابوے اور یو اے ای کو ہراکر مسلسل دو جیت درج کی ہے ۔پاکستان کی جانب سے سہیل خان، وہاب ریاض اور شاہد آفریدی نے دو دو وکٹ لے کر یو اے ای کو مقابلے میں کھڑا نہیں ہونے دیا۔ پاکستان کی اننگ میں بہترین 93 رن بنانے والے سلامی بلے باز شہزاد کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔یو اے ای کی ٹیم اپنے تین وکٹ پر 25 رن پر گنوا کر مقابلے میں جدوجہد کرتی رہی اور 50 اوور میں 210 رن تک ہی پہنچ سکی۔ شیمان انور نے 88 گیندوں میں چار چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 62 رن، خرم خان نے 54 گیندوں میں 43 رن ، احمد جاوید نے 33 گیندوں میں پانچ چوکے اور دو چھکے کی مدد سے 40 رن اور سوپنل پاٹل نے 68 گیندوں میں 36 رن بنائے ۔سہیل ، ریاض اور آفریدی نے دو، دو وکٹ لئے جبکہ راحت علی اور شعیب مقصود ایک ایک وکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے ۔اس سے قبل پاکستان کی طرف سے سلامی بلے باز ناصر جمشید نے اس آسان مقابلے میں بھی صرف چار رن ہی بنائے ۔احمد شہزاد اور حارث سہیل نے 160 رنوں کی موثر ساجھیداری کی ۔ 170 رنزوں کے مجموعی اسکور پر تھا حارث سہیل کے قدم لڑکھڑائے اور 70 رن کے ذاتی اسکور پر کیچ آوٹ ہوگئے ۔مجموعی اسکور میں چھ رن کے اضافے کے ساتھ احمد شہزاد کو بھی امارات کے فیلڈروں نے رن آوٹ ہونے پر مجبور کیا ۔ احمدکو اس وقت اس وقت سنچری بنانے میں بس ساتت رنوں کی حاجت تھی۔کپتان مصباح الحق اور صہیب مقصود نے نے اس موڑ پر رن سے زیادہ وکٹوں کو محفوظ رکھنے پر توجہ دی ۔ اس لئے رن بننے کی رفتار کا سست پڑ جانا فطری تھا۔ باوجودیکہ ایک مرحلے پر صہیب نے جارحانہ انداز بھی اپنایا اور دو شاندار چھکوں اور چار چوکوں کی مدد سے اپنی نصف سینچری کی طرف تیز پیش قدمی کی لیکن بات بگڑ گئی اور وہ 45 کے ذاتی اسکور پر کیچ آوٹ ہوگئے ۔انچاسویں اوور میں دو گیندوں پر پہلے عمر اکمل اور پھر کپتان مصباح الحق آوٹ ہوئے ۔ دونوں نے بالترتیب 16 اور 65 رن بنائے ۔شاہد آفریدی کو کھیلنے کے لیے صرف سات گیندیں ہی ملیں پھر بھی لیکن انھوں نے اپنا کھیل دکھاتے ہوئے دو چھکوں اور ایک چوکے کی مدد سے 21 رن بنا ئے اور اس طرح انہوں نے ایک روزہ میچوں میں اپنے آٹھ ہزار ذاتی رن کا سنگ میل عبور کر لیا۔وہاب ریاض کو ایک ہی گیند ملی جس پر چھکا لگا کر انہوں مجموعی اسکور کو اور بہتر بنانے میں مدد کی۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment