Today: Wednesday, November, 14, 2018 Last Update: 11:00 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

عالمی کپ میں افغانستان کی تاریخی جیت


ڈنیڈن، 26 فروری (یو این آئی )سمیع اللہ شینواري (96) کے ون ڈے کیریئر کی بہترین اننگز اور اس سے پہلے شاہ پور زدران (38 رن پر چار وکٹ)کی بدولت ایسوسی ایٹ ملک افغانستان نے جمعرات کو عالمی کپ گروپ اے میں اسکاٹ لینڈ کے خلاف ایک وکٹ سے اپنی تاریخی جیت درج کرکے ٹورنامنٹ میں کھاتہ کھول لیا ۔عالمی کپ ٹورنامنٹ میں افغانستان کی یہ پہلی جیت ہے ۔شینواري نے 147 گیندوں میں سات چوکے اور پانچ چھکے لگا کر 96 رنز کی اننگزکھیلی ۔لیکن وہ پہلی سنچری سے صرف چار رن دور رہ گئے وہ نویں بلے باز کے طور پر آؤٹ ہوئے ۔حالانکہ کریئر کی بہترین اننگز کی بدولت انہوں نے ٹیم کو عالمی کپ میں اس کی پہلی جیت دلا کر تاریخ ضرور رقم کردی ۔ورلڈ کپ ٹورنامنٹ کی تاریخ میں یہ پانچواں موقع ہے جب کسی ٹیم نے ایک وکٹ سے جیت درج کی ہو ۔آخری بار سال 2007 عالمی کپ میں دو بار اور سال 1987 اور 1975 میں ایک ایک بار ایسا ہوا جب کسی ٹیم نے ایک وکٹ سے دلچسپ جیت درج کی ۔میچ میں افغانستان نے ٹاس جیت کر پہلے اسکاٹ لینڈ کو بیٹنگ کا موقع دیا ۔افغان گیند بازوں نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسکاٹ لینڈ کو 50 اوورز میں 210 کے اسکور پر ڈھیر کر دیا ۔اس کے بعد ہدف کا تعاقب کرنے اتری ٹیم نے اگرچہ کم وقفے پر اپنے وکٹ گنوائے لیکن اس نے آخری وقت میں نویں وکٹ کے لیے 60 رنز کی اہم شراکت کی اور 49.3 اوور میں 211 رن بنا کر جیت اپنے نام کرنے میں کامیاب رہی ۔افغانستان کی جانب سے حالانکہ دو بلے باز شینواري (96) اور اوپنر جاوید احمدی (51) ہی بڑی اننگز کھیل سکے ۔لیکن ان کی یہ بہترین اننگ ٹیم کو عالمی کپ ٹورنامنٹ میں پہلی جیت دلانے کے لیے کافی ثابت ہوئی ۔اسکاٹ لینڈ کی جانب سے رچي بیرگٹن نے 10 اوورز میں 40 رن پر سب سے زیادہ چار وکٹ لیے ۔جوش ڈیوی کو 10 اوور میں 34 رن پر دو، الیکزینڈرایونز کو 10 اوورز میں 30 رن پر دو وکٹ اور ماجد حق کو 10 اوور میں 45 رن پر ایک وکٹ ہاتھ لگا ۔پول اے میں اپنی اس دلچسپ کامیابی کے ساتھ افغانستان دو پوائنٹس لے کر چوتھے نمبر پر پہنچ گیا ہے جبکہ اسکاٹ لینڈ تینوں میچ ہار کربغیر کسی پوائنٹس کے ساتھ ساتویں اور آخری نمبر پر ہے ۔سمیع اللہ کو اس میچ ونر اننگز کے لیے مین آف دی میچ منتخب کیا گیا ۔شے نواري نے آٹھویں وکٹ کے لیے دولت زدران کے ساتھ آٹھویں وکٹ کے لیے 35 رنز اور حامد حسن کے ساتھ نوویں وکٹ کے لیے 60 رنز کی قیمتی شراکت کی ۔دلچسپ ہے کہ ایک وقت افغان ٹیم محض 97 رنز پر اپنے سات اہم وکٹ گنوا چکی تھی ۔لیکن پھر تنہا شینواري نے اپنے ون ڈے کیریئر کی بہترین اننگز کھیل کر ٹیم کو جیت دلائی ۔شینواري کی ون ڈے میں آخری بہترین اننگز 2014 میں متحدہ عرب امارات کے خلاف ناٹ آؤٹ 82رنز رہی تھی ۔ شینواري کے افغانستان کی جانب سے 37 اننگز میں 1194 رنز ہو گئے ہیں جس میں نو نصف سنچری شامل ہیں ۔وہ اپنی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ نصف سنچری اور ون ڈے میں سب سے زیادہ رن بنانے والے کھلاڑی بن گئے ہیں ۔28 سالہ شینواري جب نوویں بلے باز کے طور پر 96 کے اسکور پر آؤٹ ہوئے تو اس وقت ٹیم کو جیت کے لیے 19 گیندوں میں 19 رنزکی ضرورت تھی ۔اس وقت ایک بار پھر اسکاٹ لینڈ میچ میں واپسی کرتا دکھائی دے رہا تھا لیکن آخری وکٹ کے لیے حامد حسن (ناٹ آؤٹ 15)اور شاہ پور زدران (ناٹ آؤٹ 12) نے ناٹ آؤٹ 19 رن کی اہم ساجھے داری کرکے ٹیم کے جیت کی عبارت لکھ دی ۔حسن نے اپنی 39 گیندوں کی اننگز میں ایک چوکا، زدران نے اپنی اننگز میں 10 گیندوں میں دو چوکے لگائے ۔اس سے پہلے نصف سنچری لگانے والے اوپنر احمدی نے 51 گیندوں میں آٹھ چوکے لگا کر51 رن کی اننگ کھیلی ۔اس سے پہلے اسکاٹ لینڈ نے عالمی کپ ٹورنامنٹ میں پہلی بار 200 سے زیادہ کا اسکور بنایا ۔ آخری بار سال 2007 میں اسکاٹش ٹیم نے جنوبی افریقہ کے خلاف 186 کا اسکور بنایا تھا جو اس کا ورلڈ کپ میں سب سے بڑا اسکور تھا ۔لیکن کپتان محمد نبی کی بہترین اعتماد والی افغان ٹیم نے کمال کی گیند بازی کے دم پر اسکاٹ لینڈ کے بلے بازوں کو قابو میں رکھا ۔بائیں ہاتھ کے تیز گیند بازشاہ پور زدران نے 10 اوورز میں 38 رنز پر سب سے زیادہ چار وکٹ لے کر اسکاٹ لینڈ کو کنٹرول میں رکھا ۔ٹیم کے دوسرے بولر دولت زدران نے بھی کمال کی گیند بازی کرتے ہوئے 10 اوور میں 29 رن پرتین وکٹ لیے ۔دولت زدران نے جہاں اسکاٹ لینڈ کے ٹاپ آرڈر کو نمٹایا وہیں شاہ پور زدران نے اسکاٹ لینڈ کے نچلے آرڈر کو نمٹا دیا ۔حامد حسن، گلبدن نائب اورمحمد نبی نے ایک ایک وکٹ حاصل کیا ۔اسکاٹش ٹیم اپنے تین وکٹ 40 رن پر گنوانے کے بعد پورے 50 اوور تک ٹکے رہنے کی جدوجہد کرتی رہی ۔میٹ ماچن اور نویں نمبر کے بلے باز ماجد حق نے سب سے زیادہ 31۔31 رن بنائے جبکہ 10 ویں نمبر کے بلے باز ایونز نے قیمتی 28 رنز بنا کراسکاٹ لینڈ کو آٹھ وکٹ پر 144 رن سے باہر نکالتے ہوئے 210 تک پہنچایا ۔ایونز آخری بلے باز کے طور پر آؤٹ ہوئے ۔اوپنر کائل کوئتجر نے 25، رچي بیرگٹن نے 25 اور کپتان پریسٹن مومسین نے 23 رن بنائے ۔اسکاٹ لینڈ کے اسکور میں اضافی 25 رنز کا بھی تعاون رہا جس میں وائڈ کا اسکور 12 تھا ۔حق اور ایونز نے نویں وکٹ کے لیے 62 رنزکی اہم شراکت کی۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment