Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 05:40 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

جموں وکشمیر: ووٹوں کی گنتی آج، سیکورٹی کے سخت انتظامات

 

835امیدواروں کی سیاسی قسمت کاآج ہوگا فیصلہ

سری نگر،22 دسمبر (یو این آئی) جموں و کشمیر میں کل اسمبلی انتخابات کیلئے ہونے والی ووٹ شماری کے سلسلے میں انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے ۔ ووٹ شماری مراکز کے اردگرد کڑے حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں جبکہ بعض مراکز کے گردونواح میں دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے۔ سیکورٹی ذرائع نے بتایا کہ ووٹ شماری مراکز کے ارد گرد ریاستی پولیس، سی آر پی ایف اور دیگر سیکورٹی دستوں پر مبنی تین دائروں والی سیکورٹی قائم کرکے ان کو چاروں اطراف سے سیل کردیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ کچھ حساس علاقوں میں جیت کے جشن کی ریلیوں پر پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ ضلع بانڈی پورہ کے 3اسمبلی حلقوں جن میں گریز، بانڈی پورہ اور سمبل سونہ واری شامل ہیں کی ووٹ شماری کے سلسلے میں ضلع میں 20 دسمبر سے ہی دفعہ 144نافذالعمل ہے جبکہ وہاں جیت کے جشن کی ریلیوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔اس کے علاوہ بانڈی پورہ اوراس کے ملحقہ علاقوں میں پٹاخوں کی خریدار ی اور پٹاخے سرکرنے پر مکمل پابندی لگادی گئی ہے۔ووٹوں کی گنتی کے دوران 87 اسمبلی سیٹوں پر قریب 835 امیدواروں کی 20 ہزار الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں محفوظ سیاسی قسمت کا پٹارا کھل جائے گا۔ ووٹ شماری کے ذریعے وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ، پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سرپرست مفتی محمد سعید، نائب وزیر اعلیٰ تارا چند، سینئر کابینی وزراء عبدالرحیم راتھر، علی محمد ساگر، پیرزادہ محمد سعیداور دوسرے منجھے ہوئے سیاستدانوں کی سیاسی قسمت کا فیصلہ سامنے آئے گا۔ عمر عبداللہ ضلع بڈگام کے حلقہ انتخاب بیروہ اور ضلع سری نگر کے حلقہ انتخاب سونہ وار سے اپنی سیاسی قسمت آزما رہے ہیں۔ووٹ شماری 8بجے صبح شروع ہوگی جس کیلئے ووٹ شماری کے 28 مراکز قائم کرلئے گئے ہیں۔ ہر ضلع صدر مقام پر ووٹ شماری مراکز قائم کرلئے گئے ہیں تاہم وادی کشمیر کے ضلع بارہمولہ اور کپوارہ جبکہ جموں کے ڈوڈہ میں ایک سے زیادہ مقامات پر ووٹ شماری مراکز قائم کرلئے گئے ہیں ۔ مائیگرینٹ ووٹوں کی گنتی دہلی، ادھم پور اور جموں میں قائم کئے گئے مراکز میں منعقد ہوگی۔ ووٹ شماری کا عمل قریب 5 ہزار کاؤنٹنگ اسٹاف بشمول کاؤنٹنگ اسسٹنٹس،کاؤنٹنگ سپروائزرس اورمائیکرو اوبزرورس انجام دیں گے جبکہ گنتی کی ویڈیو گرافی عمل میں لائی جائے گی۔ریاست میں 5 مرحلوں پر محیط اس اسمبلی انتخابات کے تحت پولنگ کا عمل اور سیاسی جماعتوں و امیدواروں کی جانب سے ووٹروں کو لبھانے کیلئے منعقد کی جانے والی ریلیاں مجموعی طور پر پرامن رہیں۔ ذرائع کے مطابق سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کی جانب سے قریب قریب 12 سو سے زائد ریلیاں اور روڑ شو منعقد کئے گئے۔ الیکشن کمیشن نے 72 لاکھ 25 ہزار 559 رائے دہندگان کیلئے 10 ہزار 15 پولنگ مراکز قائم کرلئے تھے۔ ریاست بھر میں ووٹنگ کا عمل معمولی واقعات کو چھوڑ کر مجموعی طور پر پرامن ماحول میں اختتام پزیر ہوا جبکہ گذشتہ 25 برسوں میں پہلی بار ریکارڈ 65 فیصد رائے دہندگان نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔ جہاں 2002 کے اسمبلی انتخابات میں 43 وہیں 2008 کے اسمبلی انتخابات میں 61 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی تھی۔ انتخابات کے پانچ مراحل میں بالترتیب 71 ، 71 ، 58، 49 اور 76 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی۔ریاست میں موجودہ اسمبلی میں نیشنل کانفرنس کے 28 اراکین، پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے 19 اراکین، کانگریس کے 17اراکین اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے 11 اراکین شامل ہیں جبکہ دوسری جماعتوں و آزاد امیدواروں کے اراکین کی تعداد 10 ہے۔ واضح رہے کہ پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سے وابستہ دو اراکین پارلیمنٹ میں منتخب ہونے کے بعد بطور ممبراراکین اسمبلی مستعفی ہوئے تھے۔ضلع سری نگر کے 8اسمبلی حلقوں کی ووٹ شماری شیر کشمیر انٹرنیشنل کنونشن کمپلیکس میں منعقد کی جارہی ہے۔ اس سلسلے میں20 دسمبر کو ایکسائز اور ٹیکزیشن کمپلیکس سولنہ سری نگر میں نوڈل افسر برائے سری نگر کی نگرانی میں کاؤنٹنگ سٹاف اور ریٹریننگ افسروں کو کاؤنٹنگ سے متعلق تربیت دی گئی۔ ضلع بڈگام کے 5 اسمبلی حلقوں کیلئے ووٹوں کی گنتی بائز ہائر اسکینڈری اسکول میں انجام دی جائے گی۔ اننت ناگ کی چھ اسمبلی نشستوں اننت ناگ، ڈورو ، کوکرناگ، شانگس ، بجہباڑہ ، پہلگام ، کے لئے ڈگر ی کالج کھنہ بل میں ووٹ شماری ہوگی۔ ضلع گاندربل کے 2 حلقوں کیلئے ووٹوں کی گنتی فزیکل کالج میں انجام دی جائے گی۔ ضلع کپوارہ کے کرناہ،کپوارہ اور لولاب اسمبلی حلقوں کے لئے ووٹ شماری انڈسٹریل ٹریننگ انسٹی چیوٹ کپوارہ میں ہوگی جبکہ ہندوارہ اور لنگیٹ حلقوں کے لئے ووٹ شماری انڈسٹریل ٹریننگ انسٹی چیوٹ ہندوارہ میں منعقد ہوگی۔ضلع بارہمولہ کے اوڑی،سنگرامہ اوربارہمولہ حلقوں میں ہوئی ووٹنگ کی ووٹ شماری ڈگری کالج بارہمولہ میں،رفیع آباد اور سوپور حلقوں کے ووٹوں کی گنتی ایگریکلچر کالج واڈورہ جبکہ گلمرگ اورپٹن میں ڈالے گئے ۔
ووٹوں کی گنتی آئی ٹی آئی پٹن میں انجام دی جائے گی۔ضلع کولگام کے 4 حلقوں کیلئے ووٹوں کی گنتی ڈگری کالج میں انجام دی جائے گی۔ ریاست میں انتخابی عمل 28 اکتوبر کو پہلے مرحلے کیلئے نوٹیفکیشن جاری ہونے کے ساتھ شروع ہوا تھا جبکہ انتخابی عمل29 دسمبر کو مکمل ہوگا۔انتخابات کے پہلے مرحلے کے لئے28 اکتوبر کو، دوسرے مرحلے کے لئے7 نومبر کو، تیسرے مرحلے کے لئے14 نومبر کو، چوتھے مرحلے کے لئے19 نومبر کو اور پانچویں و آخری مرحلے کے لئے26 نومبر2014 ء کو بالترتیب نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا تھا۔اسی طرح کاغذاتِ نامزدگی داخل کرنے کی تاریخ بالترتیب 5 نومبر،14 نومبر،21 نومبر،26 نومبر اور3 دسمبر مقرر کی گئی تھی۔ کاغذات کی جانچ پڑتال بالترتیب7 نومبر،15 نومبر،22 نومبر،27 نومبر اور4 دسمبر کو عمل میں آئی۔ جبکہ کاغذاتِ نامزدگی واپس لینے کے تاریخ بالترتیب10 نومبر،17 نومبر،24 نومبر،29 نومبر اور6 دسمبر مقرر تھی۔ نومبر25 کو پہلے مرحلے کے لئے، دسمبر2 کو دوسرے مرحلے کے لئے، دسمبر9 کو تیسرے مرحلے کے لئے، دسمبر14 کو چوتھے مرحلے کے لئے اور دسمبر20 کو پانچویں اور آخری مرحلے کے لئے پولنگ ہوئی۔پہلے مرحلے کے دوران جن15 اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے گئے اْن میں گْریز، بانڈی پورہ، سونہ واری، کنگن، گاندر بل، نوبرا، لیہہ، کرگل، زنسکار، کشتواڑ، اندروال، ڈوڈہ، بھدرواہ، رام بن( ایس سی) اور بانہال شامل ہیں۔دوسرے مرحلے کے دوران جن18 اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے گئے اْن میں گلاب گڑھ، ریاسی، گْول ارناس، اودہمپور، چنینی( ایس سی)، رام نگر، سْرنکوٹ، مینڈھر، پونچھ حویلی، کرناہ، کپواڑہ، لولاب، ہندواڑہ، لنگیٹ، نْور آباد، کْلگام، ہوم شالی بْگ اور دیو سر شامل ہیں۔تیسرے مرحلے کے لئے جن16 حلقوں میں ووٹ ڈالے گئے اْن میں اوڑی، رفیع آباد، سوپور، سنگرامہ، بارہمولہ، گلمرگ، پٹن، چاڈورہ، بڈگام، بیروہ، خانصاحب، چرار شریف، ترال، پانپور، پلوامہ اور راج پورہ شامل ہیں۔ چوتھے مرحلے کے لئے جن18 حلقوں میں ووٹ ڈالے گئے اْن میں حضرت بل ، زڈی بل، عید گاہ، خانیار، حبہ کدل، امیرا کدل، سونہ وار، بٹہ مالو، اننت ناگ، ڈورو، ککر ناگ، شانگس، بجبہاڑہ، پہلگام، وچی، شوپیاں، سانبہ(ایس سی) اور وجے پور شامل ہیں۔ آخری مرحلے کے تحت جن20 حلقوں میں ووٹ ڈالے گئے اْن میں بنی، بسوہلی، کٹھوعہ، بلاور، ہیرا نگر( ایس سی)، نگروٹہ، گاندھی نگر، جموں ایسٹ، جموں ویسٹ، بشناہ، آر ایس پورہ( ایس سی)، سچیت گڑھ، مڑھ، رائے پور دومانہ( ایس سی)، اکھنور، چھمب (ایس سی) نوشہرہ، درہال، راجوری اور کالا کوٹ شامل ہیں۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment