Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 05:34 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

SPORTS NEWS   

ہندوستان کوانگلینڈ کے ہاتھوں شرمناک شکست

 

خراب بلے بازی اور پھر شرمناک بولنگ کی وجہ سے سہ رخی سیریز کے اپنے دوسرے میچ میں ہندوستان کونو وکٹ کی ذلت آمیز شکست کا سامنا کرنا پڑا
برسبین،20 جنوری (یو این آئی) خراب بلے بازی اور پھر شرمناک بولنگ کی وجہ سے ہندستان کو انگلینڈ کے خلاف سہ رخی سیریز کے اپنے دوسرے میچ میں منگل کو نو وکٹ کی شرمناک شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ مخالف ٹیم کو صرف 27.3 اوورز میں جیت درج کرنے پر بونس پوائنٹس ملے ۔ جیمز اینڈرسن .18 رن پر چار وکٹ. اور اسٹیون فن 33 رنز پر پانچ وکٹ کی قاتلانہ گیند بازی کی بدولت انگلینڈ نے پہلے بلے بازی کرنے والی ہندستانی ٹیم کو 39.3 اوورز میں 153 کے معمولی اسکور پر ڈھیر کیا ۔اس کے بعد ہدف کا تعاقب کرنے اتری انگلش ٹیم کی جانب سے ایان بیل 88 اور جیمز ٹیلر نے ناٹ آوٹ 56 رن کی زبردست بہترین اننگ کھیل کر ایک وکٹ پر محض 27.3 اوورز میں 156 رنز بنا کر جیت اپنے نام کر لی۔ ہندوستان کو 40 اوورز کے اندر اندر آوٹ کرنے پر انگلینڈ کو میچ میں بونس سمیت کل پانچ پوائنٹ حاصل ہوئے ۔ہندستان کی سہ رخی سیریز میں یہ مسلسل دوسری شکست ہے ۔انگلینڈ کی اننگز میں ہندستانی بولنگ کا عالم یہ تھا کہ اسٹورٹ بني سات اوورز میں 34 رنز دے کر صرف ایک وکٹ ہی نکال سکے جبکہ باقی کسی گیند باز کو وکٹ ہاتھ نہیں لگا۔ہندستان کی اننگز میں بني نے ہی 44 رنز کی اننگز بھی کھیلی۔انگلینڈ نے 135 گیندوں کے باقی رہتے ہندستان کے خلاف نو وکٹوں سے جیت درج کی جو ون ڈے میں اس کی کسی ٹیم پر سب سے بڑی جیت ہے جبکہ میچ میں ہندستان نے انگلینڈ کے خلاف اپنے سب سے کم 153 کے اسکور کا بڑا ریکارڈ توڑ دیا ہے ۔اس سے پہلے آخری بار 25 مئی 1996 کو لیڈز میں ہندستانی اننگز انگلش ٹیم کے سامنے 158 کے اسکور پر ڈھیر ہوئی تھی۔ ہندوستان کے خلاف ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے دوسرے وکٹ کے لیے بیل اور ٹیلر نے 131 رن کی ناٹ آوٹ ساجھے داری نبھاکر تنہا میچ وننگ اسکور کھڑا کیا۔میچ میں پہلے ہی دباؤ میں آ چکی ٹیم انڈیا کو 25 کے اسکور پر دوسرے اوور میں معین علی کے طور پر پہلی اور واحد کامیابی ملی۔علی 08 رنز بنا کر بني کی گیند پر وراٹ کوہلی کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے ۔
میچ میں فاسٹ بولر امیش یادو سب سے مہنگے ثابت ہوئے اور چھ اوور میں انہوں نے 42 رنز دیے جبکہ شمي نے چار اوور میں 23 اور اکشر پٹیل نے 7.3 اوور میں 32 رن دے کر کوئی وکٹ نہیں لیا. اس سے پہلے بلے بازی میں بھی اکشر کا مظاہرہ خراب رہا اور وہ مسلسل دوسرے میچ میں صفر . پر آؤٹ ہوئے ۔ اس سے پہلے انگلش بولر اسٹیون فن نے میچ میں اپنے کریئر کی بہترین گیند بازی کرتے ہوئے آٹھ اوورز میں 33 رنز دے کر ہندوستان کے پانچ وکٹ حاصل کئے ۔جیمز اینڈرسن بھی گیند سے بے حد کامیاب رہے اور انہوں نے 8.3 اوورز میں محض 18 رنز دے کر چار وکٹ حاصل کئے ۔معین علی کو نو اوورز میں 31 رنز پر ایک وکٹ ملا فن کو ان ون ڈے میں لاجواب مظاہرے کے لیے مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ ہندستانی اننگز میں گزشتہ میچ کے سنچری میکر روہت شرما ھیمسٹرنگ چوٹ کی وجہ سے میچ میں کھیلنے نہیں اترے اور ان کی جگہ امباتي رایڈو کو کھلایا گیا۔اوپننگ کرنے اترے اجنکیا رہانے نے 33، رایڈو نے 23،کپتان دھونی نے 34 اور بني نے 44 رن کی بہترین اننگ کھیلی۔اس کے علاوہ ٹیم کے چھ بلے باز دہائی کے ہندسے کو چھو تک نہیں سکے ۔
ہندستانی بلے بازوں نے میچ میں بالکل جدوجہد نہیں کی اور صرف 27 گیندوں کے اندر ہندستان نے اپنے چار وکٹ گنوا دیے ۔لازمی 36 اووروں سے ایک اوور پہلے میچ میں ہندستان نے پاورپلے لیا لیکن اس کے بلے بازوں کی رن رفتار میں کوئی اضافہ نہیں ہوا۔ اوپننگ آرڈر کے بلے باز شکھر دھون پھر سے فلاپ رہے اور مسلسل دوسرے میچ میں وہ ٹیم کا پہلا شکار بنے ۔گزشتہ میچ میں 02 رنز بنانے والے دھون اس بار پانچ گیندوں میں 01 رن پر آؤٹ ہوئے ۔ انہیں اینڈرسن نے جوس بٹلر کے ہاتھوں کیچ کرایا۔ مڈل آرڈر پر میچ میں اس بار بہتر کرنے کا دباؤ تھا لیکن اس نے غلطیوں سے نہیں سیکھا اور ٹیسٹ کپتان وراٹ کوہلی پھر فلاپ رہے اور 04 رنز پر آؤٹ ہوئے . فن نے انہیں بھی بٹلر کی مدد سے کیچ کرایا۔گزشتہ میچ میں نصف سنچری لگانے والے سریش رینا 01،اکشر صفر ،بھونیشور کمار 05اور محمد شمي 01رن پر آؤٹ ہوئے ۔ رہانے نے 40 گیندوں میں ایک چوکے اور ایک چھکے کی مدد سے 33 رن جوڑے جبکہ رایڈو نے 53 گیندوں میں دو چوکے لگائے ۔دھونی نے کچھ ہمت دکھائی اور 61 گیندوں میں ایک چوکا لگا کر 34 رنز بنائے ۔لیکن فن نے انہیں بھی بٹلر کی مدد سے پویلین بھیجا۔دھونی نے بني کے ساتھ چھٹے وکٹ کے لیے 70 رنز کی سب سے بڑی شراکت کی ۔ہندوستان کے کسی ون ڈے میں 100 سے کم اسکور پر پانچ وکٹ گنوانے پر دھونی کی چھٹے وکٹ کے لیے 50 سے زائد رنز کی یہ ساتویں شراکت تھی۔
دوسرے وکٹ کے لیے رہانے اور رایڈو نے 56 رن جوڑے . میچ میں فن نے رہانے کو آؤٹ کیا ۔ون ڈے میں انہوں نے پانچویں مرتبہ ہندستانی بلے باز کو آؤٹ کیا۔ ہندوستان نے صرف 18 اوورز میں 67 رنز جوڑ کر اپنے پانچ وکٹ کھو دیئے اور ٹیم پوری طرح دباؤ میں نظر آئی۔بني نے ٹک کر 55 گیندوں میں تین چوکے اور دو چھکے لگا کر 44 رنز بنائے ۔لیکن وہ نصف سنچری مکمل کرنے سے پہلے ہی اینڈرسن کے ہاتھوں نویں بلے باز کے طور پر آؤٹ ہو گئے ۔ میچ میں مسلسل دو بار ہندستانی بلے بازوں نے انگلش کھلاڑیوں کو ھیٹ ٹرک کا موقع بھی دیا جب 137 کے اسکور پر مسلسل دو گیندوں پر دھونی اور پٹیل کو فن نے آؤٹ کیا۔اس کے بعد چوٹ سے ابرکر واپسی کرنے والے اینڈرسن نے بني کو 39 اوور کی دوسری اور شمي کو تیسری گیند پر آخری بلے باز کے طور پر آؤٹ کر کے ہندستانی اننگز 153 کے اسکور پر سمیٹ دی۔ میچ میں انگلش کھلاڑیوں کی نہ صرف بولنگ اچھی تھی فیلڈنگ بھی کمال کی رہی وکٹ کیپر بٹلر نے چار کیچ لپکے اور ایک اسٹمپ کیا۔برسبین کے میدان پر وکٹ کیپنگ میں انگلینڈ کے کسی کھلاڑی کی یہ بہترین کاکردگی رہی جبکہ اسی کے ساتھ بٹلر نے برسبین کی پچ پر ویسٹ انڈیز کے سی او براؤن اور آسٹریلیا کے میتھیو ویڈ کے وکٹ کے پیچھے پانچ شکار. بنانے کے ریکارڈ کی برابری کر لی۔
 

 

...


Advertisment

Advertisment