Today: Friday, September, 21, 2018 Last Update: 09:40 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

کانگریس میں آر ایس ایس ذہنیت کے لیڈر موجود

 

کانگریس نے پیٹھ میں خنجر گھونپا ہے: سماجوادی پارٹی کا سنگین الزام

ممبئی : 27ستمبر (یو این آئی) مہاراشٹر کے اسمبلی انتخابات سے عین قبل کانگریس اور سماجوادی پارٹی اتحاد ٹوٹ جانے پر ریاستی اسمبلی صدر و رکن اسمبلی ابوعاصم اعظمی نے کانگریس کو فریبی پارٹی قرار دیتے ہوئے اس پر پیٹھ میں خنجر گھونپنے کا سنگین الزام عائد کیااور کہا کہ تن تنہا سماجوادی پارٹی انتخابی اکھاڑے میں اپنے امیدوار اتارے گی اور بھرپور طاقت سے انتخابات میں حصہ لے گی۔ممبئی کے سماجوادی پارٹی دفتر میں منعقد ایک پریس کانفرنس میں ابوعاصم اعظمی نے کہا کہ سیکولر ووٹوں کی تقسیم نہ ہو اس کیلئے سماجوادی پارٹی نے سیکولر پارٹیوں سے انتخابی مفاہمت پر رضا مندی ظاہر کی تھی اور کانگریس سے انتخابی مفاہمت کیلئے بات چیت بھی ہوگئی تھی لیکن دیر رات گئے تک کانگریس کی جانب سے کوئی جواب نہیں ملا ۔میں نے جب رات میں وزیر اعلی پرتھوی راج چوہان کو فون کیا تو انہوں نے کہا کہ اب تک دہلی سے میڈیم نے انتخابی مفاہمت پر مہر ثبت نہیں کی ہے۔انہوں نے دریافت کیا کہ بغیر میڈیم (سونیا گاندھی )کے اجازت کے ہی سماجوادی پارٹی سے وزیر اعلی بات کر رہے تھے۔ کانگریس نے ہمیں گمراہ کیاہے اور کانگریس کی یہی دھوکہ بازی کے سبب ہمارے امیدواروں کو اے بی فارم تک فراہم نہیں ہوسکا ہے جتنے جگہ اے بی فارم پہنچا ہمارے امیدواروں نے پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ فرقہ پرستوں کو اقتدار سے دور رکھنے کیلئے ہم نے کانگریس کے ساتھ انتخابی مفاہمت کی تھی ابوعاصم اعظمی نے کانگریس پر سنگین الزام عائد کر تے ہوئے کہا کہ کانگریس میں ہی آر ایس ایس ذہنیت کے لیڈران موجود ہیں جو کبھی بھی یہ نہیں چاہتے کہ سیکولر طاقتیں متحد ہو اس لئے انہوں نے سماجوادی پارٹی سے سمجھوتہ ہونے نہیں دیا۔انہوں نے کہا کہ پہلے بھی ہم نے تنہا الیکشن لڑا ہے اور 4 نشتیں بھی حاصل کی ہے اس مرتبہ بھی ہم تنہا الیکشن لڑنے کیلئے تیار ہے کانگریس پارٹی نے سماجوادی کو دھوکہ میں رکھ کر ہمیں اے بی فارم دینے بھی نہیں دیا لیکن ہم نے کوشش کر کے الیکشن کیلئے امیدواروں کو اے بی فارم پہنچائے ہیں ۔ابوعاصم اعظمی نے مزید بتایا کہ کانگریس بی جے پی اور شیوسینا کی راہ پر ہی گامزن ہے اور اسی کی پالیسیوں پر عمل پیرا ہے لیکن کانگریس سیکولر ازم کا لبادہ میں ملبوس ہے ایسے میں ہمارے پاس سیکولر پارٹی کی حیثیت سے کانگریس سے سمجھوتہ کرنا ہی باقی رہتا ہے ۔ کانگریس پارٹی سے انتخابی مفاہمت ٹوٹنے کے بعد بھی ہم مستحکم ہے اور عوام ہمارے ساتھ ہے ۔ اخباری نمائندوں کے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کانگریس کے اس عمل سے سماجوادی پارٹی کو نقصان پہنچا ہے اور یہی دھوکہ بازی کو اجاگر کر نے کیلئے ہم نے یہ پریس کانفرنس منعقد کی ہے ۔کانگریس سے انتخابی مفاہمت نہ ہونے پر ابوعاصم اعظمی نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کے لیڈران کا کہنا ہے کہ ہماری پارٹی فرقہ پرست ہے جبکہ کانگریس میں ہی فرقہ پرست موجود ہیں ایسے میں کانگریس پارٹی کے کچھ لیڈران نے مجھ سے رابطہ کیا اور کہا کہ اس میں ہماری کیا غلطی ہے جبکہ کانگریس کی قیادت نے ہی ہمارے ساتھ وعدہ خلافی کی ہے اور ہمیں گمراہی میں رکھا ۔انہوں نے کہا کہ سماجوادی پارٹی مہاراشٹر میں 77 نشستوں پر اپنے امیدوار کھڑے کر نے کو تیار تھی اور اتنے امیدواروں نے ہم سے ٹکٹ کا بھی تقاضہ کیا تھا لیکن کسی بھی سمجھوتہ کے سبب اے بی فارم نہیں دیا گیا لیکن بعد میں کانگریس نے ہی انتخابی مفاہمت توڑ کر ہمارے پیٹھ میں خنجر گھونپ دیاانہوں نے بتایا کہ میں نے گوونڈی شیواجی نگر حلقہ انتخاب سے پرچہ نامزدگی داخل کر دی ہے اور بھیونڈی مغرب سے میرے فرزند ابو فرحان اعظمی نے بھی پرچہ نامزدگی داخل کی ہے دونوں حلقوں میں کانگریس نے بھی اپنے امیدوار کھڑے کئے ہیں۔ کانگریس سے انتخابی مفاہمت کا مقصد ہی سیکولر ووٹوں کی تقسیم کو روکنا ہے اسی لئے ہم نے یہ بات چیت کا عمل رکھا تھا لیکن یہ اتحاد اب پارہ پارہ ہوگیا ہے ۔
 

...


Advertisment

Advertisment