Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 09:52 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

زمبابوے کے خلاف مہم کا آغاز کرے گا جنوبی افریقہ


ہیملٹن،14فروری(آئی این ایس انڈیا)چوکر کے ٹھپے کو مٹانے کے لئے بیتاب جنوبی افریقہ کرکٹ ورلڈ کپ میں کل اپنی مہم کی شروعات گروپ بی میں زمبابوے کی کمزور سمجھی جانے والی ٹیم کے خلاف کرے گا۔ٹورنامنٹ میں جیت کی دعویدار مانی جا رہی جنوبی افریقہ کی ٹیم جیت کے دعویدار کے طور پر اترے گی لیکن زمبابوے کی ٹیم الٹ پھیر کرنے کے قابل ہے اور اس نے ورلڈ کپ کے پریکٹس میچوں میں نیوزی لینڈ اور جنوبی افریقہ کے خلاف ٹھوس کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا۔زمبابوے نے پہلے پریکٹس میچ میں 157رنز تک نیوزی لینڈکے 7 وکٹ حاصل کر لئے تھے جس کے بعد بارش کی وجہ سے اس میچ کو منسوخ کرنا پڑا۔ٹیم نے دوسرے پریکٹس میچ میں سری لنکا کو سات وکٹ سے شکست دی۔زمبابوے اس سے پہلے 1999میں انگلینڈ میں ہوئے ورلڈ کپ میں بھی جنوبی افریقہ کو شکست دے کر الٹ پھیر کر چکا ہے۔سال 1991میں بین الاقوامی کرکٹ کا دوبارہ حصہ بننے کے بعد سے جنوبی افریقہ کی ٹیم ورلڈ کپ میں اہم موڑ پر پھسلتی رہی ہے اور ٹیم کبھی سیمی فائنل سے آگے نہیں بڑھ پائی۔جنوبی افریقہ کی قیادت اے بی ڈویلیرس کر رہے ہیں جنہوں نے گزشتہ ماہ ویسٹ انڈیز کے خلاف 31گیندوں میں سنچری کا عالمی ریکارڈ بنایا تھا۔بولنگ اور بیٹنگ میں ٹیم متوازن ہے جبکہ اس کی فیلڈنگ بھی عالمی معیار کی ہے۔ٹیم کے پاس ہاشم آملہ کے طور پر دنیا کے بہترین بلے بازوں میں سے ایک ہیں جو کونٹن ڈی کاک کے ساتھ اننگز کا آغاز کریں گے۔اس کے علاوہ ٹیم کے پاس فاف ڈو پلیسس، ڈویلیرس اور جین پال ڈومنی جیسے معتمدبلے باز بھی ہیں۔ٹیم کے تیزگیندبازی اٹیک کی قیادت ڈیل اسٹین اور مورنے مورکل کی طوفانی جوڑی کرے گی۔اس کے علاوہ ورنن فلیڈر اور کائل ایبوٹ کی موجودگی میں ٹیم کا بولنگ اٹیک کافی مضبوط ہے۔ٹیم کے پاس عمران طاہر اور آرون فانگسو کے طور پر دو اسپنر بھی ہیں جو مخالف ٹیموں کو پریشان کر سکتے ہیں۔دوسری طرف زمبابوے کو حال میں جدوجہد کرنا پڑا ہے۔اسے گزشتہ سال بنگلہ دیش کے خلاف 0-5سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔لیکن آسٹریلیا کے کوچ ڈیو واٹمور کے ٹیم کی کمان سنبھالنے کے بعد اسے نئی زندگی ملی ہے۔واٹمور کی رہنمائی میں سری لنکا نے 1996میں ورلڈ کپ جیتا تھا جبکہ 2007میں بنگلہ دیش سپر8میں جگہ بنانے میں کامیاب رہا تھا۔
زمبابوے کی ٹیم اگر پریکٹس میچ کی فارم کو برقرار رکھتی ہے تو ٹیم انگلینڈ میں 1999ورلڈ کپ کی کارکردگی کو دوہرا سکتی ہے جب چیمسفورڈ میں نیل جانسن نے 76رن بنانے کے علاوہ تین وکٹ چٹکاکر ٹیم کو جیت دلائی تھی۔

...


Advertisment

Advertisment