Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 03:13 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

جموں وکشمیر اسمبلی انتخابات: پانچویں اور آخری مرحلے کی رائے دہی آج

 

جموں،19 دسمبر (یو این آئی) ریاست جموں وکشمیر کے پانچ مرحلوں پر محیط اسمبلی انتخابات کے سلسلے میں کل پانچویں اور آخری مرحلے کی پولنگ کے تحت جموں خطے کے 20 اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے جارہے ہیں۔ اس مرحلے کی پولنگ کے ساتھ ہی ریاست میں ووٹ ڈالنے کا سلسلہ اختتام کو پہنچ جائے گا۔ ووٹوں کی گنتی 23 دسمبر کو انجام دی جائے گی۔ توقع کی جارہی ہے کہ آخری مرحلے میں رائے دہندگان بڑی تعداد میں اپنی حق رائے دہی کا استعمال کرکے سابقہ چار مراحل کا ریکارڈ توڑ دیں گے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ جن20اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے جارہے ہیں ، کیلئے پولنگ اسٹاف کو ووٹنگ مشین اور دیگر ضروری سامان سمیت روانہ کردیا گیا ہے۔ وادی کشمیر کے اوڑی اور جموں کے ارنیہ سب سیکٹر میں جنگجوؤں کے حالیہ حملوں کے پیش نظر پولنگ والے علاقوں خاص طور پر سرحدی اضلاع میں سیکورٹی کے وسیع انتظامات کئے گئے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے مطابق انتخابات کے آخری مرحلے میں کل 18 لاکھ 28 ہزار 904 رائے دہندگان 213امیدواروں کی سیاسی قسمت کا فیصلہ کریں گے جن میں نائب وزیر اعلیٰ تارا چند ، پانچ کابینی وزراء رمن بھلہ، شام لال شرما، اجے کمار سدھوترا، شبیر احمد خان اور ڈاکٹر منوہر لال شرما ، بعض سابق وزراء اور متعدد ممبران اسمبلی بھی شامل ہیں۔ ضلع جموں کے 11 حلقوں میں میں 10 لاکھ 10 ہزار ، ضلع کٹھوعہ کے 5 حلقوں میں 4 لاکھ 32 ہزار اور ضلع راجوری کے 4 حلقوں میں 3 لاکھ 58 ہزار افراد ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں۔ الیکشن کمیشن نے رائے دہندگان کیلئے مجموعی طور پر 2 ہزار 366 پولنگ اسٹیشن قائم کئے ہیں ۔ آخری مرحلے کیلئے جن 20 اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے اْن میں بنی، بسولی، کٹھوعہ، بلاور، ہیرا نگر (ایس سی)، نگروٹہ، گاندھی نگر، جموں ایسٹ، جموں ویسٹ، بشناہ، آر ایس پورہ (ایس سی)، سچیت گڈھ، مر، رائے پور دومانا (ایس سی)، اکھنور، گہامب (ایس سی)، نوشہراہ، درہال، راجوری اور کالاکوٹ شامل ہیں۔سال 2008 کے اسمبلی انتخابات میں ان 20 اسمبلی حلقوں میں سے بھارتیہ جنتا پارٹی نے 10 نشستوں (بنی، بسولی، ہیرا نگر، نگروٹہ ، جموں ایسٹ، جموں ویسٹ، آر ایس پورہ، سچیت گڈھ، مر اور رائے پور دومانا)، کانگریس نے 5 نشستوں ( بلاور، گاندھی نگر، اکھنور، گہامب اور راجوری)، نیشنل کانفرنس نے 2 نشستوں (نوشہراہ اور کالاکوٹ)، پی ڈی پی نے درہال اور آزاد امیدواروں نے کٹھوعہ اور بشناہ میں جیت درج کی تھی۔ آخری مرحلے کی پولنگ سے قبل بی جے پی امیدواروں کے حق میں وزیر اعظم نریندر مودی، مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ، مرکزی وزیر خزانہ ارون جیٹلی، مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج، مرکزی وزیر برائے فروغ انسانی وسائل سمرتی ایرانی، اما بھارتی، ڈاکٹر جتندر سنگھ، نوجوت سنگھ سدھو، ہیما مالنی، کانگریس امیدواروں کے حق میں کانگریس پارٹی نائب صدر راہل گاندھی، راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد، نیشنل کانفرنس کے امیدواروں کے حق میں وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ ، پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدواروں کے حق میں پارٹی کے سرپرست مفتی محمد سعید اور پارٹی صدر محبوبہ مفتی نے الیکشن ریلیوں سے خطاب کرکے ووٹروں کو لبھانے کی بھرپور کوششیں کیں۔اس مرحلے کی پولنگ سے قبل وزیر اعظم نریندر مودی خود دو بار جموں آپہنچے جہاں انہوں نے بی جے پی کی جانب سے کھڑے کئے گئے امیدواروں کے حق میں چار انتخابی ریلیوں سے خطاب کیا۔ مسٹر مودی نے پہلے 13 دسمبر کو جموں خطے کے کٹھوعہ اور راجوری اضلاع اور بعد میں 16 دسمبر کو ضلع جموں میں واقع مولانا آزاد اسٹیڈیم اور خطے کے ضلع کٹھوعہ کے دور افتادہ تحصیل بلاور میں پارٹی امیدواروں کے حق میں انتخابی ریلیوں سے خطاب کیا۔ انتخابی ریلیوں کے دوران مودی نے رائے دہندگان کو لبھانے کیلئے جموں وکشمیر میں وکاس (ترقی)و پرسنتا (خوشحالی) لانے اور بے روزگاری کے خاتمے کیلئے یہاں سیاحت کو فروغ دیکر روزگار کے وسائل پیدا کرنے کے کارڈ کھیلے ۔ اگرچہ انتخابات شروع ہونے سے قبل یہ خبریں گشت کررہی تھیں کہ بھارتیہ جنتا پارٹی جموں وکشمیر میں اپنے مشن 44 پلس کی حصولی کی خاظر جموں میں دفعہ 370 کی منسوخی کا کارڈ کھیلے گی تاہم پارٹی کی انتخابی مہم کے دوران ایسا کچھ دیکھنے کو نہ ملا۔ تاہم مسٹر مودی نے کانگریس، نیشنل کانفرنس اور پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کو تنقید کا نشانہ بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ متواتر حکومتوں نے جموں خطے کے لوگوں کی ضروریات کو نظر انداز کیا۔ جبکہ اپنی گذشتہ چاروں ریلیوں سے خطاب کرتے ہوئے جموں خطے کی پسماندگی کیلئے کانگریس پارٹی کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے اس کو کھری کھری سنادی۔ یہاں تک کہ درانداز کا نام بھی دیا۔

 

 

...


Advertisment

Advertisment