Today: Wednesday, November, 14, 2018 Last Update: 10:43 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

نیوزی لینڈ کو اسکاٹ لینڈ سے رہنا ہوگامحتاط


ڈونیڈن، 16 فروری (یو این آئی) آئرلینڈ نے جس دھماکہ خیز انداز میں ویسٹ انڈیز کی مضبوط ٹیم کو پٹخنی دی ہے ،اسے دیکھتے ہوئے مشترکہ میزبان نیوزی لینڈ عالمی کپ کے اپنے دوسرے میچ میں اسکاٹ لینڈ کے خلاف منگل کو پول اے میچ میں پوری مستعدی کے ساتھ اترے گا۔عالمی کپ میں خطاب کی دعویدار مانی جا رہی نیوزی لینڈ کایہ دوسرا مقابلہ ہے ۔عالمی کپ کے افتتاحی میچ میں نیوزی لینڈ نے حریف سری لنکا کو 98 رنز کے بڑے فرق سے ہرا دیا تھا۔اگرچہ اسکاٹ لینڈ پریکٹس میچوں میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے بعدپر امید نظرآ رہی ہے اور مخالف ٹیم کو مضبوط ماننے کے باوجود سب کو حیرت کرنے کے لیے اترے گی۔اسکاٹ لینڈ کی ٹیم آئرلینڈ کی ویسٹ انڈیز کے خلاف زبردست جیت سے تحریک لیتے ہوئے ٹورنامنٹ میں ایک اور اپ سیٹ کرنا چاہے گی۔اسکاٹ لینڈ نے اسی آئرلینڈ کی ٹیم کو پریکٹس میچ میں 179 رنز کے بھاری فرق سے شکست دی تھی۔اس سے امید لگائی جا رہی ہے کہ نیوزی لینڈ کے بلے بازوں کو اسکاٹ لینڈ کی گیند بازی بھاری پڑ سکتی ہے ۔اسکاٹ لینڈ کے کپتان پریسٹن مومسن نے کہا ہے کہ ان کی ٹیم مخالف ٹیم کے بارے میں ناواقف نہیں ہے اور اس کی طاقت کو اچھے سے جانتی ہے لیکن وہ اس بار عالمی کپ میں سب کو اپنی کارکردگی سے حیرت میں ڈالنے کے لیے اترے گی۔دوسری طرف نیوزی لینڈ کے ٹاپ آرڈر میں راس ٹیلر ٹیم کے واحد ایسے بلے باز ہیں جنہوں نے افتتاحی میچ میں ٹیم کے اسکور میں مزید تعاون نہیں دیا تھا اور 49 گیندوں میں محض 14 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے تھے لیکن امید ہے اسکاٹ لینڈ کے کم تجربہ کار گیند بازی اٹیک کو وہ خود پر حاوی نہیں ہونے دیں گے ۔ٹیلر جانتے ہیں کہ انہیں عالمی کپ میں کس طرح کا مظاہرہ کرنا ہے اور اس کی بدولت دنیا کے بہترین بلے بازوں میں اپنا نام کیسے شمار کرانا ہے ۔عالمی کپ کے لیے نیوزی لینڈ کے گرانٹ ایلیٹ کا انتخاب کرنا کوئی غلط فیصلہ نہیں تھا۔اس بات کو انہوں نے اسکاٹ لینڈ کے خلاف اپنی کارکردگی سے ثابت کرنا ہوگا۔اگرچہ سری لنکا کے خلاف مقابلے میں انہیں کوئی کامیابی نہیں مل سکی تھی لیکن آخری الیون میں انہوں نے گیند باز کے طور پر قابل اطمینان مظاہرہ کیا تھا۔ 1999ء اور 2007ء میں دو ناکام ترین مہمات کے بعد اب اسکاٹ لینڈ نئے ارادوں اور نئے جذبے کے ساتھ عالمی کپ 2015ء کھیلنے پہنچا ہے اور وارم اپ مقابلوں میں ویسٹ انڈیز کے ہوش ٹھکانے لگانے کے بعد اب کچھ کر دکھانے کے لیے پرعزم ہے ۔ عالمی کپ کی تاریخ میں تمام 8 مقابلوں میں شکست کے بعد اب اسکاٹ لینڈ کا نیا امتحان نیوزی لینڈ کے خلاف ہے ، جو افتتاحی مقابلے میں سری لنکا کو 98 رنز کے بڑے فرق سے شکست دے چکا ہے ۔بظاہر تو ایسا ہی لگتا ہے کہ اسکاٹ لینڈ کو ہرانے میں نیوزی لینڈ کو کوئی پریشانی نہیں ہوگی اور اعدادوشمار کے لحاظ سے بھی نیوزی لینڈ کا پلڑا بھاری ہے ۔ لیکن برینڈن میک کولم کے ذہن میں آئرلینڈ کی ویسٹ انڈیز پر شاندار فتح اور زمبابوے کا جنوبی افریقہ کو سخت ٹکر دینا گردش کررہا ہے اور وہ کسی حریف کو کمزور سمجھنے کی غلطی نہیں کریں گے ۔ اسکاٹ لینڈ نے عالمی کپ کے وارم اپ مقابلوں میں ویسٹ انڈیز کو سخت مشکلات سے دوچار کردیا تھا اور صرف اپنی ناتجربہ کاری کی وجہ سے جیتا ہوا مقابلہ تین رنز سے ہار گیا۔البتہ نیوزی لینڈ اپنے گھریلو میدان اور حالات سے بخوبی واقف ہونے ساتھ اسٹار کھلاڑیوں کی حامل بھی ہے ۔ ٹیم میں کپتان برینڈن میک کولم جیسے دھواں دار بلے بازوں کے ساتھ مارٹن گپٹل جیسے منجھے ہوئے اوپنر، کین ولیم سن اور روس ٹیلر جیسے ان فارم بلے باز، نیز، کوری اینڈرسن جیسا آل راؤنڈر اور ڈینیل ویٹوری جیسا اسپنر ہے ۔ ساتھ ہی ٹیم کو ایک جاندار تیز بالنگ دستے کی خدمات بھی حاصل ہیں۔عالمی کپ 2015ء کے گروپ اے میں آسٹریلیا دو پوائنٹس کے ساتھ سرفہرست ہے جس نے انگلینڈ کو 111 رنز سے شکست دی اور اب رن ریٹ کی بنیاد پر نیوزی لینڈ سے آگے ہے ، جس کے اپنے بھی دو ہی پوائنٹس ہیں جو اس نے سری لنکا کو شکست دے کر حاصل کیے ہیں۔اگر نیوزی لینڈ اسکاٹ لینڈ کے خلاف بڑی فتح حاصل کرتا ہے تو اس کے پاس گروپ میں پہلے نمبر پر آنے کا موقع ہوگا۔اسکاٹ لینڈ کو عالمی کپ میں دیگر ممالک جتنی اہمیت اور توجہ نہیں مل رہی، پھر بھی کپتان پریسٹن مومسن کی صورت میں ٹیم کے پاس بہترین بلے باز موجود ہے جو میچ کا پانسہ پلٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ ان کے علاوہ کائل کوئٹزر اور رچی بیرنگٹن سے بھی اسکاٹ لینڈ کو اچھی کارکردگی کی امید ہے ۔ تیز گیندبازوں میں روب ٹیلر کی صورت میں ایک اچھا بالر موجود ہے جو اپنی کارکردگی سے متاثر کرسکتے ہیں۔

...


Advertisment

Advertisment