Today: Monday, September, 24, 2018 Last Update: 01:33 pm ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بھارت ، امریکہ اور برطانوی خفیہ ایجنسیوں کی ناکامی کا نتیجہ ، 26/11حملہ


نئی دہلی : ممبئی میں لشکر دہشت گردانہ حملہ نہیں کر پاتے، اگر تین ممالک امریکہ، انگلینڈ اور بھارت کی خفیہ ایجنسیاں چاک چوبند رہتیں۔ نیو یارک ٹائمز میں شائع ایک تفصیلی رپورٹ کے مطابق 2008 میں ممبئی میں دہشت گرد حملہ کی کمپیوٹر ٹیکنالوجی کے ذریعہ نگرانی کی ناکامی کی وجہ سے ہوئی۔ اسکے مطابق ممبئی حملوں سے کمپیوٹرٹکنالو جی کے ذریعہ نگرانی کا پتہ تو چلتا ہے ،لیکن یہ بھی ظاہر ہوتا ہے کہ کمپیوٹر کے ذریعہ نگرانی نہیں ہو سکتی۔اس کا کہنا ہے کہ اس وجہ سے ہی جاسوسی کی دنیا کی اتنی بڑی ناکامی ہوئی۔ ان تینوں ممالک کی خفیہ ایجنسیوں نے کمپیوٹرز کے ذریعہ حاصل اعلیٰ کوالٹی کی خفیہ اطلاعات کو ایک جگہ جمع کر کے اس سے یہ نتیجہ نکالنے میں کوتاہی برتی گئی ۔ اگر وہ ایسا کرتے تو ان کو بہت کچھ معلوم ہو جاتا اور وہ اس خوفناک حملہ میں رکاوٹ ڈال سکتے۔ پینٹاگون کے سابق ملازم ایڈورڈا سنوڈن کی طرف سے لیک کئے گئے درجہ بندی دستاویزات کے حوالے سے اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ الیکٹرانک نگرانی سے اہم معلومات مل سکتی ہیں، لیکن اگر ان پر قریب سے توجہ نہیں دی گئی اور اسے خفیہ اطلاعات کے ساتھ نہیں ملایا گیا تو ضروری ثبوت گم ہو جائیں گے۔رپورٹ میں لشکر کے دہشت گرد اور صلاح کار ر ذررار شاہ کی آن لائن سرگرمیوں کی معلومات برطانوی اور ہندوستانی خفیہ ایجنسیوں کو تھی۔ وہ اس کی حرکتوں پر نظر رکھ رہے تھے۔ پاکستان میں بیٹھا یہ دہشت گرد بہت کچھ کر رہا تھا لیکن یہ جاسوسی ایجنسیاں اس کی سرگرمیوں کو ایک لڑی میں نہیں پرو پائیں جسکا نتیجہ ممبئی حملوں کے طور پر سامنے آیا ۔ 2008 کے موسم سرما میں شاہ پاکستان کے شمالی علاقوں کے پہاڑوں سے بحیرہ عرب تک چھپ چھپ کر ممبئی میں قتل عام کی سازش رچتا رہا۔ اگرچہ ستمبر، 2008 میں برطانوی ایجنسیوں کو اس کی بھنک لگ گئی تھی اور وہ اس کے انٹرنیٹ سرچ اور پیغامات کو ٹریک کرنے گئے تھے۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ نہ صرف برطانوی ایجنسیوں بلکہ بھارتی خفیہ ایجنسیوں کو اس کی بھنک لگ گئی تھی۔ اگرچہ امریکہ ایسی کسی طرح کی نگرانی نہیں کر رہا تھا، لیکن اسے اس سازش کی بو اپنے الیکٹرانک اور انسانی ذرائع سے لگ گئی تھی۔ اس نے ہندوستانی خفیہ ایجنسیوں کو حملہ کے پہلے کئی بار آگاہ بھی کیا، لیکن اس کی باریک بینی اور مقصد کو سمجھنے میں وہ کامیاب نہیں رہے۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment