Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:30 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ہندوستانی ٹیم کے بہترین فارم سے قطعی حیران نہیں ہوں:شاستری

 

پرتھ3مارچ (آئی این ایس انڈیا)ورلڈ کپ کرکٹ میں ہندوستانی ٹیم کے فارم میں لوٹنے سے بھلے ہی کئی کرکٹر حیران ہوں لیکن ٹیم ڈائریکٹر روی شاستری نے کہا کہ انہیں کھلاڑیوں کی صلاحیت پر مکمل اعتماد تھا اور ابھی تک کی کارکردگی قابل تعریف رہی ہے۔ورلڈ کپ سے پہلے ہندوستانی ٹیم آسٹریلیا کے دورہ پر ایک بھی میچ نہیں جیت سکی تھی اور اسے مضبوط دعویداروں میں شمار نہیں کیا جا رہا تھا۔مہندر سنگھ دھونی کی ٹیم نے اگرچہ پاکستان اور جنوبی افریقہ پر دو شاندار جیت درج کی اور اب تین میچوں میں تین جیت کے ساتھ اس کا پول بی کی ٹاپ ٹیم کے طور پر کوارٹر فائنل میں داخلہ طے ہے۔شاستری نے کہا کہ میں بالکل بھی حیران نہیں ہوں،اس شاندار آغاز پر مجھے حیرانی کیوں ہوگی،مجھے کھلاڑیوں پر اور ان کی صلاحیت پر مکمل اعتماد ہے۔انہوں نے کہا کہ کھلاڑیوں نے گزشتہ دو میچوں میں اپنی صلاحیت کے مطابق کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے،اگر آپ مجھ سے پوچھیں تو ابھی تک کی کارکردگی توقع کے مطابق رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ سہ رخی سیریز کی خراب کارکردگی کے بعد وقفہ ٹیم کیلئے نعمت ثابت ہواہے۔انہوں نے کہا کہ سہ رخی سیریز کھیل کر ٹیم ذہنی طور پر تھکی ہوئی تھی،کھلاڑیوں کو نئے سرے سے توانائی کا جمع کرنی ضروری تھی،کرکٹ سے وقفہ ان کیلئے بہتر ثابت ہوا۔فیلڈنگ میں ہندوستانی کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے شاستری نے اسے دنیا کی سب سے فٹ ٹیموں میں سے ایک قرار دیا۔شاستری نے کہا کہ میں بہت زیادہ پیچھے کی طرف نہیں دیکھتا اور نہ ہی بہت آگے کو دیکھتا ہوں،میں یہ پورے دعوے سے کہہ سکتا ہوں کہ یہ گزشتہ کئی سالوں میں سب سے بہترین فیلڈنگ کرنے والی ہندوستانی ٹیم ہے،ہندوستان کے پاس کچھ شاندار فیلڈر ہیں اور بین الاقوامی کرکٹ میں سب سے فٹ فیلڈروں میں سے ہیں۔اسٹار بلے باز وراٹ کوہلی کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ آسٹریلوی سرزمین پر ہندوستان کا بہترین کھلاڑی ثابت ہوا ہے۔یہ پوچھنے پر کہ کیا کوہلی بین الاقوامی کرکٹ کے سارے بلے بازی ریکارڈ توڑ دے گا؟انہوں نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ اس پر اکیلے بہت زیادہ بوجھ ڈالنا ٹھیک نہیں،اسے کھل کر کھیلنے کا موقع ملنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ جہاں تک میرا سوال ہے تو سچن تندولکر اور وی وی ایس لکشمن جیسے بلے بازوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے میں نے آسٹریلوی سرزمین پر وراٹ جیسی کارکردگی دکھانے والا کوئی ہندوستانی بلے باز نہیں دیکھا۔شاستری نے کہا کہ مجھے ایسا ایک ہندوستانی بلے باز بتاؤ جس نے چار ٹیسٹ میچوں میں چار سنچری بنائی ہو،اس نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔دھونی اور کوہلی کے درمیان اختلافات کی خبروں کو انہوں نے مسترد کیا۔انہوں نے کہا کہ میرے پاس اس فالتو کی بکواس سننے کا نہ تو وقت ہے اور نہ ہی ضبط،کچھ لوگ یہ احمقانہ باتیں پھیلا رہے ہیں،مجھے یا کھلاڑیوں کو اس سے فرق نہیں پڑتا۔
انہوں نے کہا کہ اگر کسی کو لگتا ہے کہ اسے اپنی توانائی ان مسائل پرضائع کرنی چاہیے تو وہ ایسا کرے،کھلاڑیوں کو اس کی پرواہ نہیں ہے کیوں کہ وہ رات کو پوری نیند لیتے ہیں۔یہ پوچھنے پر کہ ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی کمان کس کے ہاتھ میں ہے؟ شاستری نے صاف طور پر کہا کہ دھونی فیصلے لیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مہندر سنگھ دھونی ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان ہیں،وہ گزشتہ 8 سالوں سے کپتان ہیں اور کافی فعال بھی ہیں،وہ آگے جاکر قیادت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ون ڈے کرکٹ میں وہ بہترین کھلاڑی ہیں،انہوں نے ہندوستان کیلئے میچ جیتے ہیں اور ڈریسنگ روم میں ان کا کافی اچھا اثر ہے،انہیں اپنے ساتھیوں سے عزت ملی ہے کیونکہ وہ اچھے کپتان ہیں۔شاستری نے درمیانے تیز گیند باز موہت شرما کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ مجھے دوسروں کے بارے میں نہیں پتہ لیکن موہت کی کارکردگی سے میں حیران نہیں ہوں،میں نے اسے پہلے انگلینڈ میں دیکھا تھا اور میں اس سے کافی متاثر ہوا، اس نے موقعے کا پورا فائدہ اٹھایا ہے،مجھے اپنے تیز گیند بازوں پر فخر ہے۔یہ تینوں 140کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گیند ڈال سکتے ہیں،ہم مخالف گیندبازوں کی تو تعریف کرتے ہیں لیکن اپنے کھلاڑیوں کو داد نہیں دیتے۔

 

...


Advertisment

Advertisment