Today: Wednesday, November, 21, 2018 Last Update: 04:49 am ET

  • Contact US
  • Contact For Advertisment
  • Tarrif
  • Back Issue

LATEST NEWS   

بے لگام توگڑیا کی پھر زہر افشانی

 

مسلمانوں اور عیسائیوں کو نسل سے ہندو بتایا ، پی ایم کی نصیحت کا کوئی اثر نہیں

بھاؤ نگر ،17دسمبر( ایجنسیاں ) ایک طرف پورا ملک پڑوسی ملک پاکستان کے آرمی اسکول میں ہوئے دہشت گردانہ حملہ کی سخت مذمت کررہا ہے اور غم میں ڈوبا ہوا ہے ۔ وہیں دوسری جانب شدت پسند مسلسل زہر اگل رہے ہیں ۔حالیہتبدیلی مذہب کی کی آگ میں گھی ڈالنے کا کام کرتے ہوئے وشو ہندو پریشد کے قائم مقام صدر پروین توگڑیا نے کہا کہ ہندوستانی مسلمان اور عیسائی نسل سے ہندو تھے۔ گذشتہ رات گجرات کے بھاونگر میں وشو ہندو پریشد کے قیام کے 50 سال پورے ہونے کے موقع پر منعقد ہ ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے توگڑیا نے کہا،’ ہندوستانی مسلمانوں کی نسل ہندو ہے۔عیسائی نسل سے ہندو تھے۔ تاریخ بتاتی ہے کہ مغل شہنشاہوں کی طرف سے دی گئی تکالیف اور ان کی تلواروں کے بل پر کئی لوگ اپنا مذہب تبدیل کر مسلمان بنے‘۔توگڑیا نے کہا،کہ ’ ابھی ہندوستان میں ہندوؤں پر کوئی تشدد نہیں ہوتا اور نہ ان پر طاقت کا استعمال ہوتا ہے۔ ایسے حالات میں اگر کوئی ہندو معاشرے میں لوٹنا چاہتا ہے تو ہندوؤں کو انہیں پورے دل سے قبول کرنا چاہئے‘۔ گزشتہ دنوں اس وقت بڑا تنازعہ پیدا ہو گیا تھا جب دائیں بازو کی تنظیم ’دھرم جاگرن منچنے آٹھ دسمبر کو اتر پردیش کے آگرہ ضلع میں ’گھر واپسی‘ کا نام دے کر ایک تقریب منعقد کیا تھا۔ اس تقریب میں تقریبا 100 مسلمانوں کو ہندو مذہب میں شامل کرنے کا ڈرامہ رچا گیا ، جن لوگوں کا مذہب تبدیل کرایا گیا تھا ان میں زیادہ تر جھگی بستیوں میں رہنے والے غریب لوگ تھے۔گورکھپور سے بی جے پی کے رہنما یوگی آدتیہ ناتھ نے بھی ہندو تنظیم کی اس تقریب کو صحیح ٹھہرایا تھا اور کہا تھا کہ یہ ایک مسلسل جاری عمل کا ایک حصہ ہے ہے اور ایسا جاری رہے گا۔

 

...


Advertisment

Advertisment