Today: Wednesday, September, 19, 2018 Last Update: 10:01 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

پانچویں مرتبہ آسٹریلین اوپن جیتنے پرجوکووچ کا اظہار مسرت


ملبورن، 2 فروری(یو این آئی)تین گھنٹے اور انتالیس منٹ تک جاری رہنے والے اس میچ کے بعد جوکووچ نے کورٹ میں ایمرسن کی موجودگی پر خوشی کا اظہار کیا اور کہا کہ مجھے انتہائی خوشی ہے کہ میں نے پانچویں مرتبہ یہ خطاب جیتنے کے اعزاز حاصل کر لیا ہے ۔ مجھے خوشی ہے کہ میں ایلیٹ کھلاڑیوں کے اس گروپ میں شامل ہو گیا ہوں، جس میں روڈ لیور، روئے ایمرسن اور دیگر لیجنڈ کھلاڑی بھی شامل ہیں۔تقریب انعامات میں اینڈی مرے نے اپنے جذبات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک مرتبہ پھر مجھے یہاں شائقین کی طرف سے حیرت انگیز تعاون ملا۔ میں جیت نہیں سکا لیکن مجھے جو تحریک ملی ہے میں اس کا شکر گزار ہوں۔ آئندہ برس میں کوشش کروں گا کہ جب اس مقابلے میں حصہ لینے آؤں تو فائنل میں اس کا نتیجہ کچھ مختلف ہو۔مرے اب تک مجموعی طور پر آٹھ گرینڈ سلیم ٹورنامنٹ کے فائنل تک رسائی حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں، جن میں سے دو مرتبہ وہ کامیاب بھی رہے ہیں۔اس فائنل میں کامیابی کے ساتھ یہ امر یقینی ہو گیا ہے کہ نوواک جوکووچ عالمی رینکنگ میں نمبر ایک پر ہی براجمان رہیں گے ۔دنیائے ٹینس کے نمبر ایک کھلاڑی نوواک جوکووچ نے آسٹریلین اوپن کے فائنل میں برطانوی اسٹار کھلاڑی اینڈی مرے کو شکست دے کر یہ خطاب پانچویں مرتبہ اپنے نام کر لیا ہے ۔مجموعی طور پر جوکووچ کے گرینڈ سلیم کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے ۔اتوار کے دن ملبورن پارک میں کھیلے گئے مردوں کے سنگلز مقابلوں کے اس فائنل میں سرب کھلاڑی جوکووچ نے ستائیس سالہ مرے کو چار سیٹوں میں ہی مات دے دی۔ انہوں نے یہ مقابلہ سات چھ، چھ سات، چھ تین اور چھ صفر سے اپنے نام کیا۔مرے کو آسٹریلین اوپن کے فائنل میں چوتھی مرتبہ شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔ 2011ء اور 2013ء میں بھی مرے جوکووچ کے ہاتھوں شکست کا شکار ہو ئے تھے جبکہ 2010ء میں راجر فیڈرر نے انہیں مات دے دی تھی۔ جوکووچ پانچ مرتبہ آسٹریلین اوپن کے فائنل تک رسائی حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں اور انہیں ان مقابلوں میں ابھی تک کوئی نہیں ہرا سکا ہے ۔

 

...


Advertisment

Advertisment