Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:06 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

کرکٹ اور بی سی سی آئی کی شبیہ سدھارنی ہے :انوراگ ٹھاکر


نئی دہلی،04؍مارچ (یواین آئی) ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کے نئے سیکرٹری انوراگ ٹھاکر کا ہدف کرکٹ اور بی سی سی آئی دونوں کی شبیہ کو بہتر کرنا ہے ۔انوراگ ٹھاکر نے بدھ کو یو این آئی سے خاص بات چیت میں کھا''میرے لیے عہدہ زیادہ اہم نہیں ہے بلکہ میرے لیے کھیل زیادہ اہم ہے ۔ میں چاہتا ہوں کہ عہدے کا صحیح استعمال کھیل کی شبیہہ کو بہتر بنانے کے لیے کروں ۔گزشتہ کچھ وقت میں کرکٹ اور بی سی سی آئی دونوں کی شبیہ کو جھٹکا لگا ہے اور اس وقت ہماری اولین ترجیح اس شبیہ کو بہتر بنانا ہے ۔بی سی سی آئی کی چنئی میں سالانہ عام میٹنگ میں سنجے پٹیل کو صرف ایک ووٹ سے شکست دے کر بورڈ کے نئے سیکرٹری بنے ہماچل پردیش کرکٹ ایسوسی ایشن (ایچ پی سی اے ) کے صدر ٹھاکر نے کھا''کرکٹ میں کھیل شائقین کا اعتماد مضبوط کرنا بھی ہمارے لئے ایک بڑا چیلنج ہے ۔یہ بڑا مقبول کھیل ہے جس کے ساتھ کچھ تنازعہ بھی جڑ جاتے ہیں۔ لیکن ہمارا کام یہ دیکھنا ہے کہ بی سی سی آئی کی شبیہ خراب نہ ہو اور کھیل کو اور مقبول کیسے بنایا جائے ''۔ٹھاکر نے کھا''پچھلے چند برسوں میں کرکٹ بدقسمتی سے تنازعات سے گھرا رہا ہے جبکہ ایسے تنازعات سے بچا جا سکتا تھا ۔ اس طرح کے تنازعہ ملک کے سب سے زیادہ مقبول کھیل میں نہ ہوں اس کے لیے ہمیں بہتراقدامات کرنے ہوں گے ۔انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں بہتری لانے کے بارے میں پوچھے جانے پر ٹھاکر نے کھا'ہندوستاني کرکٹ اور دنیا کی کرکٹ کی تاریخ میں کوئی گھریلو لیگ اتنی مقبول نہیں ہے جتنی آئی پی ایل ہوئی ہے ۔ اس نے گھریلو کھلاڑیوں کو بین الاقوامی کھلاڑیوں کے ساتھ کھیلنے کا موقع دیا ہے ۔ سابق کھلاڑیوں کو روزگار دیا ہے ۔ لاکھوں لوگوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرائے ہیں اور حکومت کو آمدنی بھی دی ہے ۔ ''ٹھاکر نے کھا''آئی پی ایل میں کچھ واقعات ایسے پیش آیا تھا جنہیں بہتر بنانے کی ضرورت ہے ۔ ویسے کرکٹ ہی نہیں ہر شعبے میں خامیاں آ جاتی ہیں جنہیں بہتر بنانے کی برابر کوشش کی جاتی ہے ۔ ہماری نئی باڈی ان تمام مسائل پر کام کرے گی تاکہ آئی پی ایل ایک بہتر شکل میں لوگوں کو دکھائی دے سکے ۔ ''آئی پی ایل میں سٹے بازی اور اسپاٹ فکسنگ کو لے کر تنازعات میں پھنسی چنئی سپرکنگس اور راجستھان رائلس کے معاملے پر موجودہ سکریٹری نے کہا '' ان موضوعات پر ہم بحث کریں گے اور آنے والی ملاقاتوں میں ان مسائل کو حل کیا جائے گا ۔ 74 سالہ جگموہن ڈالمیا کو صدر منتخب ہونے اور سرکاری ہدایات کی خلاف ورزی کے سوال پر ٹھاکر نے کہا’’میں جانتا تھا کہ آپ یہ سوال پوچھیں گے ۔ ڈالمیا جی 74 سال کے ہیں، میں 40 کا ہوں ۔ جب میں نے ڈالمیا جی کو صدر بنانے کی بات کہی تو مجھے 2001کی یاد آئی جب میں پہلی بار بورڈ کی سالانہ عام میٹنگ میں شامل ہوا تھا‘‘ ۔ مسٹر انوراگ ٹھاکر نے کہا’’میں سال 2000میں ایچ پی سی اے کا پہلی بار صدر بنا تھا اور 2001میں بورڈ کی میٹنگ میں پہلی بار شامل ہوا تھا۔ اس وقت ڈالمیا کی جیت میں میرا بھی کردار تھا ۔ ہمارا اور ان کا گزشتہ 15 برسوں کا ساتھ چلا آ رہا ہے اور ہم اس تال میل کو اسی طرح آگے بڑھائیں گے ۔ انہوں نے کہا’’جب صدر اور سیکرٹری تال میل کے ساتھ آگے بڑھیں گی تو آپ کو سب کچھ ٹھیک نظر آئے گا کیونکہ فیصلے دونوں ہی لیتے ہیں۔ انتخاب کے بعد بورڈ میں جو بھی فیصلے لئے جائیں گے وہ سب اتفاق رائے کے ساتھ لیے جائیں گے ۔ ہمارے لئے خیمے جیسے کوئی بات نہیں ہے ہمیں خیموں میں تقسیم نہیں ہونا ہے بلکہ ہمیں کرکٹ کو طاقتور بنانا ہے ۔ عالمی کپ میں ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی کارکردگی پر ٹھاکر نے کھا’’یہ اچھی بات رہی کہ ٹیم نے صحیح وقت پر اپنی لے پکڑی اور مسلسل تین میچ جیت کر کوارٹرفائنل میں اپنی جگہ یقینی کر لی ہے‘‘ ۔ اب ہمیں چھ تاریخ کے میچ کا انتظار ہے اور امید ہے کہ جیت کا یہ سلسلہ اس میچ میں بھی برقرار رہے گا ۔

 

...


Advertisment

Advertisment