Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 11:10 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

پاکستانی کرکٹ ٹیم عالمی کپ کیلئے پوری طرح تیار نہیں:شاہد آفریدی


ایڈیلیڈ،14 فروری (یو این آئی) پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور آل راونڈر شاہد آفریدی نے کہا ہے کہ ورلڈ کپ کے لیے ٹیم کی تیاریاں سو فیصد نہیں ہیں لیکن ہندستان کے خلاف میچ کے لیے کھلاڑیوں کو تیار ہونا ہی ہو گا۔برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے آفریدی کا کہنا تھا کہ عالمی کپ جیسے بڑے ایونٹ میں دوسری ٹیمیں موقع نہیں دیتیں اس لیے ٹیم کی کمزوریوں کو جلد از جلد دور کیا جانا ضروری ہے ۔ورلڈ کپ کے لیے پاکستانی ٹیم کی تیاری کے بارے میں انھوں نے کہا کہ دو وارم اپ میچ تھے وہ دونوں ہم جیتے ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ جب آپ اتنا بڑا ایونٹ کھیلنے آتے ہیں اور ورلڈ کی ٹاپ ٹیموں کے خلاف کھیلتے ہیں تو آپ کی کوشش ہوتی ہے کہ اپنی کمزوریوں کو جلد از جلد ختم کر لیا جائے تو اسی کی کوشش ہو رہی ہے ۔انھوں نے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ پاکستانی کرکٹ ٹیم اس ٹورنامنٹ کے لیے مکمل طور پر تیار ہے ۔ میں یہ نہیں کہوں گا کہ ہماری تیاریاں سو فیصد ہیں، ہاں اس کے قریب ہیں لیکن یہ ہے کہ اتنے بڑے ایونٹ کے لیے آپ کی تیاری سو فیصد ہونی چاہیے ۔شاہد آفریدی نے کہا کہ آج کل کرکٹ بہت تیز ہو گئی ہے اور دوسری ٹیمیں موقع نہیں دیتیں تو میں یہ سمجھتا ہوں کہ چاہے وہ بیٹنگ ہو بولنگ ہو یا فیلڈنگ ہمیں جلد از جلد کور کرنا چاہیے ۔ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ تین سے چار برس میں پاکستانی بولنگ میں اہم کردار اسپنرز کا ہی رہا ہے اور اب سعید اجمل اور محمد حفیظ جیسے دو اہم اسپنرز کے نہ ہونے سے کارکردگی پر فرق پڑ سکتا ہے ۔سعید اجمل، محمد حفیظ اور میں، ہم تینوں نے ہی کارکردگی دکھائی۔فاسٹ بولرز میں انجریز کافی آگئیں تو اس وقت فاسٹ اور اسپن بولرز کو کافی محنت کرنی پڑے گی۔ہندستان اور پاکستان کے میچ کے بارے میں بات کرتے ہوئے تجربہ کار آل راؤنڈر کا کہنا تھا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ بہت بڑا میچ ہے اور اگر ٹیم تیار نہیں ہے تو اسے تیار ہونا پڑے گا۔انھوں نے کہا کہ ہمیشہ ایسا ہوا ہے کہ ہندستان اور پاکستان کے میچ سے لوگ لطف اندوز ہوتے ہیں، دیکھنا پسند کرتے ہیں جو کرکٹ نہیں بھی دیکھتا وہ بھی دیکھنا شروع کر دیتا ہے ۔شاہد آفریدی کا کہنا تھا کہ پاکستانی ٹیم ہندستان کے خلاف میچ میں سو فیصد کارکردگی دکھائے گی۔ساتھیوں کو پتا ہے کہ کتنا خاص میچ ہے اور میں انفرادی طور پر اور ٹیم کے ساتھ کوشش کروں گا کہ جتنا ہم اس میچ میں لطف لے کر کھیلیں اتنا ہی اچھا ہو گا۔انھوں نے ٹورنامنٹ جیتنے کے لیے کسی ایک ٹیم کو فیورٹ قرار نہیں دیا اور کہا کہ ساری ٹیمیں تیاریاں کر کے آتی ہیں اور کسی بھی ٹیم کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

...


Advertisment

Advertisment