Today: Tuesday, November, 13, 2018 Last Update: 10:33 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

شمی نے ثابت کیا ’ مسلمان پہلے ہندوستانی ہوتے ہیں‘ : شمی کے والد کا اظہارخیال

 

لکھنؤ،17فروری(آئی این ایس انڈیا)اتر پردیش کے امروہہ ضلع میں واقع سہس پور علی نگر گاؤں میں اپنے تین کمرے کے گھر میں بیٹھے محمد شمی کے والد محمد توصیف اب بھی اس منظر کو بھول نہیں پا رہے ہیں کہ کس طرح ان کے بیٹے نے ایڈیلیڈ میں اتوار کو ایک کے بعد ایک چار پاکستانی بلے بازوں کو پولین بھیج کر ہندوستان کی جیت میں اہم کردار ادا کیا۔اتوار کو شمی کا خاندان ایک شادی تقریب میں حصہ لینے کے لئے سنبھل میں تھا لیکن تمام لوگ میچ دیکھنے کے لئے ٹی وی سے چپکے تھے اور بغیر ایک بھی گیند مس کئے 24سالہ شمی کی گیند بازی دیکھ رہے تھے۔شمی نے اس میچ میں 35رنز دے کر 4وکٹ حاصل کئے۔ توصیف نے پیر کو کہاکہ کیا آپ ہندوستانی کے احساس کا تصور کر سکتے ہیں۔یہ ایک جنگ جیتنے جیسا ہے-میرا بیٹا ایک بہادر فوجی کی طرح لڑا۔آج میں فخر کے ساتھ کہہ سکتا ہوں کہ شمی کی کارکردگی نے ثابت کر دیا کہ ہندوستانی مسلم پہلے ہندوستانی ہیں بعد میں مسلم ۔ان میں حب الوطنی کا وہی جذبہ ہوتا ہے۔توصیف نے کہا کہ ان کا خواب اپنے بیٹے کو ورلڈ کپ میں پاکستان کے خلاف کھیلتے دیکھنے کا تھا۔ہندوستان کی ٹیم میں میرا بیٹا ورلڈ کپ میں پاکستان کے خلاف کھیلے یہ خواب اب سچ ہو گیا ہے۔12 ایکڑ زمین کے مالک توصیف تین بیٹوں اور ایک بیٹی کے والد ہیں۔انہوں نے اپنے دوسرے بیٹے (شمی) کی صلاحیت کو بہت جلد ہی پہچان لیا تھا۔انہوں نے کہاکہ میں کرکٹ کا زبردست فین ہوں اور میں نے اپنے بیٹے کو اسے کھیلنے کے لئے حوصلہ افزائی کی۔انہوں نے کہاکہ اس نے بچپن میں ہی ایک گیندباز کے طور پر زبردست صلاحیت دکھائی۔اس کی طاقت اس کا فوکس ہے۔مجھے صرف اس کی صلاحیت کو سپورٹ کرنے کی ضرورت تھی۔پاکستان پرہندوستان کی فتح کے بعد شمی کی ماں بھی اپنی خوشیاں نہیں چھپا پائیں۔انہوں نے کہاکہ مجھے کرکٹ میں کبھی بھی دلچسپی نہیں رہا لیکن جب سے شمی نے کھیلنا شروع کیا میں نے ایک بھی میچ مس نہیں کیا۔کئی بار ایسا بھی ہوتا ہے کہ مجھے یہ نہیں پتہ ہوتا کہ شمی کس ٹیم سے اور کس کے خلاف کھیل رہا ہے۔لیکن مجھے شمی کو کھیلتے دیکھنا اچھا لگتا ہے۔ہندوستان اور پاکستان میچ کا ہم سب بے صبری سے انتظار کر رہے تھے۔مجھے خوشی ہے کہ اس نے ملک کو فخر کیا۔شمی کے والد بتاتے ہیں کہ پہلے ہمارے گاؤں کے کچھ لوگ ہندوستان اور پاکستان میچ کے دوران پاکستان کی حمایت کرتے تھے لیکن جب سے شمی نے کھیلنا شروع کیا ہے تب سے ہر کوئی ہندوستان کی حمایت کرتا ہے۔

...


Advertisment

Advertisment