Today: Tuesday, September, 25, 2018 Last Update: 07:09 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

نمبر چار پر ہی بلے بازی کریں وراٹ:رچرڈس


نئی دہلی,24 جنوری (یو این آئی) دنیا کے عظیم بلے بازوں میں شمار ویسٹ انڈیز کے ویوین رچرڈس ہندستانی اسٹار وراٹ کوہلی کی جارحانہ بلے بازی کے فین ہیں اور ان کا خیال ہے کہ آسٹریلوی پچوں پر اس نوجوان بلے باز کو چوتھے نمبر پر ہی بلے بازی کرنی چاہیے ۔وراٹ آسٹریلیا میں چل رہی سہ رخی سیریز میں چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنے اترے ہیں اور دو میچوں میں انہوں نے بالترتیب نو اور چار رن بنائے ہیں جس کے بعد اس بات پر بحث شروع ہو گئی ہے کہ وراٹ کو چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنی چاہیے یا نہیں ۔ہندستانی کپتان مہندر سنگھ دھونی نے اس بات کو مناسب ٹھہراتے ہوئے کہا تھا کہ ایسا کرنے سے وراٹ کو اننگز میں سنبھالنے کا موقع ملتا ہے پھر چاہے ٹیم پہلے بیٹنگ کر رہی ہو یا پھر ہدف کا تعاقب کر رہی ہو۔وراٹ کے چوتھے آرڈرپر بلے بازی کرنے کو منصفانہ قرار دیتے ہوئے رچرڈس نے کہا کہ مجھے پورا بھروسہ ہے کہ نمبر چار کسی بھی اچھے کھلاڑی کو بلے بازی کرنے کے لیے سب سے بہترین جگہ ہے ۔آسٹریلیا کی اچھال بھری پچوں پر ظاہری طور پر کچھ بلے باز ہیں جو ایسے میں بہترین مظاہرہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔خاص طور پر شروع شروع میں بلے بازی کرنے والے کھلاڑی۔ایسے میں وراٹ کو چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنے کے لیے بھیجنا سمجھداری بھرا فیصلہ ہے کیونکہ ان میں صلاحیت ہے پھر چاہے میچ کی صورتحال کچھ بھی رہے ۔رچرڈس نے ساتھ ہی کہا کہ ہمیشہ کچھ لوگ ایسے ہوتے ہیں جو کہتے ہیں کہ ٹیم کے سب سے اچھے کھلاڑی کو تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنے اترنا چاہیے ۔لیکن ٹیم کی پوزیشن اور میچ اور میدان کے حالات کو بھی ذہن میں رکھنا ہوتا ہے ۔اس لئے بغیر ان سب عوامل پر غور کرے یہ کہنا بہت مشکل ہوتا ہے ۔آئندہ 14 فروری سے شروع ہو رہے عالمی کپ کے لیے میدان کے حالات پر ویسٹ انڈیز کے سابق بلے باز نے کہا کہ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے میدان پر پہلے بلے بازي کرنا کافی مشکل ہوتا ہے ۔یہاں کے میدانوں پر وکٹ جلدی گرتے ہیں اور یہاں تیسرے نمبر پر بلے بازی کرنا یا اوپننگ کرنے اترنا خطرے سے خالی نہیں ہوتا ہے ۔اگر وراٹ تیسرے نمبر پر آتے ہیں تو ان کے سامنے بھی بحران آ سکتا ہے ۔رچرڈس نے کہا کہ چار نمبر پر اترنے پر ان کے سامنے پوزیشن واضح رہے گی کہ انہیں اننگز کو کیسے سنبھالنا ہے چاہے ٹیم پہلے بیٹنگ کرے یا ہدف کا تعاقب کرے ۔وہ صورت حال کی ضرورت کے حساب سے ہی بلے بازی کریں گے ۔ویسے میرا خیال ہے کہ وراٹ اتنے قابل ہیں کہ وہ کسی بھی آرڈر پر بلے بازی کر سکتے ہیں اور اپنی ٹیم کو میچ جتا سکتے ہیں۔رچرڈس نے کہا کہ اپنی ٹیم کے بہترین بلے بازوں میں سے ایک ہونے کے ناطے وراٹ کا زیادہ اوورز تک میدان پر ٹکے رہنا بہت ضروری ہے ۔لیکن اس سے بھی زیادہ ضروری ہے کہ وراٹ کھیلتے وقت کسی بھی طرح کے دباؤ میں نہیں رہیں۔مجھے بھروسہ ہے کہ ٹیم مینجمنٹ نے اس بارے میں اپنے ارکان کے ساتھ بات چیت ضرور کی ہوگی ۔ویسٹ انڈیز کے سابق بلے باز نے کہا کہ اگر وراٹ بغیر کسی دباؤ کے بلے بازی کرتے ہیں تو یہ پوری ٹیم کے لیے بہتر ہو گا۔ذاتی طور پر مجھے لگتا ہے کہ وراٹ ایسے کھلاڑی ہیں جو کسی بھی آرڈر پر اور کسی بھی میدان یا کسی بھی حالات میں بلے بازی کرنے کے قابل ہیں ۔وراٹ نے اپنی21 ون ڈے سنچریو ں میں سے 14 تیسرے نمبر پر بلے بازی کرتے ہوئے لگائی ہیں۔لیکن انہوں نے چوتھے نمبر پر بلے بازی کرتے وقت بھی شاندار مظاہرہ کیا۔2011 کے ورلڈ کپ کے دوران انہوں نے بنگلہ دیش کے خلاف ٹورنامنٹ کے پہلے میچ میں سنچری لگائی تھی اور اس کے علاوہ سری لنکا کے خلاف فائنل میں بھی چوتھے آرڈر پر بلے بازی کرنے کے دوران اوپنر گوتم گمبھیر کے ساتھ شاندار شراکت نبھائی تھی۔رچرڈس نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ وراٹ کا چوتھے نمبر پر بلے بازی کرنا ٹیم کیلئے بھی بہتر ثابت ہوگا۔اور یہ پوری ٹیم کے لیے ہی ہو گا۔صرف وراٹ کیلئے نہیں۔یہ صاف ہے کہ چوتھے نمبر پر بلے بازی کرتے وقت وراٹ اپنا بہترین مظاہریہ کر سکتے ہیں ۔وراٹ کی تعریف کرتے ہوئے رچرڈس نے کہا کہ وراٹ ایک بہترین بلے باز ہیں اور شاندار کھیل رہے ہیں۔اس نوجوان کھلاڑی کا بلے بازی کرنے کا اپنا ہی الگ انداز ہے ۔کوہلی آسٹریلیا کے سابق کپتان رکی پونٹنگ کی طرح کھیلتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وراٹ کا تیسرے نمبر پر بھی کھیل بہت اچھا رہتا ہے ۔پونٹنگ تیسرے آرڈر پر بلے بازی کرنے اترتے تھے اور چاہے جو بھی ٹورنامنٹ یا میچ کی صورتحال ہو۔دونوں کھلاڑیوں نے بہترین مظاہرہ کیا ہے ۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment