Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:40 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

افغانستان پر جیت درج کرکے کوارٹر فائنل کی راہ آسان کرنے اتریں گے کنگارو

 

پرتھ، 03 مارچ (یو این آئی) عالمی کپ کی تاریخ میں سب سے زیادہ کامیاب ٹیم اور چار بار ٹورنامنٹ فاتح آسٹریلیا کا اگلا مقابلہ پرتھ کے میدان پر بدھ کو افغانستان سے ہونا ہے ۔عالمی کپ کی شریک میزبان آسٹریلوی ٹیم کے پاس افغانستان کو ہرا کر کوارٹرفائنل کیلئے کوالیفائی کرنے کا یہ سنہری موقع ہو گا۔اگرچہ 28فروری کو نیوزی لینڈ کے خلاف ہوئے گزشتہ میچ میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا اور اس سے پہلے بنگلہ دیش کے ساتھ میچ بارش کی نذرہو گیا تھا جس سے ٹیم پوائنٹ ٹیبل میں پیچھے ہو گئی ہے لیکن وہ افغانستان کے خلاف میچ جیتنے کی پوری کوشش کرے گی تاکہ کوارٹرفائنل میں پہنچنے کا راستہ صاف ہو سکے ۔آسٹریلیا کے ون ڈے کپتان مائیکل کلارک بھی چوٹ کے بعد ٹیم میں واپسی کر چکے ہیں جس کے بعد ٹیم میں اعتماد بڑھا ہے ۔اگرچہ گزشتہ مقابلے میں وہ کامیاب ثابت نہیں ہوئے تھے لیکن نیوزی لینڈ جیسی مضبوط ٹیم کو بھی ان کے خلاف جیت درج کرنے کے لیے سخت محنت کرنی پڑی تھی۔آسٹریلوی ٹیم میں فی الحال اوپنر آرون فنچ، سابق کپتان جارج بیلی، مائیکل کلارک، بریڈ ہیڈن، گلین میکسویل،ا سٹیون ا سمتھ، مچل اسٹارک اور ڈیوڈ وارنر جیسے کھلاڑی موجود ہیں جو ٹیم کو کسی بھی بحران سے نکالنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔دوسری طرف افغانستان کی ٹیم پہلی بار عالمی کپ میں کھیلنے اتری ہے اور محمد نبی کی قیادت میں ٹیم نے اسکاٹ لینڈ جیسی مضبوط ٹیم کو شکست دی ہے ۔افغانستان نے اب تک عالمی کپ میں تین میچ کھیلے ہیں جس میں اسے محض ایک جیت ہی حاصل ہوئی ہے لیکن اس کے باوجود اس کے حوصلے بلند نظر آ رہے ہیں۔نوروز منگل ، اصغر استنکزئی ، نجیب اللہ زدران، شاہ پور زدران اور عثمان غنی جیسے تجربہ کار کھلاڑیوں سے لیس افغانستان کی ٹیم بین الاقوامی کرکٹ میں کھیلنے کے لیے اعتماد سے بھری ہے اور مثبت ہوکر کھیل رہی ہے ۔اگرچہ آسٹریلیا جیسی عالمی چمپئن ٹیم سے کھیلنے سے پہلے ٹیم نے سخت محنت کی ہے ۔اس کے باوجود میدان پر ٹیم کے تمام کھلاڑیوں کو اپنا فی صد دینا ہوگا۔افغانستان کے کوچ اینڈی مولس کا خیال ہے کہ ان کی ٹیم پہلی بار عالمی کپ کی اپنی مہم میں اتری ہے اور آسٹریلیا کے خلاف وہ اب تک کی سب سے سخت مخالف ٹیم سے کھیلے گی۔ان کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا جیسی مضبوط اور عالمی کپ کی دعویدار ٹیم سے پہلی بار کھیلناافغانستان کے تمام کھلاڑیوں کو سب سے زیادہ تجربہ فراہم کرے گا۔ٹیم نے اسکاٹ لینڈ کے خلاف لاجواب کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور عالمی کپ میں ایک عدد کامیابی حاصل کی تھی لیکن بنگلہ دیش کے خلاف ہوئے ان کے پہلے مقابلے میں وہ ہار گئے تھے ۔مولس گزشتہ سات ماہ سے ٹیم کے کوچ ہیں اور انہوں نے افغانستاني کھلاڑیوں میں اعتماد پیدا کرنے کا کام بخوبی کیا ہے ۔میچ سے پہلے انہوں نے کہا کہ یہ محض آغاز ہے اور ان کی ٹیم بنگلہ دیش، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ جیسی ٹیموں کے خلاف کھیلے گی، اس سے تمام کھلاڑیوں کو تجربہ ملے گا جسے وہ آگے استعمال کرے گی۔اگرچہ دونوں ٹیمیں اس سے پہلے ایک بار بھی آمنے سامنے نہیں آئی ہیں اور عالمی کپ میں پہلی بار آسٹریلیا اور افغانستان کے کھلاڑی آمنے سامنے ہوں گے ۔پرتھ کے واکا میدان پر گیند بازوں کو خاصا فائدہ ہو سکتا ہے اور اس کے لیے مشیل اسٹارک اور مچل جانسن جیسے فاسٹ بولر اس کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی کوشش کریں گے ۔پرتھ کے میدان پر ہندوستان اور متحدہ عرب امارات کے درمیان ہوئے گزشتہ میچ میں ہندستان نے شاندار گیند بازی کرتے ہوئے مخالف ٹیم کو 102 رنز پر سستے میں نمٹا دیا تھا۔افغانستان نے ڈنیڈن کے میدان پر سری لنکا کے خلاف کھیلے گئے اپنے مقابلے میں مخالف ٹیم کے 51 رن پر چار وکٹ گرادیے تھے ۔اگرچہ مہیلا جے وردھنے کی سنچری نے میچ اپنی ٹیم کی جھولی میں ڈالا لیکن آسٹریلوی بلے بازوں کو افغانستان کے بولنگ اٹیک سے بچنا ہوگا۔تیز گیند باز حامد حسن اور دائیں ہاتھ کے اسپنر شاہ پورزدران اس میدان پر اپنی دھاردار بولنگ سے آسٹریلوی بلے بازوں کو پریشان کرنے کی بھرپور کوشش کریں گے ۔افغانستان کے بلے باز بھی اعتماد سے بھرے نظر آ رہے ہیں۔اگرچہ ان کامقابلہ آسٹریلیا کے تجربہ کار کھلاڑیوں سے نہیں کیاجا سکتا لیکن سمیع اللہ شینواري جیسے بلے باز بھی افغانستان کے پاس موجود ہیں جو اپنی ٹیم کو بحران سے نکالنے کا حوصلہ رکھتے ہیں۔شینواري نے اسکاٹ لینڈ کے خلاف 96 رنز کی شاندار فتح اننگز کھیلی تھی۔میچ سے پہلے شینواري نے کہاکہ مجھے امید ہے کہ ہم مخالف ٹیم کو سخت چیلنج دیں گے اور اس میچ کو آسان نہیں بننے دیں گے ۔ہماری ٹیم کے تمام کھلاڑیوں نے اس میچ کے لیے سخت محنت کی ہے اور ہم سب اپنا صد فیصد دینے کے لیے تیار ہیں۔ہم میچ جیتنے کے لیے اتریں گے اور ہمیں امید ہے کہ آپ کے اس مہم میں ہم کامیاب ہوں گے ۔افغانستان کے پاس بھی کوارٹرفائنل میں جانے کا موقع ہے ۔پوائنٹ ٹیبل میں آسٹریلیا سے صرف ایک قدم نیچے افغانستان کی ٹیم اگر یہ میچ جیت جاتی ہے تو ظاہر طور پر وہ بھی کوارٹرفائنل میں جانے کی اپنی مہم میں کامیاب ہو سکتی ہے ۔ٹیم نے اپنے ابتدائی مقابلوں میں بنگلہ دیش اور سری لنکا سے ہارنے کے بعد اسکاٹ لینڈ کو ہرا دیا تھا۔وہیں آسٹریلیا بھی افتتاحی میچ میں انگلینڈ کو شکست دینے کے بعد نیوزی لینڈ سے ہار گئی تھی اور ابھی تک ایک میچ ہی جیتی ہے ۔بنگلہ دیش کے خلاف اس کا مقابلہ بارش کی نذر ہوگیا تھا۔افغانستان اور آسٹریلیا کے درمیان ہونے والے ورلڈ کپ مقابلے کے لیے دونوں ٹیموں کی ممکنہ الیون اس طرح ہے :آسٹریلیا:مائیکل کلارک (کپتان)، آرون فنچ، جارج بیلی، جیمز فاکنر، بریڈ ہیڈن (وکٹ کیپر)، جوش ہیزل وڈ، اسٹیوا سمتھ، مچل جانسن، ڈیوڈ وارنر، مچل اسٹارک۔ افغانستان:جاوید احمدی، نوروز منگل ، اصغر استنک زئی ، سمیع اللہ شینواری، محمد نبی (کپتان)، نجیب اللہ زدران، افسر ززئی (وکٹ کیپر)، آفتاب عالم، دولت زدران، حامد حسن اور شاہ پور زدران۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment