Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:07 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

گیل کے طوفان کے سامنے ہوگی چوکرس کی سخت آزمائش


سڈنی، 26 فروری(یو این آئی )ہندستان کے ھاتھوں ملی شکست کے بعد نفسیاتی دباؤ سے گزر رہی جنوبی افریقہ کو یہاں عالمی کپ گروپ بی کے میچ میں جمعہ کو بااثر فارم میں چل رہی ویسٹ انڈیز کی ٹیم اور جارح اوپنر کرس گیل کے طوفان کے سامنے سخت آزمائش سے گزرنا ہوگا ۔چوکرس کے نام سے بدنام ہو چکی لیکن خطاب کے مضبوط دعویداروں میں شامل جنوبی افریقہ کو ہندستان کے ہاتھوں ملی ہار سے گہراجھٹکا لگا تھا اور اب اس اہم میچ میں اس کے سامنے سب سے بڑا چیلنج گیل نام کے طوفان کا ہوگا جنہوں نے گزشتہ میچ میں ون ڈے کی سب سے تیز رفتار ڈبل سنچری لگائی تھی۔جنوبی افریقہ کے سامنے اس کے علاوہ کپتان اے بی ڈیولیرس پر پڑے دباؤ کا بھی چیلنج ہوگا جو ہندوستان کے خلاف دھیمے اوور ریٹ کی وجہ سے نفسیاتی دباؤ میں آ چکے ہیں ۔اگر ڈیولیرس ایک اور میچ میں اس جرم کے غلطی کا شکار ہوتے ہیں تو انہیں پھر ایک میچ کا معطلی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔خطاب کے مضبوط دعوے دار جنوبی افریقہ نے اپنے پہلے میچ میں زمبابوے کو ہرا کر ورلڈ کپ میں اپنی مہم کی شاندار شروعات کی تھی لیکن میلبورن میں گزشتہ چمپئن ہندوستان کے ہاتھوں ملی 130 رنز کی کراری ہار سے اس کی تیاریوں کو تگڑا جھٹکا لگا ہے ۔ٹیم کے کھلاڑی کسی بھی حال میں ویسٹ انڈیز کو ہرا کر اپنا حوصلہ برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے ۔لیکن کیریبین ٹیم مسلسل دو میچ جیتنے کے بعداپنی فارم میں واپس آ چکی ہے اور گیل کی خطرناک فارم جنوبی افریقہ کے لیے خطرے کی گھنٹی ہے ۔جنوبی افریقہ کے اہم بلے باز ہاشم آملہ نے بھی اپنی ٹیم کے کھلاڑیوں کو ہوشیار کیا ہے کہ ہندستان کے خلاف میچ میں ملی شکست کو بھلا کر انہیں اگلے میچوں پر اپنی توجہ مرکوز کرنی ہوگی۔ جنوبی افریقہ کا حوصلہ گزشتہ آٹھ سالوں میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 16-1 کے ریکارڈسے اونچا ہو سکتا ہے ۔جنوبی افریقہ نے کیریبین ٹیم سے 2007 کے بعد سے 16 میچ جیتے ہیں اور ایک میچ ہارا ہے ۔جنوبی افریقہ کاعالمی کپ میں ویسٹ انڈیز کے خلاف 3-2 کا ریکارڈ ہے ۔ڈیولیرس نے میچ کے موقع پر کھا کہ میں مانتا ہوں کہ مجھ پر دباؤ ہے اور ہم تمام اس بات کو جانتے ہیں ۔ہم اس پر بحث بھی کر چکے ہیں لیکن فی الحال ہماری توجہ اس مسئلے سے زیادہ اپنی فارم واپس حاصل کرنے پر لگی ہوئی ہے ۔ہمارے کھلاڑیوں کو اپنی رفتار کو بڑھاناہوگا ۔یہ صرف بلے بازوں کی ہی نہیں بلکہ گیندبازوں کی بھی ذمہ داری ہوگی ۔ویسٹ انڈیز کے خلاف اس میچ میں ہمیں اپنی کارکردگی کی سطح کوبلند کرناہوگا ۔ڈیولیرس اور آملہ ویسٹ انڈیز کے خلاف چار چار سنچری لگاچکے ہیں۔ لیکن اس مقابلے میں پوری دنیا کی نگاہیں صرف اور صرف گیل پر لگی ہوں گی کہ زمبابوے کے خلاف 215 رنز بنانے والے گیل جنوبی افریقہ کے تیز حملہ کے سامنے کیا کمال دکھاتے ہیں ۔ گیل کاجنوبی افریقہ کے خلاف گزشتہ 13 ون ڈے اننگز میں 20.69 کا معمولی اوسط رہا ہے اور مورن مورکل چار بار گیل کو آؤٹ کر چکے ہیں۔ویسٹ انڈیز کا دار و مدار اس میچ پر گیل کی کارکردگی پر ٹکا رہے گا ۔حالانکہ مارلون سیمؤیلز کو بھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا جنہوں نے زمبابوے کے خلاف شاندار سنچری بنائی تھی ۔ اس بات میں کہیں کوئی دو رائے نہیں ہے کہ اپنے پہلے میچ میں آئرلینڈ سے شکست کا شکار بنی ویسٹ انڈیز ٹیم نے اگلے دو مقابلوں میں پاکستان اور زمبابوے کو بڑے فرق سے روندکر ٹورنامنٹ میں واپسی کی ہے ۔زمبابوے کے خلاف میچ میں تاریخی ڈبل سنچری بنانے والے بائیں ہاتھ کے بلے باز کرس گیل کی صحیح وقت پر زبردست واپسی سے ٹیم جوش سے لبریز نظر آ رہی ہے اور جنوبی افریقہ کو ہرا کراپنی فتح کی مہم جاری رکھنے کے ارادے سے میدان میں اترے گی ۔ویسٹ انڈیز اگراس میچ کو جیت جاتا ہے تو اس کا کوارٹرفائنل میں مقام پکا ہو جائے گا ۔ویسٹ انڈیز کو جنوبی افریقہ کے پاکستانی نژاد لیگ اسپنر عمران طاہر سے ہوشیار رہنا ہوگا جوکیریبین ٹیم کے خلاف گزشتہ چار میچوں میں 12 وکٹ لے چکے ہیں ۔ ڈیل اسٹین نے اس ٹیم کے خلاف 12 میچوں میں 19 وکٹ اور مورکل نے 12 میچوں میں 22 وکٹ لئے ہیں ۔ اگریہ گیندباز گیل نامی طوفان کو تھام لیتے ہیں تو جنوبی افریقی ٹیم اپنی فارم میں واپس آجائے گی ۔

 

...


Advertisment

Advertisment