Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 11:40 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

پاکستان کے پاس خود کو ثابت کرنے کا سنہری موقع

 

نیپئر، 03 مارچ (یو این آئی) زمبابوے کو ہرا کر ورلڈ کپ میں واپسی کرنے والی پاکستانی ٹیم کے پاس اگلے میچ میں خود کو ثابت کرنے کی سنہری موقع ہوگا جب وہ بدھ کو متحدہ عرب امارات کے خلاف نیپئر کے میدان پر نبرد آزما ہوگی۔اپنے ابتدائی تینوں مقابلوں میں ہارنے والی متحدہ عرب امارات کی ٹیم کو پاکستان کا سامنا کرنے سے پہلے تیاری کرنے کا اگرچہ زیادہ وقت نہیں ملا اور اس کے کھلاڑیوں نے گزشتہ چمپئن ہندوستان سے گزشتہ مقابلے کے بعد دو دن ہی مشق کی۔ پرتھ کے میدان پر عالمی کپ میچ میں ہندستان نے متحدہ عرب امارات کو شاندار نو وکٹ سے شکست دی تھی۔دوسری طرف زمبابوے کو شکست دینے کے بعد اعتماد سے بھری پاکستانی ٹیم کے کھلاڑی بغیر کوئی غلطی کئے اس میچ کو اپنے نام کرکے کوارٹرفائنل میں جانے کا اپنا راستہ صاف کرنا چاہیں گے ۔اپنے ابتدائی دونوں مقابلوں میں کراری شکست کا سامنا کے بعد پاکستان نے گزشتہ ایک مارچ کو برسبین میں ہوئے میچ میں زمبابوے کو ہرا کر اپنے ناقدین کو کرارا جواب دیا تھا۔گزشتہ میچ میں جیت درج کرنے کے بعد اعتماد سے بھرپور پاکستان کے لیے اس میچ میں بھی جیت درج کرنا اہم ہوگا۔اگر وہ کوارٹرفائنل کیلئے اپنا راستہ صاف کرنا چاہتی ہے تو اس کے تمام کھلاڑیوں کو مثبت اور متحد ہوکر کھیلنا ہوگا۔اگرچہ ٹیم کیلئے اچھی بلے بازی اور مضبوط شراکت ابھی بھی تشویش کا سبب بنا ہوا ہے کیونکہ اس کے اہم بلے باز مسلسل فلاپ ثابت ہوئے ہیں۔سال1992ورلڈ کپ فاتح پاکستان کے کرکٹ کے شائقین کے لیے یہ خوشی کی بات ہو سکتی ہے کہ نیوزی لینڈ کے نیپئر کے میدان پر اچھا اسکور بنانا سخت چیلنج نہیں ہوگا۔دوسری طرف متحدہ عرب امارات کے بلے بازوں کو محمد عرفان جیسے سات فٹ طویل اور وہاب ریاض جیسے فارم میں چل رہے گیند بازوں کا سامنا کرنا تھوڑا مشکل ضرور ہو گا۔حالانکہ اس کے دو دن بعد ہی سات فروری کو آکلینڈ کے میدان پر پاکستان کا مقابلہ جنوبی افریقہ سے ہوگا جہاں اسے اپنی طاقت کا مظاہرہ کرنا اہم ہوگا۔بدھ کو اس میدان پر آمنے سامنے آنے والی دونوں ہی ٹیموں نے گزشتہ پانچ ون ڈے مقابلوں میں سے صرف ایک ہی جیتا ہے ۔متحدہ عرب امارات گزشتہ تین میچ لگاتار ہاری ہے جبکہ پاکستان پچھلا ایک میچ جیتی ہے اور اس سے پہلے ہوئے چار میچوں میں مسلسل اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔متحدہ عرب امارات اور پاکستان اس سے پہلے سال 1994 اور 1996 میں نبرد آزما ہوئی ہیں جس میں دونوں ہی مقابلوں میں پاکستان نے مخالف ٹیم کو نو وکٹ سے شکست دی تھی۔نیپئر کے میدان پر ھوے نے والے اس مقابلے میں بلے باز شاہد آفریدی اپنے ون ڈے آٹھ ہزار رن پورے کرنے کے لیے بھی اتریں گے جو اس سے محض دو رن دور ہیں اور امید ہے کہ وہ اس میچ میں اسے مکمل کر لیں گے ۔میچ سے پہلے پاکستان کے کپتان مصباح الحق نے کہاکہ ہم ان کے زیادہ تر کھلاڑیوں کو جانتے ہیں اور وہ ہمارے ساتھ دبئی میں کھیلے ہیں۔ہماری ٹیم کے زیادہ تر کھلاڑی دبئی میں لیگ میچ بھی ان کے ساتھ کھیلے ہیں۔مجھے لگتا ہے کہ دونوں ہی ٹیموں کے کھلاڑی ایک دوسرے کو ان کی ٹیکنالوجی کو بہتر طریقے سے جانتے ہیں۔متحدہ عرب امارات کی ٹیم کے 15 میں سے نوکھلاڑی پاکستان میں پیدا ہوئے ہیں۔اس پر متحدہ عرب ٹیم کے فاسٹ بولر امجد جاوید نے کہا کہ ہم متحدہ عرب امارات کی نمائندگی کر رہے ہیں اور اس لئے اس بات کا کوئی فرق نہیں پڑتا کہ ایک پاکستانی پاکستان کے خلاف کھیل رہا ہے ۔ ہم اپنی ٹیم کی جانب سے کھیلتے ہیں اور پاکستان کے خلاف بھی اپنا صد فیصد دیں گے ۔پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان ہونے والے مقابلے کیلئے دونوں ٹیموں کی ممکنہ الیون اس طرح ہے :پاکستان :ناصر جمشید، احمد شہزاد، حارث سھیل، مصباح الحق (کپتان)، عمر اکمل (وکٹ کیپر)، شاہد آفریدی، صہیب مقصود، وہاب ریاض، سھیل خان، راحت علی / یاسر شاہ، محمد عرفان۔متحدہ عرب امارات:امجد علی، آندرے بیریگر، کرشناچندرن، خرم خان، سوپنل پاٹل (وکٹ کیپر)، شومان انور، روہن مصطفی / ناصر عزیز، امجد جاوید، محمد نوید، محمد توقیر (کپتان)، منجولا گروگے ۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment