Today: Saturday, September, 22, 2018 Last Update: 11:53 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

35لاکھ غریبوں کی سماج وادی پنشن کا معاملہ اٹکا

25لاکھ خاندانوں کو لگا جھٹکا،اگلے سال ہی سب کو مل سکے گی پنشن
لکھنؤ25دسمبر(آئی این ایس انڈیا)حکومت کی جانب سے دی جانے والی سماج وادی پنشن کا انتظار کر رہے غریب خاندانوں کیلئے بری خبر ہے۔سماجی بہبود محکمہ کی طرف سے ہو رہے لیٹ کی وجہ سے اب تک تمام پنشن ہولڈروں کا ڈیٹا ہی کمپیوٹر پر اپ لوڈ نہیں ہو سکا ہے۔40لاکھ میں سے صرف 5لاکھ لوگوں کا ڈیٹا لوڈ کرکے ان کے اکاؤنٹ میں ہی پنشن پہنچائی گئی ہے۔اس کا سیدھا مطلب ہے کہ بچے 35لاکھ لوگوں کو تو پنشن ملنے سے رہی۔سی ایم اکھلیش یادو نے پانچ نومبر کو جنیشور مشرا پارک میں اس منصوبہ کا افتتاح کیا تھا۔انہوں نے افسران کو ہدایت دی تھی کہ نومبر کے آخر تک پنشن مستحقین کے اکاؤنٹس میں پہنچا دی جائے لیکن سماجی بہبود محکمہ جس طرح سے کام کر رہا ہے اس سے یہی امید ہے کہ اگلے سال ہی تمام فائدہ اٹھانے والوں کو پنشن مل سکے گی۔محکمہ کے افسران بتاتے ہیں کہ40لاکھ سے زیادہ لوگوں میں سے ابھی تک 5لاکھ لوگوں کے ہی فارم انٹرنیٹ پر اپ لوڈ ہو سکے ہیں۔پنشن براہ راست اکاؤنٹس میں بھیجی جانی ہے لہذا جب تک تمام پنشن ہولڈروں کے فارم اپ لوڈ نہیں ہو جائیں گے تب تک پنشن اکاؤنٹس میں پہنچنے کا سوال ہی نہیں اٹھتا۔
حکومت کی جانب سے پنشن ہولڈروں کے اکاؤنٹ میں آٹھ ماہ کی پنشن ڈالی جانی ہے۔حکومت نے سماج وادی پنشن کا منصوبہ شروع کرنے کا اعلان اس سال فروری میں کیا تھا۔حکومت نے اس منصوبہ کو شروع کرنے کیلئے 2012میں غریبوں کے لئے شروع کی گئی اپنی ہی رانی لکشمی بائی پنشن کی منصوبہ بندی کو بند کر دیا تھا۔فروری میں حکومت نے اعلان کیا تھا کہ پنشن تمام مستحقین کے اکاؤنٹ میں جون یا جولائی تک پہنچنا شروع ہو جائے گی۔اس کے باوجود جولائی تک حکومت پنشن لینے کا فارم ہی نہیں بھرا سکی تھی۔فارم بھرنے کی آخری تاریخ ہی حکومت کی جانب سے تین چار بار بڑھائی گئی۔اس منصوبہ کو شروع کرنے کے لئے حکومت نے جب رانی لکشمی بائی پنشن منصوبے کو بند کرنے کا اعلان کیا تو کہا تھا کہ رانی لکشمی بائی منصوبے سے فائدہ اٹھانے والوں کو سماجوادی پنشن کی منصوبہ بندی میں ترجیح کے ساتھ شامل کیا جائے گا۔اس کے باوجود حکومت نے جولائی میں چپکے سے حکم جاری کر کے رانی لکشمی بائی پنشن کی منصوبہ بندی کو ترجیحی فہرست سے ہٹا دیا۔اس کا نتیجہ یہ رہا کہ لاکھوں کی تعداد میں خاندان سماج وادی پنشن کی منصوبہ بندی سے فائدہ حاصل کرنے سے محروم رہ گئے۔

 

...


Advertisment

Advertisment